تازہ ترینعلاقائی

11سالہ بچی کراچی سے اغواء ہوکرجتوئی پہنچ گئی ،مسلسل زیادتی کانشانہ بنتی رہی

بہاول پور ( بیو رو چیف) 11 سالہ بچی کراچی سے اغواء ہو کر جلال پور پیر والہ اور پھر جتوئی پہنچ گئی ، مسلسل زیادتی کا نشانہ بنایا جاتا رہا ، بچی اغواء کار کے چنگل سے نکلنے میں کامیاب ، مختیاراں مائی تک پہنچ گئی ، بچی کو کراچی سے چنو مائی نامی خاتون نے اغواء کیا ، اس کا شوہر مسلسل 7,8 ماہ بچی سے زیادتی کرتا رہا زبردستی نکاح کیا گیا ، بعد میں عابد نامی شخص کو فروخت کر دیا گیا ، چنو مائی کے شوہر حبیب نے تھانہ نوشہرہ جدید میں بچی مسکان کے اغواء کا جھوٹا مقدمہ درج کروایا ہوا ہے ، آج سیشن کورٹ میں 164 کے بیان کروا دئیے ہیں، اغواء کاروں کے خلاف مقدمہ درج کرنے کی بھی تحریر دے دی ہے ، مختیاراں مائی کی میڈیا سے گفتگو، تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز مختیاراں مائی 13 سالہ مسکان کے ساتھ سیشن کورٹ میں 164 کے بیان دلوانے کے لئے پیش ہوئی ۔ اس موقع پر مختیاراں مائی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ آج سے تقریباً دو سال قبل 11 سالہ بچی مسکان کو جلال پور پیروالہ کی رہائشی چنو مائی نے کراچی سے اغواء کیا اور اس کو اپنے ساتھ جلال پور پیر والہ لے آئی جہاں اس نے اپنے شوہر حبیب کے حوالہ کر دیا جو کے پہلے سے چار شادیاں کر چکا تھا اور اس کی کوئی اولاد نہیں تھی ۔ حبیب 11 سالہ مسکان کے ساتھ 7/8 ماہ تک بغیر نکاح کئے زیادتی کرتا رہا جس کے بعد مسکان سے زبردستی سفید کاغذوں پر انگوٹھا لگوا کر بتایا گیا کہ اس کا حبیب کے ساتھ نکاح ہو گیا ہے ۔ مختیاراں مائی نے بتایا کہ کچھ ہی عرصہ کے بعد چنو مائی اور اس کے شوہر حبیب کے درمیان جھگڑا ہو گیا ۔ 21 رمضان کو چنو مائی مسکان کو چائے میں بے ہوشی کی دوا ملا کر پلا دی اور بے ہوش کر کے جتوئی کے رہائشی عابد نامی شخص کو فروخت کر دیا ۔ جو کہ مسلسل مسکان کے ساتھ زبردستی زیادتی کرتا رہا اسی دوران مسکان ان کے چنگل سے نکلنے میں کامیاب ہو گئی اور سیدھی میرے پاس پہنچ گئی ۔ مختیاراں مائی نے بتایا کہ مسکان کے نام نہاد شوہر حبیب نے احمد پور شرقیہ کے علاقہ نوشہرہ جدید تھانہ میں مسکان کے اغواء کا مقدمہ درج کرا رکھا ہے ۔ اس حوالہ سے آج سیشن کورٹ میں مسکان کے 164 کے بیان کروائے ہیں ۔ مختیاراں مائی نے بتایا کہ ڈی ایس پی اور متعلقہ ایس ایچ او کو تمام حالات سے آگاہ کر دیا گیا ہے اور ملزمان حبیب ، چنو مائی اور عابد کے خلاف مقدمہ درج کرنے کے لئے بیان بھی دے دیا ہے ۔ انہوں نے آر پی او ، ڈی پی او بہاول پور سے مطالبہ کیا کہ معصوم 13 سالہ مسکان کے ساتھ ہونے والے ظلم و زیادتی کا فوری نوٹس لیتے ہوئے ملزمان کیخلاف فوری طور پر مقدمہ درج کیا جائے اور ان کو گرفتار کیا جائے ۔ مختیاراں مائی نے بتایا کہ مسکان کے والدین کو تلاش کرنے کے لئے کراچی اپنے بندے بھیجے ہوئے ۔ جیسے ہی رابطہ ہوتا ہے بچی کو اس کے والدین تک پہنچا دیا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں  اوکاڑہ : ریسکیو 1122اوکاڑہ کی سالانہ کارکردگی رپورٹ

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker