تازہ ترینعلاقائی

بلوچ قومی یکجہتی وقت کی اہم ضرورت ہے، عبدالمالک بلوچ

abdul malik blochکوئٹہ (بیورو رپورٹ) نیشنل پارٹی کے سربراہ ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ نے بلوچ قومی یکجہتی کو وقت کی اہم ضرورت قرار دیتے ہوئے کہا کہ ڈیرہ غازی خان ، راجن پور ،جیکب آباد،کشمور،کندھ کوٹ بلوچستان کے اٹوٹ انگ ہیں جنہیں سامراجی و استعماری قوتوں نے بلوچ قوم کی مرضی و منشاء کے بغیر سندھ اور پنجاب میں شامل کیا لیکن یہ تاریخی ،ثقافتی اور جغرافیائی طور پر بلوچ علاقے ہیں اور بلوچ قوم دوست قوتوں کا شروع سے یہ مطالبہ رہا ہے کہ ان اٹوٹ حصوں کو دوبارہ بلوچستان میں شامل کیا جائے حکمرانوں نے اگر سنجیدگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے بلوچستان کے مسائل کے حل کیلئے طرز فکر و طرز عمل تبدیل نہ کیا تو پھر اس کے انتہائی خطرناک و تباہ کن نتائج سامنے آسکتے ہیں ڈیرہ غازی خان میں پارٹی کارکنوں اور مختلف وفود سے بات چیت کرتے ہوئے ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ نے کہا کہ سامراجی و استعماری قوتوں نے ہمیشہ بلوچ قوم کا استحصال کیا ہے ماضی میں سامراجی قوتوں نے اپنے مذموم عزائم کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کیلئے بلوچ قوم کو تقسیم کیا اور بلوچوں کی مرضی و منشاء کے بغیر ڈیرہ غازی خان ، راجن پور ،جیکب آباد،کشمور،کندھ کوٹ کو پنجاب و سندھ میں شامل کیا گیاتا ریخی ،ثقافتی اور جغرافیائی طور پر بلوچ علاقے ہیں اور بلوچ قوم دوست قوتوں کا شروع سے یہ مطالبہ رہا ہے کہ ان اٹوٹ حصوں کو دوبارہ بلوچستان میں شامل کیا جائے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے موجودہ حکومت کی کارکردگی کو انتہائی مایوس کن قرار دیتے ہوئے کہا کہ جمہوریت کی اس پر انتشار حاکمیت کے کھیل میں جبر کی مختلف شکلیں مجتمع ہوگئی ہیں حکمران طبقات کے مختلف گروہوں نے استحصال کی مختلف اقسام کو بیدردی سے استعمال کرتے ہوئے عوام کو عذاب مسلسل میں مبتلا کررکھا ہے موجودہ نام نہاد جمہوری اقتدار انتہائی سفاک ہے خوفناک اور نفرت انگیز ہے جہاں عوام زندگی کی بنیادی سہولیات سے محروم ہیں اغواء برائے تاوان ،ٹارگٹ کلنگ و بدامنی کے بڑھتے ہوئے واقعات کی وجہ سے عدم تحفظ کا شکار ہیں اسمبلی میں بیٹھے نمائندؤں کو عوام سے کوئی سروکار نہیں اس لئے کہ وہ اغواء برائے تاوان جیسے گھناؤنے جرائم میں ملوث عناصر کی پشت پناہی کررہے ہیں جنہوں نے عوام کو عذاب میں مبتلا کررکھا ہے انہوں نے کہا کہ موجودہ نظام عوام عوام کیلئے موت کا پیغام ہے اور اس جبر پر مبنی نظام کی موت میں ہی عوام کی حیات اور خوشحالی پنہاں ہے۔جبر پر مبنی اس نظام کے خاتمے کے لیے ایک بڑی اور منطم و باشعور لڑاکا تنظیمی قوت کی ضرورت ہے اور عوامی قوت نے اپنے جنم سے تاریخی طور پر ثابت کیا ہے کہ وہ جبر واستحصال پر مبنی جاگیردارانہ، ظالمانہ نظام کی حقیقی گورکن ہے وہ اپنے تاریخی کردار سے آشنا ہو رہی ہے اس لیے آج یہ تاریخی فریضہ آن پہنچاہے کہ وہ گلتے سڑتے ہوئے نظام کو دفنانے کا اہتمام کرے اس لیے ضروری ہے کہ وہ اپنے اتحاد اور انقلابی سیاسی سوچ و فکر فلسفہ سے لیس ہو کر آخری معرکہ کااعلان کرے،جس میں حکمران طبقات اور ان کے طفیلیوں کی شکست یقینی بن جائے اور یہ کام صرف اور صرف انقلابی ڈسپلن والی تنظیم کے ذریعے ہی ممکن ہے اور نیشنل پارٹی ہی وہ جماعت ہے جس کی جڑیں عوام میں ہے اور عوام کے حقوق کے حصول اور ان کے دفاع کی سیاسی و جمہوری جنگ لڑرہی ہے اور عوام کو منظم و متحرک کررہی ہے تاکہ استحصالی قوتوں کے خلاف انقلاب برپا کیا جاسکے ۔

یہ بھی پڑھیں  ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ: قومی اسکواڈ 15 اکتوبر کو یو اے ای روانہ ہوگا

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker