شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / تازہ ترین / چار سال بعد لاہور میں انٹرنیشنل کرکٹ میلے کا آغاز

چار سال بعد لاہور میں انٹرنیشنل کرکٹ میلے کا آغاز

انتظار کی گھڑیاں ختم لاہور کے قذافی سٹیڈیم میں چار سال بعد انٹرنیشنل کرکٹ کا میلہ آج پوری آب و تاب کے ساتھ سجے گا،اس سیریز کا لاہوری اور گردو نواح کے شائقین کرکٹ انتہائی بے تابی اور بے صبری سے انتظار کر رہے تھے،ون ڈے سیریز کے بعد تین T20میچوں کے لئے ٹکٹیں مکمل طور پر دیکھتے ہی دیکھتے فروخت ہو گئیں اب تو ہو گی دم دم مست قلندر،ہلہ گلا،ڈھول ڈھمکا،رقص اور چوکوں چھکوں کی برسات میں شائقین کا جوش وخروش آسمانوں کو چھوئے گا جو دیدنی اور دیکھنے سے تعلق رکھتا ہے سیکیورٹی کا کڑا حصار قائم اور شہر بھر میں ہائی الرٹ12سو پولیس اہلکار جبکہ پاک فوج اور رینجرز کے تازہ دم دستے مکمل طور پر سیکیورٹی کا اہم ترین حصہ ہیں نیشنل ہاکی سٹیڈیم میں موجود سیکیورٹی اینڈ ویجلینس سیل کے اہلکار خفیہ کیمروں کی مدد سے تمام سرگرمیوں اور آنے جانے والوں کو مانیٹر کر رہی ہیں،،نشتر سپورٹس کمپلیکس میں تمام عوامی سرگرمیاں تین روز قبل سے بند،اطراف میں سرچ آپریشن کیا گیا،قذافی سٹیڈیم کے تین اطراف قائم دکانیں،شادی ہالز اور ریسٹورنٹس 10اکتوبر تک مکمل بند،شاہراؤں پر صفائی ستھرائی مکمل اور کھلاڑیوں و شائقین کی صحت کے لئے سٹیڈم اور اطراف میں ڈینگی سپرے بھی کیا گیا،،مہمان اور میزبان ٹیمیں نیشنل سٹیڈیم میں کھیلے گئے میچ کے دوروز قبل لاہور پہنچیں،سیریز کی کامیابی اور خوبصورتی کے لئے لاہور کی تمام اہم شاہراؤں کو سجا دیا گیا،مہمان ٹیم کے لئے ہوٹل سے سٹیڈیم تک آنے جانے کے لئے اضافی لائٹس لگائی گئیں انہیں بڑے پروٹوکول کے ساتھ ائیر پورٹ سے سٹیڈیم پہنچایا گیا،شائقین کرکٹ کے لئے سٹیڈم تک پہنچنے کے لئے ٹریفک پلان جاری کیا گیا اس کے مطابق 3ایس پیز،16ڈی ایس پیز اور15سو سے زائد ٹریفک وارڈنز تعینات،رانگ پارکنگ کے خاتمہ کے لئے20فوک لفٹر5بریک ڈاؤنز اور 9پارکنگ سٹینڈز کا قیام عمل میں لایا گیا ہے،مال روڈ،جیل روڈ،کینال روڈ،ایم ایم عالم روڈپر ٹریفک معمول کے مطابق چلتی رہے گی،مغلپورہ،مال روڈ اور جیل روڈ سے آنے والے شائقین براستہ کینال روڈ ایف سی کالج گراؤند،ایف سی کالج،مزنگ،اچھرہ اور وحدت روڈ سے آنے والے براستہ شاہ جمال پارکنگ،ٹھوکر نیاز بیگ،موٹر وے،واپڈا ٹاؤن،گارڈن ٹاؤن،جوہر ٹاؤن اور ٹاؤن شپ سے آنے والے براستہ برکت مارکیٹ پنجاب یونیورسٹی گراؤنڈ،کاہنہ،کوٹ لکھپت،فیروز پور روڈکی ٹریفک براستہ قینچی،والٹن،روڈ،کیولری،جناح فلائی اوور،فردوس مارکیٹ سے حسین چوک لبرٹی مارکیٹ میں پارکنگ،کینٹ اور گلبرگ کی ٹریفک سن فورٹ ہوٹل اور ایل ڈی اے پارکنگ پلازہ میں،والٹن،ڈیفنس سے آنے والی ٹریفک براستہ کیولری،فردوس مارکیٹ،حسین چوک سے بائیں مڑ کر لبرٹی مارکیٹ،ظہور الہٰی روڈ،مین مارکیٹ اور حالی روڈ سے آنے والی واقعہ ظہور الہٰی روڈ پارکنگ میں پہنچیں گی،T20میچز میں بہت زور کا جوڑ پڑے گا کیونکہ ہیڈ کوچ مصباح الحق کے مطابق سری لنکا کی ٹیم T20فارمیٹ کے لئے ایک خطرناک ٹیم ہے،پاکستان کرکٹ بورڈ نے کاکردگی سے زیادہ ڈسپلن کا شکار رہنے والے دونوں کھلاڑیوں عمر اکمل اور احمد شہزاد کو خرم منظور اور رضوان احمد کو نظر انداز کرنے کے بعد ٹیم کا حصہ بنایا ہے،عمر اکمل نے تین سال قبل ویسٹ انڈیز کے خلاف قومی ٹیم کی نمائندگی کی تھی اسی سال متحدہ عرب امارات میں آسٹریلیا کے خلاف سیریز کے پانچوں ون ڈے میں شمولیت کے باوجود صرف150رنز کا مجموعہ ہی کھڑا کر پائے،احمد شہزاد نے جون2018میں اسکاٹ لینڈ کے خلاف آخری انٹرنیشنل میچ کھیلا تھا،پی سی بی نے ورلڈ کپ میں بورڈ کا اعتماد حاصل نہ کرنے والے فہیم اشرف کو بھی T20اسکواڈ کا حصہ بنایا ہے،ان کی وجہ سے عابد علی،امام الحق اور محمد رضوان کو ڈراپ کیا گیا، عمر اکمل اور احمد شہزاد کو نیشنل کرکٹ اکیڈمی میں ٹریننگ کے لئے خصوصی پلان دیا گیا تھ اجس کے جائزے کے بعد ان کی ٹیم میں واپسی ممکن ہوئی،T20میں دنیا کی نمبر ون قومی ٹیم کا اب تک دنیا کی تمام ٹیموں پر پلڑا بھاری ہے کوئی ایک بھی ٹیم ایسی نہیں جس نے ٹی ٹونٹی میچوں میں پاکستان کے خلاف زیادہ میچوں میں کامیابی حاصل کی ہو،مجموعی طور پرکھیلے گئے143میچوں میں 90میچ جیتنے کا انتہائی شاندا ریکارڈ پاکستان کے پاس ہے جن میں ایک ٹائی اور2بے نتیجہ رہے،قومی ٹیم کے سب سے زیادہ میچ 21نیوزی لینڈ کے ساتھ ہوئے جن میں سے13میں جیت اور8میں شکست کا سامنا کرنا پڑا،سری لنکا اور پاکستان کے مابین اب تک کھیل گئے18میچوں میں پاکستان کو 13میچوں میں فتح حاصل ہوئی،زمبابوے دنیا کی واحد ٹیم ہے جس کے ہاتھوں پاکستان کو ایک بھی شکست نہیں ہوئی ان کے ساتھ کھیلے گئے 11میچوں میں ہی پاکستان جیتا،سری لنکا نے ون سیریز کے کپتان لہیرو تھری مانے کی جگہ داشن شناکا کو T20سیریز کا کپتان مقرر کر رکھا تھا،اس سے قبل کراچی میں تین ون ڈے سیریز کا پہلا میچ بارش کی نظر ہو گیا جبکہ دوسرے میچ میں سرفراز احمد نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا امام الحق اور فخر زمان نے حسب سابق سست روی سے مگر 73رنز کا آغاز فراہم کیا،اما م الحق 33 اور فخر زمان نے54رنز بنائے،بعد میں حارث سہیل اور بابر اعظم111رنز کی بہترین سانجھے داری قائم کی بابر اعظم نے لہیرو کو چوکا لگا کر اپنی سینچری مکمل کی بابر اعظم نے اس سینچرپر بھارتی بلے بار ویرات کوہلی کو تیز تیرین ینچریاں بنانے کے ریکارڈ سے محروم کر دیا اور تیز ترین11سینچریاں بنانے کے ریکارڈ میں بابر اعظم تیسرے نمبر پر آ گئے کوہلی نے یہ کارنامہ82ویں جبکہ بابر اعظم نے 71ویں اننگز میں اسے مکمل کیا،سب سے کم اننگز میں یہ اس ریکارڈ میں پہلے اور دوسرے نمبر پر جنوبی افریقہ کے کھلاڑی بالترتیب ہاشم آملہ 11اننگز،کوئنن ڈی کوک65اننگز کے ساتھ سر فہرست ہیں،سرفراز احمد اس میچ میں بھی ناکام رہے،عماد وسیم12بنائے اور آخری اوور میں افتخار نے دو چھکوں کی بدولت ٹیم کا سکور 300سے کراس کردیا،سارنگا ڈی سلوا نے دو وکٹ حاصل کیں،پاکستان نے سری لنکا کو جیت کے لئے 306رنز کا ہدف دیا،آئی لینڈرزعثمان شنواری کی تباہ کن باؤلنگ کی بدولت کے ہاتھوں تباہ ہو گئے آدھی ٹیم صرف 28رنز پر ڈھیر ہو چکی تھی تاہم شہیان جے سوریا اور داس شناکا کی جوڑی ڈٹ گئی جو نہ صرف ٹیم کو میچ میں واپس لے آئی بلکہ جیت کے بھی قریب کر دیا اس موقع پر عثمان شنواری ہی نے 96کے ذاتی سکور پر شہیان جے سوریا کی وکٹ حاصل کر لی اس کی اننگز میں ایک چھکااور 7چوکے شامل تھے،اگلے ہی اوور میں شاداب خان نے 66کے ذاتی اسکور پر شناکا کو بھی پویلین بھیج دیا یوں پوری ٹیم238کے مجموعہ پر آؤٹ ہو گئی،یہ میچ عثمان شنواری کے نام رہا سیریز کے تیسرے میچ میں لہیرو تھریمانے نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کو ترجیح دی اس میچ میں سری لنکا نے تین تبدیلیاں کرتے ہوئے عماد وسیم کی جگہ محمد نوا زاور امام الحق کی جگہ عابد علی کو ڈیبیو کرایا گیا،اس میچ میں دھنکا کونا تھیلا کی شاندار سینچری کی بدولت سری لنکا پاکستان کو 298کا ہدف دینے میں کامیاب ہواان کی 113رنز کی اننگز میں ایک چھکا اور16چوکے شامل تھے،سری لنکا کے اوپنر اوشکا فرنینڈو محمد عامر کی جارحانہ باؤلنگ کے سامنے مزاحمت نہ کر پائے اور صرف 13رنز کے مجموعی اور4کے ذاتی سکور پر وکٹ کھو بیٹھے،کپتان لہیرو نے دھنشکا کے ساتھ مل کر85رنز کی شراکت بنائی کپتان کو محمد نواز نے آؤٹ کیا،انجیلوپریرا 14،منود بھنوکا 36،شیہان جے سوریا 3 ااور گونا بھلانکا23رنز پر آؤٹ ہوئے آئی لینڈرز نے پاکستان کو 298رنز کا ہدف دیا،عابد علی اور فخر زمان نے اوپننگ کی عابد علی نے74،فخر زمان نے76،سرفراز احمد نے26،حارث سہیل 50،پاکستان نے یہ ہدف 49اوور کی دوسری گیند پر حاصل کرکے سیریز اپنے نام کر لی 2015اور2017کے بعد پاکستان کی سری لنکا کے خلاف سیریز میں یہ تیسری مسلسل جیت ہے،اس میچ میں جہاں وہاب ریاض کی درگت بنی (انہوں نے81) وہاں انتہائی ناقص فیلڈنگ کا بھی مظاہرہ دیکھنے میں آیا اس میچ کی فیلڈنگ کو گذشتہ تین سال بدترین فیلڈنگ کہا جا رہا ہے،عابد علی خوش قسمت رہے کہ اپنے پہلے ہی میچ میں مین آف دی میچ کر اعزاز حاصل کر گئے،بابر اعظم کو مین آف دی سیریز کا ایوارڈ ملا،سرفراز احمد 50میچوں میں کپتانی کرنے والے دنیا یک دوسرے وکٹ کیپر بن گئے پہلے نمبر پر مہندر سنگھ دھونی ہیں جنہوں نے 200میچوں میں اپنی ٹیم کی قیادت کی،سرفراز احمد کی قیادت میں پاکستان نے28میچ جیتے،20میں شکست اور2بے نتیجہ رہے،نیشنل سٹیڈیم میں گذشتہ کچھ سالوں کے دوران 2ارب سے زائد رقم خرچ کی گئی ہے مگر چند گھنٹے کی بارش نے قلعی کھول دی نہ صرف میچ منسوخ ہوا بلکہ دوسرے روز بھی میچ کے قابل نہ رہا،چھتیں ٹپکتی رہیں،پانی نکالنے کے لئے کوئی نظام ہی نہیں تھادنیا کے تمام بڑے انٹرنیشنل سٹیڈیمز میں پانی نکالنے کے لئے اعلیٰ معیار کی مشینری موجود ہے وہیں نیشنل سٹیڈیم سے عملہ وائپر کے ذریعے پانی نکالتا نظر آیا،آخری میچ میں دو بار فلڈ لائٹس کا بھی بند ہونا باعث حیرت ہے،ون ڈے سیریز کے اختتام پر کپتان لہیرو تھریمانے نے کہادورہ پاکستان ہادگار رہا دیگر ٹیموں کو بھی پاکستان دورہ کرنا چاہئے،سری لنکا کے ٹیلی کمیونیکیشنز،بیرون ملک ملازمت اور کھیلوں کے وزیر برن فرنینڈو نے کہایہ سیریز علاقائی تعاون کے لئے انتہائی اہمیت کی حامل ہے کیونکہ اب کرکٹ پوری دنیا کا ھکیل بن چکا ہے یہ صرف مسابقت کا معاملہ نہیں بلکہ پڑوسی ملکوں کے درمیان یکجہتی کا اظہار بھی ہے انہوں نے شاندار سیکیورٹی پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا جس طرح ہمارا خیال رکھا گیا اور حیرت انگیزہے،چیرمین بورڈ احسان مانی نے کہادنیائے کرکٹ کوپاکستان آ کر مزید میچ کھیلنا چاہئیں،ایک دہائی میں کسی بھی ٹیم کا پاکستان کا طویل قیام ہمارے لئے باعث فخر ہے کرکٹ کا کھیل دہشت گردی کو شکست دینے میں کامیاب ہو گیا،ICCکے ڈپٹی چیرمین عمران خواجہ بھی T20سیریزدیکھنے پاکستان پہنچ چکے ہیں،کرکٹ شائقین کے لئے خوشخبری ہے کہ پی سی بی بورڈ کے مطابق آئندہ پی ایس ایل کے تمام میچز پاکستان میں ہی ہوں گے جن کی تاریخوں کا اعلان نومبر میں کیا جائے گا آئندہPSLمیں ہر ٹیم21کی بجائے18کھلاڑیوں پر مشتمل ہو گی،آئندہ سال دورہ انگلینڈ سے قبل نیندر لینڈ کے ساتھ تین ون ڈے9.7.4جولائی،آئر لینڈ کے ساتھ دو T20۔12اور14جولائی کو کھیلے جائیں گے ورلڈ چیمپئن شپ ٹیسٹ میچز انگلینڈ کے ساتھ جولائی اگست میں ہوں گے بعد میں انگلینڈ کے ساتھ ہی 3میچز T20کے بھی ہوں گے،

یہ بھی پڑھیں  محکمہ موسمیات نے ملک بھر میں آج باران رحمت کی نوید سنا دی

What is your opinion on this news?