شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / تازہ ترین / اکیسویں صدی کے جرائم پیشہ عناصر

اکیسویں صدی کے جرائم پیشہ عناصر

mansehraمانسہرہ(قاضی بلال سے)اکیسویں صدی کے جرائم پیشہ عناصر جدید ترین ٹیکنالوجی اور سہولیات کے حامل ادارے پر بازی لے گئے ۔ مختلف سہولیات اور مراعات سے مستفید قانون نافذ کرنے والے اداروں نے عوام کے جان و مال کے تحفظ کے بجائے انہیں جرائم پیشہ عناصر کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا۔ دوسری دہائی کا دوسرا سال ڈکیتیوں ، راہزنیوں اور اغواء کی بڑی وارداتوں کے نقوش چھوڑ گیا۔ قتل ، اقدام قتل ، ڈکیتیوں ، راہزنیوں اور دیگر جرائم کی فائلیں سرد خانے کی نذر ہو گئیں۔ سال 2012 ؁ء میں ہونے والی ڈکیتیوں کو 382تعزیرات پاکستان کے تحت درج کر کے کارکردگی رپورٹس جاری کر دی گئیں۔نئی حکمت عملی کے تحت وضع کردہ پروفارمے نے تھانے کی حدود میں ہونے والی ڈکیتیوں کے سراغ مٹا ڈالے۔ مانسہرہ پولیس کے مختلف تھانوں نے جرائم کے حوالے سے اپنی سالانہ کارکردگی رپورٹ تیار کر کے حکام کو ارسال کر دی۔ جس کے مطابق تھانہ سٹی میں سال 2012 ؁ء کے دوران قتل کے 15، اقدام قتل30، لڑائی جھگڑے58، اغواء 23، دیگر 7، زنا بالجبر7ڈکیتی1، چوری15، 382کے 12 ، کارچوری کے 3، کار سنیچنگ کے 3 ، موٹر سائیکل کا 1، ایکسیڈنٹ کے 33اور اسلحہ کے 300مقدمات رجسٹر ہوئے۔ تھانہ کی حدود میں ہونے والے ایکسیڈنٹ میں18افراد زندگی کی بازی ہارے اور پولیس تھانہ سٹی کے پاس سال 2012 ؁ء میں ٹوٹل 1398مقدمات رجسٹر ہوئے۔ تھانہ صدر میں سال 2012 ؁ء کے دوران کل درج ہونے والے 503مقدمات میں قتل کے10، اقدام قتل10، لڑائی جھگڑے27، اغواء11، زنا بالجبر1،ڈکیتی0، راہزنی 2، نقب زنی2، چوری 12، کار چوری 1، 382کے 6، ایکسیڈنٹ14، اسلحہ197اور منشیات کے 106مقدمات رجسٹر ہوئے۔تھانہ کی حدود میں ہونے والے ٹریفک حادثات میں 5افراد جاں بحق جبکہ 9زخمی ہوئے۔ پولیس نے سال 2012 ؁ء کے دوران84اشتہاری مجرمان سے 55کو گرفتار کیا۔ جبکہ 29اشتہاری مجرمان تاحال روپوش ہیں۔ تھانہ شنکیاری میں سال 2012 ؁ء کے دوران کل درج ہونے والے 760مقدمات میں قتل کے12، اقدام قتل19، لڑائی جھگڑے31، اغواء27، زنا بالجبر4،ڈکیتی0، راہزنی0، نقب زنی5، چوری15، کار چوری0، 382کے3، ایکسیڈنٹ11، اسلحہ186اور منشیات کے171مقدمات رجسٹر ہوئے۔تھانہ کی حدود میں ہونے والے ٹریفک حادثات میں 3افراد جاں بحق جبکہ 8زخمی ہوئے۔ پولیس نے سال 2012 ؁ء کے دوران151اشتہاری مجرمان سے 101کو گرفتار کیا۔ جبکہ 50اشتہاری مجرمان تاحال روپوش ہیں۔ تھانہ بالاکوٹ میں سال 2012 ؁ء کے دوران کل درج ہونے والے 560مقدمات میں قتل کے8، اقدام قتل2، لڑائی جھگڑے17، اغواء15، زنا بالجبر1،ڈکیتی0، راہزنی، نقب زنی اور چوری کے 19، 382کا1، ایکسیڈنٹ4، اسلحہ112اور منشیات کے 138مقدمات رجسٹر ہوئے۔تھانہ کی حدود میں ہونے والے ٹریفک حادثات میں 1 جاں بحق جبکہ 3زخمی ہوئے۔ پولیس نے سال 2012 ؁ء کے دوران35اشتہاری مجرمان سے 25کو گرفتار کیا۔ جبکہ 10اشتہاری مجرمان تاحال روپوش ہیں۔ تھانہ بفہ میں سال 2012 ؁ء کے دوران کل درج ہونے والے 325مقدمات میں قتل کا1، اقدام قتل11، لڑائی جھگڑے12، اغواء2، زنا بالجبر1،ڈکیتی1، راہزنی0، نقب زنی3، چوری4، کار چوری0، 382کے 4، ایکسیڈنٹ کے 5مقدمات رجسٹر ہوئے۔ تھانہ کی حدود میں ہونے والے ٹریفک حادثات میں 3افراد جاں بحق جبکہ2زخمی ہوئے۔ تھانہ گڑھی حبیب اللہ میں سال 2012 ؁ء کے دوران کل درج ہونے والے 393مقدمات میں قتل کے6، اقدام قتل3، لڑائی جھگڑے16، اغواء9، زنا بالجبر1،ڈکیتی2، چوری 1، نقب زنی1، ایکسیڈنٹ3، اسلحہ91اور منشیات کے 111مقدمات رجسٹر ہوئے۔تھانہ کی حدود میں ہونے والے ٹریفک حادثات میں1 جاں بحق جبکہ 2زخمی ہوئے۔ پولیس نے سال 2012 ؁ء کے دوران 11اشتہاری مجرمان سے8کو گرفتار کیا۔ جبکہ 3اشتہاری مجرمان تاحال روپوش ہیں۔ تھانہ لساں نواب میں سال 2012 ؁ء کے دوران کل درج ہونے والے 298مقدمات میں قتل کے2، اقدام قتل3، لڑائی جھگڑے6، اغواء3، زنا بالجبر0،ڈکیتی1، چوری 1، کار چوری 1، 382کا1، اسلحہ105مقدمات رجسٹر ہوئے۔تھانہ کی حدود میں ہونے والے ٹریفک خلاف ورزیوں پر 80مقدمات رجسٹر ہوئے۔ پولیس نے سال 2012 ؁ء کے دوران 40اشتہاری مجرمان سے 32کو گرفتار کیا۔ جبکہ 8اشتہاری مجرمان تاحال روپوش ہیں۔ تھانہ پھلڑہ اور تھانہ بٹل کا مستعد عملہ بار بار رابطوں کے باوجود بھی سالانہ کارکردگی رپورٹ تیار کرنے میں کامیاب نہیں ہو سکا تاہم اس کی تیاری کے لئے محرر سٹاف نے دیگر تھانوں سے رابطہ کر کے پیٹی بند بھائیوں کو خدمات کے لئے طلب کر لیا ہے۔سال 2012 ؁ء مجموعی طور پر پولیس کے لئے ایک بڑا چیلنج لئے ہونے ابھرا اور بالآخر کئی جرائم کے نقوش چھوڑ کر 2012 ؁ء کا سورج غروب ہو گیا۔

یہ بھی پڑھیں  جے آئی ٹی کی تیسری رپورٹ جمع، عید پر بھی تحقیقات جاری رکھنے کا اعلان