پاکستان

دفاع پاکستان کونسل کا 20 فروری کو پارلیمنٹ کے باہر احتجاج کا اعلان

کراچی میں دفاع پاکستان کونسل کا جلسہ جاری ہے جس میں بھارت کو پسندیدہ ملک قرار دینے اور نیٹو سپلائی کی ممکنہ بحالی کے خلاف 20 فروری کو اسلام آباد میں پارلیمنٹ کے باہر احتجاج کرنے کا اعلان کیا گیا ہے۔کراچی میں جناح گراؤنڈ میں جاری دفاع پاکستان کونسل کے جلسے میں لاپتہ افراد کی فوری بازیابی، کراچی میں ٹارگٹ کلنگ کے خاتمے، پیٹرول کی قیمتوں میں کمی اور ملوث افراد کو فوری گرفتاری کی قراردادیں بھی منظور کی گئیں، جبکہ حکومتی پالیسی کے خلاف 20 فروری کو اسلام آباد میں پارلیمنٹ کے باہر احتجاجی مظاہرہ کرنے کا اعلان کیا گیا۔ جماعت اسلامی کے امیر سید منور حسن کا اپنے خطاب میں کہنا تھا کہ دفاع پاکستان کونسل ملکی سرحدوں کے دفاع کےلئے بنی تھی۔ انہوں نے کہا کہ قوم سے نیٹو سپلائی بند ہونے کا جھوٹ بولا گیا۔ امریکی سفیر نے نیٹو سپلائی جاری ہونے کا انکشاف کر کے حکمرانوں کے جھوٹ کا پول کھول دیا ہے۔ جماعتہ الدعوۃ کے امیر حافظ سعید کا کہنا تھا کہ امریکہ افغانستان میں ناکام ہو گیا اب بلوچستان کی جانب آنا چاہتا ہے۔ حکمران ملکی سلامتی اور خود مختاری پر کوئی سمجھوتہ نہ کریں۔ ان کا کہنا تھا کہ دنیا سے سرمایہ دارانہ نظام ختم ہورہا ہے، اب اللہ تعالیٰ کا نظام آرہا ہے۔ امریکہ کو افغانستان میں شکست فاش ہو چکی ہے۔ حافظ سعید کا کہنا تھا کہ نیٹو سپلائی روکنے کےلئے تمام اقدامات کریں گے۔ لیاقت بلوچ کا کہنا تھا کہ یہ جلسہ کراچی کے عوام کے لئے امن کا پیغام لے کر آیا ہے۔ شیخ رشیدکا کہنا تھا کہ ساٹھ سالوں کی کرپشن ایک جانب اور موجودہ حکومت کی چارسالوں کی لوٹ مار ایک جانب ہے۔

یہ بھی پڑھیں  مردان :جلسے میں فائرنگ، پی ٹی آئی کونسلر تین ساتھیوں سمیت جاں بحق

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker