شہ سرخیاں
Home / پاکستان / این آراو:وزیراعظم گیلانی کو توہین عدالت کا نوٹس جاری

این آراو:وزیراعظم گیلانی کو توہین عدالت کا نوٹس جاری

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)سپریم کورٹ نے وزیراعظم کوتوہین عدالت میں اظہار وجوہ کا نوٹس جاری کرتے ہوئے 19 جنوری کو طلب کر لیاہے جبکہ چیئرمین نیب نے عدالت عظمٰی سے غیرمشروط معافی مانگ لی۔این آر او عملدرآمد کیس کی سماعت کرنے والے سات رکنی بینچ کے سربراہ جسٹس ناصر الملک کا ریمارکس میں کہنا تھا کہ اٹارنی جنرل کہہ چکے ہیں کہ انہیں صدریا وزیراعظم کی طرف سے کوئی ہدایات نہیں ملیں ۔عدالت کے پاس وزیراعظم کے خلاف کارروائی کے سوا کوئی راستہ نہیں بچا۔سماعت شروع ہوئي تو وزير قانون مولابخش چانڈيو،چيرمين نيب فصيح بخاري اور اٹارني جنرل مولوي انوارالحق بھي عدالت میں موجود تھے۔ اٹارني جنرل کا کہنا تھا کہ دس جنوری کا عدالتي حکمنامہ صدر،وزيراعظم سميت تمام متعلقہ حکام کو پہنچاديا ہےتاہم انہیں صدراور وزيراعظم کی جانب سے کوئی ہدايات نہيں مليں جس پر جسٹس ناصرالملک نے کہا کہ انہیں آرڈر نہيں پہنچانے تھے، بلکہ سوئس حکام کو خط لکھنے کيلئے ہدايات لينا تھيں۔ ہدایات نہیں ملیں تو بھی انہیں چھ آپشنز پر دلائل دينا ہوں گے۔جسٹس آصف کھوسہ نے کہا کہ انہوں نے وزیراعظم کو بددیانت اورکرپٹ نہیں کہا۔انہوں نے صرف اتنا کہا تھا کہ بظاہرایسا لگتا ہے کہ وزیراعظم اپنے حلف سے روگردانی کررہےہیں ۔ يہ غلط تاثر ديا گيا کہ آپشن حکومت کو ديئے گئے ہيں جبکہ يہ آپشن تو عدالت کے لئے ہيں۔انہوں نے کہا کہ عدالت نے واضح کردیا تھا کہ اگرکسی کواپنا دفاع کرنا ہے توآج عدالت میں پیش ہوجائے ۔اٹارني جنرل کا کہنا تھا کہ وہ عدالتی حکم نامے پرعمل درآمد کے طریقہ کارپردلائل دینا چاہتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ آرٹیکل 187 کے تحت عدالتی فیصلے پرعمل درآمد کا اختیار سپریم کورٹ کو نہیں بلکہ ہائی کورٹ کو حاصل ہے۔چیئرمین نیب کے وکیل شائق عثمانی نے کہا کہ چیئرمین نیب کو معاملے کی نوعیت کا علم نہیں تھا ،اس لئے انہوں نے گذشتہ سماعت پر غلط مؤقف پیش کیا۔انہوں نے چئیرمین نیب کی جانب سے غیر مشروط معافی کی درخواست کرتے ہوئے استدعا کی کہ ان کے خلاف کارروائی کی آپشن واپس لی جائےتاہم عدالت کا کہنا تھا کہ جو آپشنزتجویزکردی ہیں،جو واپس نہیں ہوسکتیں۔عدالت نے این آر او عملدرآمد کے حوالے سے مشاورت کیلئے بیس منٹ کے وقفے کے بعد فیصلہ سناتے ہوئے وزیراعظم گیلانی کوتوہین عدالت میں اظہار وجوہ کا نوٹس جاری کردیا۔سپریم کورٹ نے 19 جنوری کووزیراعظم گیلانی کوذاتی حیثیت میں طلب کیا ہے ۔فیصلے کے بعد وزیر قانون مولا بخش چانڈیو کا کہنا تھا کہ جو اقدام بھی کریں گے قانون اور آئین کے تحت کریں گے۔عدالت نے کیس کی سماعت انیس جنوری تک ملتوی کر دی ہے ۔

x

Check Also

لاہور:اسپتال میں جگہ نہ ملنے پررکشے میں بچے کا جنم

لاہور(مانیٹرنگ سیل) پنجاب میں ایک اور ماں نے اسپتال کے باہر رکشے ...

Connect!