شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / پاکستان / ایون فیلڈ ریفرنس کے فیصلہ کو کل اسلام آباد ہائی کورٹ میں چیلنج کیا جائے گا

ایون فیلڈ ریفرنس کے فیصلہ کو کل اسلام آباد ہائی کورٹ میں چیلنج کیا جائے گا

اسلام آباد(بیوروچیف) شریف خاندان کی جانب سے ایون فیلڈ ریفرنس فیصلے کو بروز کل پیر کے روز اسلام آباد ہائی کورٹ میں چیلنج کیا جائے گا۔ذرائع کے مطابق شریف خاندان نے ایون فیلڈ ریفرنس فیصلے کے خلاف اپیل دائر کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے اور نوازشریف کے وکیل خواجہ حارث نے فیصلے کے خلاف اپیلیں بھی تیار کرلی ہیں، درخواستوں پر نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر نے وکالت ناموں پر دستخط کردئیے ہیں۔شریف خاندن کی جانب سے ایون فیلڈ ریفرنس فیصلے کو پیر کے روز اسلام آباد ہائی کورٹ میں چیلنج کیا جائے گا، دوسری جانب قانونی ماہرین کا کہنا ہے کہ نوازشریف اور ان کی صاحبزادی اگر دس دن میں پاکستان واپس نہ آئے تو انہیں ریلیف ملنا مشکل ہوجائے گا۔واضح رہے کہ گزشتہ روز اسلام آباد کی احتساب عدالت احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے ایون فیلڈ ریفرنس کے فیصلے میں نواز شریف ، مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر کو مجرم قرار دیا تھا۔عدالت نے نواز شریف کو 10 سال قید بامشقت اور 80 لاکھ برطانوی پاؤنڈ جرمانہ ، مریم نواز کو 7 سال قید اور 20 لاکھ پاؤنڈ جرمانہ جب کہ کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کو ایک سال قید کی سزا سنائی اور لندن میں واقع ایون فیلڈ اپارٹنمٹس کو بحقِ سرکار ضبط کرنے کا بھی حکم دیا تھا۔دوسری جانب ذرائع کا کہنا ہے کہ نوازشریف اور مریم نواز کی گرفتاری کی صورت میں انہیں سینٹرل جیل کوٹ لکھپت لاہور یا اڈیالہ جیل راولپنڈی میں رکھا جاسکتا ہے۔جیل ذرائع کےمطابق نوازشریف اور مریم نواز کی گرفتاری کی صورت میں 2 جیلوں میں انتطامات مکمل کرلیے گئے ہیں، انہیں سینٹرل جیل کوٹ لکھپت لاہور یا اڈیالہ جیل راولپنڈی میں رکھا جاسکتا ہے۔ذرائع کا کہنا ہےکہ نوازشریف اور مریم نواز کو جس جیل میں رکھا جائے گا اس کو سب جیل قرار دیا جاسکتا ہے، ماضی میں سابق وزیراعظم بے نظیر بھٹو کو سہالا کے قریب ایک ریسٹ ہاؤس میں رکھا جاچکا ہے جب کہ جنرل یحییٰ خان کو جہلم میں ایک ریسٹ ہاؤس میں رکھا گیا تھا۔

error: Content is Protected!!