شہ سرخیاں
Home / پاکستان / خشک سالی اور کھاد کی قلت سے20لاکھ ٹن گندم ضائع ہونے کا خدشہ

خشک سالی اور کھاد کی قلت سے20لاکھ ٹن گندم ضائع ہونے کا خدشہ

لاہور(پریس ریلیز)صدر کسان بورڈ پاکستان سردار ظفر حسین خان نے ا پنے بیان میں کہا ہے انڈیا کو ڈیم بنانے کی مدد دیکر ملک کے کروڑوں عوام کو پانی سے محروم کر نے والے غداروطن جماعت علی شاہ کے خلاف سپریم کورٹ از خود نوٹس لے ۔خشک سالی اور کھاد کی قلت سے20لاکھ ٹن گندم ضائع ہونے کا خدشہ ہے۔یوریا کھاد کی بلند قیمتوں کے باعث کسانوں نے یوریا کھاد کا استعمال30فیصد تک کم کردیا ہے۔حکومتی وزراءاور ارکان اسمبلی یوریا کی بلیک مارکیٹنگ اورگنے کے کاشتکاروں کی بربادی میں ملوث اور 300ارب روپے سے زائد ہڑپ کرچکے ہیں۔ملکی معیشت زوال پذیر ہے۔۔حکمران اپنی کرپشن کا بوجھ عوام پر ڈال رہے ہیں۔موجودہ دور ِحکومت پاکستان کی تاریخ کا کرپٹ ترین دورِ حکومت ہے۔گیس اور بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ نے عوام کی زندگی اجیرن بنادی ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان پر ملکی و غیر ملکی قرضوں کا بوجھ109کھرب 84ارب روپے سے بڑھ گیا ہے جبکہ رواں مالی سالی کی پہلی سہ ماہی میں سٹیٹ بنک اور دیگر بنکوں سے223ارب روپے بھی ادھار لئے گئے ہیں۔۔سردار ظفر حسین خان نے کہا کہ ضرورت اس مر کی ہے حکومت فوری طور پر معاشی ایمرجنسی نافذ کرے اور جامع حکمت عملی ترتیب دی جائے۔زرعی ماہرین اور صنعتکاروں کو اعتماد میں لیا جائے تاکہ وہ اپنا سرمایہ بھارت ،بنگلہ دیش،ملائیشیااور چین منتقل نہ کریں۔انہوں نے کہا کہ انڈس واٹر کمیشن کے جماعت علی شاہ نے انڈیا کو ڈیم بنانے میں مدد دیکرملک کے ساتھ غداری کی ہے۔یہ واقع میمو سیکنڈل سے کم نہیں کیونکہ جماعت علی شاہ نے ملک کے کروڑوں عوام کو پانی سے محروم کر دیا ہے۔میڈیا کو چاہیے کہ وہ میمو سکینڈل کے ساتھ ساتھ جماعت علی شاہ کے رویہ کو بھی ہائی لائٹ کرے کیونکہ جماعت علی شاہ کی اس حرکت سے ہماری نسلیں اور فصلیں پیاسی مر جائیں گی۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ چیف جسٹس سپریم کورٹ کو چاہیے کہ وہ جماعت علی شاہ کی غداری کا ازخود نوٹس لے۔

x

Check Also

لاہور:اسپتال میں جگہ نہ ملنے پررکشے میں بچے کا جنم

لاہور(مانیٹرنگ سیل) پنجاب میں ایک اور ماں نے اسپتال کے باہر رکشے ...

Connect!