شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / پاکستان / بلاول،شہباز شریف،مریم نوازسمیت اہم سیاسی رہنماؤں کے کاغذات نامزدگی منظور

بلاول،شہباز شریف،مریم نوازسمیت اہم سیاسی رہنماؤں کے کاغذات نامزدگی منظور

ویب ڈیسک(پاک نیوز)چیئرمین پیپلز پارٹی، صدر پاکستان مسلم لیگ (ن) سمیت اہم سیاسی رہنماؤں کے کاغذات نامزدگی منظور کرلئے گئے ہیں۔تفصیلات کے مطابق چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری کے کاغذات نامزدگی این اے دو سو چھیالیس لیاری جبکہ نشست کے لیے منظور کئے گئے جبکہ این اے ایک سو بتیس لاہور سے مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف اور حمزہ شہباز کے کاغذات نامزدگی منظور کئے گئے جس پر ریٹرننگ افسر اسلم پنجوتہ نے فیصلہ محفوظ کیا تھا۔جمعیت علما اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کے ڈیرہ اسماعیل خان کے حلقہ این اے 38 اور 39سے کاغذات نامزدگی منظور کیے گئے،جبکہ ملتان کے حلقہ این اے 155 سے جاوید ہاشمی کے کاغذات نامزدگی منظور ہوگئے۔ ڈپٹی میئر کراچی ارشد ووہرا کے این اے 254 اور این اے 255 سے کاغذات نامزدگی منظور ہوئے اس کے علاوہ ایم کیو ایم پاکستان کے رہنما محمد حسین خان کے این اے 245 سے کاغذات نامزدگی منظور کیے گئے۔ دوسری جانب گذشتہ روز لاہور کے حلقہ این اے 125 سے (ن) لیگی امیدوار مریم نواز کے کاغذات پر تمام اعتراضات مسترد کرتے ہوئے انہیں منظور کر لیا گیا تھا جبکہ اسی حلقے سے تحریکِ انصاف کی یاسمین راشد کے نامزدگی فارم بھی درست قرار دے دیئے گئے۔ ایف بی آر کی ویب سائٹ پر موجود تین کمپنیاں چھپانے پر سیالکوٹ کے حلقہ این اے 72 سے پی ٹی آئی کی امیدوار فردوس عاشق کے نامزدگی فارم پر اعتراض لگ گیا، ان کے مد مقابل (ن) لیگ کے امیدوار کی بھی تین کمپنیاں نکل آئیں، ریٹرنگ آفیسر نے دونوں سے کل تک جواب مانگ لیا۔ این اے 73 سے (ن) لیگ کے خواجہ آصف اور پی ٹی آئی کے عثمان ڈار کے کاغذات منظور کر لیے گئے۔ اقامہ ظاہر نہ کرنے پر بورے والا کے حلقہ این اے 162 سے تحریکِ انصاف کی عائشہ نذیر جٹ کے کاغذات پر بھی اعتراض لگ گیا۔جھنگ کے حلقہ پی پی 127 سے تحریکِ انصاف کے اسلم بھروانہ کو 62 ایف ون کے تحت نااہل قرار دیتے ہوئے ان کے کاغذات مسترد کر دیئے گئے، اسی حلقے سے نوید احمد خان اور سید شہریار سلطان کو بھی نااہل قرار دے دیا گیا ہے۔کراچی میں قومی اسمبلی کے حلقہ 247 سے ایم کیو ایم کے خواجہ اظہار کے کاغذات مسترد کر دیئے گئے۔ این اے 242 کے ریٹرننگ افسر نے غلطی سے 243 کے کاغذات وصول کر لئے تھے۔این اے 243 اور 244 سے رؤف صدیقی کے کاغذات درست قرار پائے۔ بدین میں این اے 230 سے گرینڈ ڈیمو کریٹک الائنس کی امیدوار فہمیدہ مرزا کے کاغذات بھی منظور کر لئے گئے۔ دوسری جانب این اے 108 فیصل آباد سے مسلم لیگ (ن) کے رہنما عابد شیر علی کے کاغذات نامزدگی بھی منظور ہو گئے ہیں جبکہ این اے 243 کراچی سے پیپلز پارٹی کی شہلا رضا کے کاغذات بھی منظور ہو گئے ہیں۔این اے208 خیرپور سے پیپلزپارٹی کی نفیسہ شاہ، پی ایس 26 سے قائم علی شاہ، پی ایس 32 خیرپور سے پیپلز پارٹی کے نواب خان وسان کے کاغذات نامزدگی منظور کر لیے گئے، این اے209 اور پی ایس 30 خیرپور سے پیپلز پارٹی کے پیر فضل علی شاہ کے کاغذات نامزدگی منظور ہوئے، این اے210 خیرپور سے پیپلزپارٹی کے سید جاوید علی شاہ جیلانی اور پی ایس 29 خیرپور سے پیپلز پارٹی کے شیراز شوکت راجپر کے کاغذات نامزدگی منظور کر لیے گئے۔ پی ایس 73 بدین سے فیمیدہ مرزا کے بیٹے حسام کے کاغذات نامزدگی بھی منظور ہو گئے ہیں جب کہ بدین ہی کے حلقے این اے 230 ٹو پر پی پی کے امیدوار رسول بخش چانڈیو کے کاغذات منظور ہو گئے ہیں، جبکہ پی ایس 73 بدین پر پیپلز پارٹی کے امیدوار تاج محمد ملاح کے کاغذات نامزدگی پر فیصلہ کل تک کے لیے روک دیا گیا ہے۔این اے 229 پر پیپلز پارٹی کے امیدوار میر غلام علی تالپور اور پی ایس 71 تلہار پر پیپلز پارٹی کے میراللہ بخش تالپور کے کاغذات نامزدگی بھی منظور ہو گئے ہیں، میرپورخاص سے سابق وزیراعلیٰ نواز شاہ کے کاغذات نامزدگی بھی منظور کر لیے گئے ہیں۔ اس کے علاوہ سابق صدر آصف علی زرداری کے خلاف قومی اسمبلی کی نشست این اے 213 نوابشاہ میں دائر اعتراضات واپس لے لیے گئے ہیں،درخواست گزار کی جانب سے مؤقف اختیار کیا گیا تھا کہ آصف زرداری نے کرپشن کی ہے اور زمینوں پر ٹیکس جمع نہیں کرایا، اعتراض کنندہ رضا محمد دھاریجو کی جانب سے ریٹرننگ افسر کو بتایا گیا کہ اعتراضات غلط فہمی پر دائر کیے گئے تھے، آصف زرداری نے زرعی ٹیکس ادا کیا ہے۔ریٹرننگ افسر کی جانب سے اعتراض کنندہ سے کہا گیا کہ آپ نے غلط درخواست دے کر قیمتی وقت ضائع کیا، کیوں نہ آپ کو جیل بھیج دیا جائے۔دوسری جانب ترجمان الیکشن کمیشن کا کہنا ہے کہ کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کا وقت کل شام تک ہے اور وقت بڑھانے کی کوئی تجویز زیرغور نہیں ہے۔یاد رہے کہ انتخابی شیڈول کے مطابق ریٹرننگ افسران کے فیصلے پراعتراضات کے لیے اپیلیں 22 جون تک دائر کی جاسکیں گی اور امیدواروں کی نظرثانی شہدہ فہرست 28 جون کو جاری کی جائے گی۔

error: Content is Protected!!