شہ سرخیاں
Home / پاکستان / سانحہ ماڈل ٹاؤن کیس: رپورٹ پبلک کرنے کے خلاف حکومتی اپیل نامنظور

سانحہ ماڈل ٹاؤن کیس: رپورٹ پبلک کرنے کے خلاف حکومتی اپیل نامنظور

لاہور(مانیٹرنگ سیل) لاہور ہائیکورٹ میں سانحہ ماڈل ٹاؤن کی تحقیقاتی رپورٹ شائع کرنے کے عدالتی حکم کے خلاف حکومتی اپیل نامنظور کردی گئی۔واضح رہے کہ چند روز قبل لاہور ہائیکورٹ نے سانحہ ماڈل ٹاؤن میں مرنے والوں کے لواحقین اور متاثرین کی جانب سے دائر کردہ درخواست پر فیصلہ سناتے ہوئے تحقیقاتی رپورٹ کو منظر عام پر لانے کا حکم دیا تھا۔ اسی روز سانحہ ماڈل ٹاؤن کی تحقیقاتی رپورٹ کو منظر عام پر لانے کے خلاف پنجاب حکومت کی جانب سے انٹرا کورٹ اپیل دائر کردی گئی جو آج سماعت کے پہلے روز ہی نامنظور ہوگئی۔ دوران سماعت پنجاب حکومت کے وکیل کا کہنا تھا کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کی 2 ایف آئی آرز کی تفتیش مکمل ہوچکی ہے، دونوں ایف آئی آر پر چالان جمع ہو چکے ہیں، کیا اب بھی منہاج القرآن کی انتظامیہ مطمئن نہیں۔ انہوں نے کہا کہ تحقیقاتی رپورٹ کے متعلق درخواستیں فل بنچ میں زیر التوا ہونے کے باعث سنگل بینچ کو فیصلے کا کوئی اختیار نہیں تھا۔ سنگل بینچ نے جلد بازی میں قانونی تقاضوں کے برعکس فیصلہ دیا اور حکومت سے تحریری جواب تک نہیں مانگا گیا۔ سرکاری وکیل نے کہا کہ جوڈیشل انکوائری حکومت حقائق جاننے کے لیے کرواتی ہے تاکہ مستقبل میں ایسے واقعات کو روکا جا سکے۔ سنگل بینچ کے فیصلے پر عملدر آمد نہ کرنے پر درخواست گزاروں نے وزیر اعلیٰ پنجاب سمیت 4 فریقین کے خلاف توہین عدالت کی درخواست دائر کر دی ہے لہٰذا اپیل کے فیصلے تک سنگل بینچ کے فیصلے پر حکم امتناعی جاری کیا جائے۔ جواباً ادارہ منہاج القرآن کے وکیل نے یقین دہانی کروائی کہ وہ توہین عدالت کے کیس پر تاحکم ثانی کیس کی کارروائی اور پیروی نہیں کریں گے اس لیے سنگل بینچ کا فیصلہ معطل نہ کیا جائے۔ یاد رہے کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کی عدالتی رپورٹ عام نہ کرنے پر توہین عدالت کی درخواست پاکستان عوامی تحریک نے وزیر اعلیٰ پنجاب اور چیف سیکریٹری کے خلاف دائر کر رکھی تھی۔ بعد ازاں عدالت نے کہا کہ کیس میں اہم ترین نکات اٹھائے گئے، مذکورہ اپیل کی روزانہ سماعت کی جائے۔ عدالت نے حکومت کی اس درخواست کو، کہ رپورٹ منظر عام پر لانے کا فیصلہ معطل کیا جائے، کو تو نامنظور کردیا تاہم عدالت کا کہنا تھا کہ دیکھنا ہے کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کی انکوائری رپورٹ عوامی دستاویز ہے یا نہیں۔ عدالت کا کہنا تھا کہ کیس اہم نوعیت کا ہے لہٰذا 2 اکتوبر سے کیس کی روزانہ کی بنیاد پر سماعت ہوگی۔ بعد ازاں لاہورہائیکورٹ کی جانب سے فریقین کونوٹس جاری کردیے جانے کے بعد اپیل کی مزید سماعت 2 اکتوبر تک ملتوی کردی گئی۔ وزیر اعلیٰ پنجاب اور رانا ثنا اللہ کے خلاف توہین عدالت کی درخواست بھی فل بنچ کی سماعت کے باعث بغیر کارروائی کے ملتوی کر دی گئی

x

Check Also

پھولنگر:مرغی خانہ سے نکلنے والی بدبودار ہوا نے سارے گاؤں کے لوگوں کی زندگیاں اجیرن بنا دیں

بھائی پھیرو(نامہ نگار) مرغی خانہ سے نکلنے والی بدبودار ہوا نے سارے ...

%d bloggers like this: