پاکستانتازہ ترین

پشاور:تحریک انصاف کے زیراہتمام ڈرون حملوں کیخلاف احتجاجی تحریک نویں روز میں داخل

natoپشاور(مانیٹرنگ سیل)تحریک انصاف کے زیر اہتمام ڈرون حملوں کیخلاف جاری احتجاجی تحریک اتوار کو نویں روز میں داخل ہو گئی۔اتوار کو نویں روزبھی صوبے کے چار اضلاع میں پانچ مقامات پر نیٹو سپلائی روکنے کیلئے دھرنا جاری رہا اور دھرنا کیمپس میں مظاہرین کی تعداد معمول سے زیادہ رہی ۔ خیرآباد پل سے کارکنان نے1 نیٹو سپلائی کی گاڑی واپس کر دی،کارکنان نے پانچ دسمبر کو پارلیمنٹ ہاؤس کے سامنے احتجاجی مظاہرے میں بھی بھرپور شرکت کا اعلان کیا ہے۔تحریک انصاف کے کارکنان کامیاب دھرنا جاری رکھتے ہوئے اتوار کو دھرنا کیمپس میں بڑے پیمانے پر حاضری دی۔سپلائی روکنے کیلئے پشاور،کوہاٹ ،نوشہرہ اور ڈیرہ اسماعیل خان میں تحریک انصاف کے مستقل دھرناکیمپس قائم ہیں جن میں کارکنا ن کی بڑی تعداد موجودہے۔اتوارکے روز صوبائی دارالحکومت پشاور میں موٹر وے انٹر چینج پر اور حیات آباد رنگ روڈ ٹول پلازہ پر تحریک انصاف کے دھرنا کیمپس میں کارکنا ن کی بڑی تعداد موجود رہی۔موٹر وے انٹر چینج پشاور کے قریب دھرنا کیمپ ریجنل سیکرٹری جنرل فضل خان کی قیادت میں جاری ہے جس میں چارسدہ کے صدر ظہور خان،تحصیل صدر صادق حسین،انجینئر عادل نواز ،ایم این اے ساجد نواز اور ریجنل انفارمیشن سیکرٹری ولی خان،ذاکر آفریدی،خطاب باچا،فرمان اللہ ایڈوکیٹ سمیت کارکنان کی بڑی تعداد کیساتھ موجود رہے اور چارسدہ کے کارکنان نے بھی پشاورکے کارکنان کا ساتھ دیا۔ حیات آباد رنگ روڈ ٹول پلازہ پر کیمپ ضلعی جنرل سیکرٹری یونس ظہیر مہمند کی قیادت میں جاری ہے جس میں اتوار کے روز کارکنان کے علاوہ تاجران کی بڑی تعداد نے بھی شرکت کی اور اظہاریکجہتی کیا،تاجر رہنماؤں عبدالقادر صراف،خالد محمود،حاجی جمیل،حاجی سیف اللہ ،فضل مالک اور دیگر نے اس موقع پر بات کرتے ہوئے کہا کہ پشاور کے تاجر تحریک انصاف کے ڈرون حملوں اور نیٹو سپلائی کیخلاف جاری تحریک میں شانہ بشانہ رہیں گے اور ہر قربانی دینے کو تیار ہیں۔ کارکنان کی بڑی تعداد کے علاوہ ایم پی ایز صوبائی ترجمان اشتیاق ارمڑ،محمود جان،فضل الہیٰ عارف یوسف ، ایم این ایز حامد الحق ،ساجد نواز،آئی ایس ایف کے صوبائی صدر سہیل آفریدی ،مینا خان آفریدی کے علاوہ میجر فیاض خلیل نے بھی کیمپس کا دورہ کیا۔ایم پی اے اربا ب جہانداد سارا دن حیات آباد کیمپ میں موجود رہے۔صوبائی ترجمان تحریک انصاف اشتیاق ارمڑ نے دورے کے موقع پر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ 5دسمبر کو صوبائی حکومت اسلام آباد میں پارلیمنٹ کے سامنے عظیم الشان احتجاجی مظاہرہ کریگی۔انھوں نے کہا کہ وفاقی حکومت عوام سے کئے گئے تمام وعدوں سے مکر گئی ،اب احتجاج کرینگے۔انھوں نے کہا کہ پانچ دسمبر کو وزیراعلیٰ پرویز خٹک اور سپیکر اسد قیصر پارلیمنٹ کے ارکان کو احتجاجی یادداشت بھی پیش کرینگے۔اس موقع پر کارکنان نے بھی پارلیمنٹ کے سامنے مظاہرے میں بھرپور شرکت کا اعلان کیا۔دھرنا کیمپس میں آئی ایس ایف اور یوتھ ونگ کے کارکنان بھی بڑی تعداد میں شریک رہے ۔ خیر آباد پل ضلع نوشہرہ پر بھی تحریک انصاف کے کارکنان کا دھرنا جاری ہے جس میں ضلعی قیادت نیاز جمشید صدر،خلیق الرحمان جنرل سیکرٹری ،افتخار درانی سینئر نائب صدر ،سید علی انفارمیشن سیکرٹری،مسعود خان پی کے 14 بھی موجود رہے جبکہ ایم پی اے ادریس خان نے بھی کیمپ کا دورہ کیا ۔ریجنل سینئر نائب صدر عزیز اللہ جان بھی کیمپ میں شرکاء کیساتھ دھرنے میں شریک تھے۔ضلع صوابی کے صدر انور حقداد اور جنرل سیکرٹری یوسف علی کی قیادت میں بھی صوابی کے کارکنان نے خیر آباد پل پر نوشہرہ کے ورکرز کا ساتھ دیا اوروہاں موجود رہے، ان کیساتھ دیگر رہنماؤں میں حاجی رنگیز،ستار خان اور یوتھ کے مسعود بھی موجود رہے،خیر آباد پل سے اتوار کے روز پی ٹی آئی کے کارکنان نے 1 نیٹو سپلائی کی گاڑی واپس کر دی۔کوہاٹ میں ضلعی صدر ہمایون چاچا،جنرل سیکرٹری ساجد اقبال کی قیادت میں کارکنان کا انڈس ہائی وے پر جرما چوک میں دھرناجاری ہے جس میں ایم پی اے ضیاء اللہ بنگش سمیت یو سی جرما کے صدرنسیم آفریدی اور یو سی سور گل کے صدر وزیرخان بنگش یوتھ اور آئی ایس ایف کے نوجوان بھی بڑی تعداد میں موجود ہیں۔ڈیرہ اسماعیل خان میں ضلعی صدر ہمایون خان، جنرل سیکرٹری ابراہیم لاہوری اوریجنل صدر یوتھ عرفان کامرانی کی قیادت میں کارکنان کا ٹانک مین بائی پاس روڈپر دھرنا جاری ہے جس میں وزیرستان سے تعلق رکھنے والے قبائل کی بڑی تعداد بھی موجود ہے ۔دھرنے میں جماعت اسلامی اور عوامی جمہوری اتحاد کے کارکنان نے بھی تحریک انصاف کے کارکنان کا ساتھ دیا۔دھرنا کیمپس میں کارکنان بالخصوص آئی ایس ایف اور یوتھ میں جوش و خروش پایا گیا ۔واضح رہے کہ حیات آباد رنگ روڈ سے رات کے وقت نیٹو سپلائی سیکورٹی وجوہات کی وجہ سے معطل رہنے کی بناء پر یہاں رات کو دھرنا کیمپ ختم کر دیا جاتا ہے جبکہ موٹر وے انٹر چینج پشاور پر بنایا گیا دھرنا کیمپ رات کو بھی جاری رہتا ہے۔نیٹو سپلائی روکنے کیلئے تحریک انصاف کی بہترین حکمت عملی کے نتیجے میں خیبر پختونخوا سے نیٹو سپلائی مکمل طور پر بند ہے اور گزشتہ نو روزمیں کوئی گاڑی یہاں سے نہیں گزر سکی۔یاد رہے کہ تحریک انصاف کا ڈرون حملوں کیخلاف نیٹو سپلائی کی بندش کی تحریک گزشتہ ہفتہ23نومبرکو پشاورمیں بڑے احتجاجی جلسے سے شرو ع ہوئی تھی جسے اتوار کو نو روز پورے ہو گئے اوردھرنا بدستور جاری ہے
۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button