پاکستانتازہ ترین

وہ وقت دورنہیں جب عارضی منحوس لائن بالآخر ختم ہو جائیگی ،وزیراعظم آزادکشمیر

abdul majeedمظفرآباد (بشیر احمد میر)آزادجموں و کشمیر کے وزیر اعظم چوہدری عبدالمجید نے کہا ہے کہ ریاست جموں و کشمیر میں اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حق خودارادیت کی جدوجہد مقبوضہ کشمیر کے شہداء کی مرہون منت ہے اور وہ وقت دور نہیں جب جموں و کشمیر کے سینے پر کھنچی گئی عارضی منحوس لائن بالآخر ختم ہو جائیگی اور کشمیری عوام بانی پاکستان قائد اعظم کے فرمان کے مطابق شہ رگ پاکستان کشمیر کے مستقبل کو پاکستان کے ساتھ جوڑ کر تکمیل پاکستان کے خواب کو پورا کرینگے۔ وہ منگل کو میرواعظ مولوی فاروق میڈیکل کالج مظفرآباد میں منعقدہ تقریب سے خطاب کررہے تھے۔ اس موقع پر حریت کانفرنس کے چیئرمین میرواعظ عمر فاروق، پروفیسر عبدالغنی بٹ،میڈیکل کالج کے وائس پرنسپل سید ساجد شاہ اور پروفیسر سعید شفیع نے بھی خطاب کیا۔ جبکہ تقریب میں آزادکشمیر کے وزراء عبدالماجد خان، میاں عبدالوحید،فیصل راٹھور اور حریت کانفرنسی وفد کے اراکین کے علاوہ طلباء وطالبات کی بڑی تعداد بھی موجود تھی۔ وزیر اعظم چوہدری عبدالمجید نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سابق وزیر اعظم پاکستان محترمہ بینظیر بھٹو شہید نے پاکستان آنے سے قبل بریڈ فورڈ میں اپنے آخری جلسہ کے موقع پر میرپور میں میڈیکل کالج کے قیام کا وعدہ کیا تھا اور جب صدر پاکستان آصف علی زرداری نے شہید رانی کے نام پر میرپور میں میڈیکل کالج کے قیام کی منظوری دی تو میں نے مظفرآباد میں بھی میڈیکل کالج قائم کرنے کی بات کی جس پر صدر پاکستان نے منظوری دیدی اور میں نے اسکا نام تحریک آزادی کشمیر کے سینئر رہنما میر واعظ مولوی فاروق کے نام سے منسوب کر دیا۔ انہوں نے کہا کہ کو ئی بھی ملک وقوم تعلیم کے بغیر ترقی کی منازل طے نہیں کر سکتا اور بی بی شہید کے ویثرن کے مطابق آزادکشمیر کو ایجوکیشن سٹی بنانے کے لیے عوامی حکومت نے 6ماہ کے عرصہ میں ہی دو میڈیکل کالج قائم کر کے اسکی باقاعدہ کلاسز کا اجراء بھی کر دیا ہوا ہے اور اب راولاکوٹ ڈویثرن میں تیسرا میڈیکل کالج شروع کیا جا رہا ہے۔جبکہ خطے میں پہلی خواتین یونیورسٹی سمیت دو یونیورسٹیاں قائم کی گئی ہیں اور تعلیمی پیکج کے ذریعے بھی سینکڑوں نئے کالجز اور سکولز دئیے جا رہے ہیں اور آئندہ سال کھڑی شریف میں بین الاقوامی معیارکی اسلامی یونیورسٹی اور مظفرآباد ،شاردہ اور پلندری میں بھی یونیورسٹیاں قائم کرنے کی منصوبہ بندی کی جا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ میڈیکل کالجوں میں مقبوضہ کشمیر سمیت گلگت بلتستان اور چاروں صوبوں وتارکین وطن مقیم برطانیہ کے لے بھی کوٹہ مختص کیا گیا ہے اور کشمیری مہاجرین کو مفت مالکانہ حقوق اور مفت رہائشی پلاٹ بھی دئیے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میں آزادخطہ کا وزیر اعظم نہیں بلکہ وزیر اعظم کی کرسی شہداء کے خون کی مرہون منت ہے اور میں چوکیدار اور خادم کی حیثیت سے عوامی خدمت کا فریضہ انجام دے رہا ہوں اور عوامی حقوق کے لیے ہر ممکن اقدامات اٹھاتے ہوئے ریاست کے آزاد علاقے کو حقیقی معنوں میں ایک ماڈل سٹیٹ بنانے کے لیے کوئی بھی کسر اٹھا نہیں رکھوں گا۔انہوں نے کہا کہ حریت رہنماؤں کے دور ہ کے تحریک آزادی پر اچھے اثرات مرتب ہونگے اور آر پار کی قیادت میں رابطوں کو بڑھایا جانا چاہیے۔

یہ بھی پڑھیں  ہمیں انصاف اور قصاص لینا آتا ہے۔طاہرالقادری

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker