پاکستانتازہ ترین

عدالت کونیچا دکھانے کی کوشش کی گئی ہے لاپتہ افراد میں درجہ بندی کی اجازت نہیں دینگے، چیف جسٹس

chief justiceاسلام آباد(بیورو رپورٹ) وزیر دفاع کے ذریعے وزیراعظم کی لاپتہ افراد کو پیش کرنے کی یقین دہانی پر سپریم کورٹ نے لاپتہ افراد کیس کی سماعت ایک روز کیلئے ملتوی کردی جبکہ چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری نے کہا ہے کہ عدالت کو نیچا دکھانے کی کوشش کی گئی ہے لاپتہ افراد میں درجہ بندی کی اجازت نہیں دینگے ، آخر کہاں تک مذاق برداشت کریں ، ہمیں ہفتہ اتوار کو بھی بیٹھنا پڑا تو بیٹھیں گے لیکن ان لاپتہ افراد کی بازیابی تک کوئی سمجھوتہ نہیں کرینگے جبکہ جسٹس جواد ایس خواجہ نے ریمارکس دیئے ہیں کہ لاپتہ افراد کا معاملہ اللہ کی طرف سے ہماری اور سب کی آزمائش ہے ہم گھبرانے والے نہیں امتحان پر پورا اترینگے ، شوائد موجود ہیں کہ ریاستی عناصر ان لوگوں کی گمشدگی میں ملوث ہیں ، یہ لوگ خود کو قانون سے بالاتر سمجھتے ہیں ۔ جمعرات کو لاپتہ افراد کیس کی سماعت چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کی جو شام پانچ بجے تک وقفے وقفے سے جاری رہی اور آخر میں وزیر دفاع خواجہ محمد آصف کو وزیراعظم نواز شریف کافون آنے کے بعد عدالت کو یقین دہانی کرائی گئی کہ لاپتہ افراد کو جمعہ کو پیش کردیا جائے گا ۔ اس موقع پر سماعت کے دوران وزیر دفاع خواجہ آصف نے کہا کہ ہم رجسٹرار کو کل اچھی خبر دین

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button