تازہ ترینکالمملک عامر نواز

اے ! مسلم تجھے اتحاد و اتفاق کی ضرورت ہے

محترم قارعین ! خاتم النبین حضرت محمد مصطفی ﷺ کی شان میں گستاخانہ فلم بناکر مسلما نوں کے جذبات کو مجروع کر نے وا لے امریکی یہودی نے ایک حقیر اور گھٹیا پن ہو نے کا ثبوت دیا ہے ۔ اس واقع کے بعد دنیا بھر کی طرح پاکستان میں احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ جا ری ہے ۔ دنیا بھر میں اس گستاخانہ فلم کے بنا نے والوں کے خلاف شدید غم وغصہ کی لہر پا ئی جا تی ہے ۔ ایسی پاک ہستی جن کا ذکر اللہ رب العزت کے ذکر کے ساتھ ہو ۔اس گستاخ ،کنگلے یہو دی کو کون بتلا ئے کہ اللہ پاک نے ہما رے پیغمبر ﷺکو کتنا حسین بنایا کیو نکہ ہم مسلمانوں کا ایمان اور یقین ہے کہ جو حسن اللہ نے حضرت محمد ﷺکو عطا فرمایا ایسے حسن والا کسی آنکھ نے آج تک نہیں دیکھا ۔ ایسا حسین ،عا لی حسب و نسب والا،عا لی خاندان والا،صفات والا ،جمال والاآج تک کسی مان نے جنا ہی نہیں ۔ اللہ رب العزت نے ایسا عظیم بنا یا کہ کا ئنات میں نہ ایسا عظیم کو ئی آیا نہ آ سکتا ہے ۔
مسلمانوں اللہ رب العزت نے اپنے پیا رے نبی ﷺکی پوری زندگی کو محفوظ کر دیا ہے ۔ اور ہم سب کو پیروی کی ہدایت کی ہے ۔ جس سے پیا ر ہو اس کی ہم ہر چیز کی حفاظت کر تے ہیں ۔ اس کو محفوظ کر لیتے ہیں ۔یہ دنیا ہے حالا نکہ یہ دنیا ایک مچھر کے پر سے بھی حقیر ہے ۔پھر بھی ہم لوگ اپنے پیا روں کی باتوں ان کی چیزوں کو محفوظ رکھنے کی کوشش کر تے ہیں۔ اور دنیا وی محبت میں شق کی گنجا ئش ہے ۔ جبکہ اللہ کی اپنے نبی ﷺسے محبت میں کوئی شق و شبہ نہیں ۔اللہ رب العزت نے آپ ﷺ کی ہر ادا کو ایسا محفوظ کیا کہ انسان کی کامیابی ہی اپنے نبی ﷺکی زندگی میں رکھ دی کیو نکہ جو انسان اپنے نبی ﷺ کی زندگی کے سانچے میں ڈھل گیا ۔ وہ دنیا و آخرت میں کا میاب ہو گیا ۔
گستاخانہ فلم کے مر تکب نے یہ ناپاک جسارت کر کے دنیا بھر کے کروڑوں مسلمانوں کی دل آزاری کر کے مسلما نوں کی غیرت کو للکارہ ہے ۔ حقیقت یہ ہے کہ یہ ناپاک جسارت ایک سوچی سمجھی سازش ہے ۔ جو کہ مسلما نوں کی توجہ کو تقسیم کر نے کے لئے ان ناپاک غلیظوں نے کی ہے ۔ کبھی تویہ اسلامی شعائر کی توہین کر کے مسلمانوں کے جذبات کو مجرو ع کر تے ہیں کبھی توہین آمیز خاکوں کے ذریعے ۔جبکہ ان کو ابھی تک اس بات کا احساس نہیں کہ مسلمان ایمان کے جس درجے پر بھی ۔وہ کبھی بھی ایسی توہین برداشت نہیں کر سکتا ۔ اس کی جہاں تک رسائی ہو سکتی ہے وہ احتجاج کر تا ہے ۔ اپنی جان تک کا نظرانہ دے دیتا ہے ۔
عوامی رائے کے مطابق اس طرح کے معاملا ت اس لئے جنم لیتے ہیں کہ ہما رے حکمران اللہ کے خوف سے دور ہیں ۔ انہیں اسلامی تعلیمات سے دوری اس بات کا احساس نہیں ہو نے دیتی ۔کہ کیا ہو رہا ہے ۔کیو نکہ ان کو اسلامی شعائر کی قدرو منزلت کا علم نہیں ۔ اور اس طرح کی گستاخی جب غیر مسلم کر تا ہے اور مسلم کے جذبات مجروع ہو تے ہیں تو اس سے مسلمان کے اندر سے ایک لا وہ اٹھتا ہے جس سے مسلمان مجبور ہو کر رد عمل ظاہر کر تے ہیں تو مسلمانوں کو پھر دہشت گرد کہا جا تا ہے کیا یہ لوگ دہشت گرد نہیں ہیں جو اس قدر غلیظ حرکات کر تے ہیں ۔ اگر تمام مسلم ممالک کے حکمران خود کو اچھا انسان اور مسلمان بنا لیں اور متحد ہو جا ئیں تو کبھی بھی کسی باولے یہودی یا کسی اورغیر مسلم کو یہ ہمت بھی نہ ہوکہ وہ ہما رے اسلا می شعائر کی یا ہما رے پاک پیغمبر ﷺ کی تو ہین کر نے کی کوشش بھی کریں ۔
تمام مسلم ممالک ان کی پروڈکٹ کا بائیکاٹ کر دیں ان کی ایکا نومی کو ایسا دھچکہ لگے کہ ان کو نانی یاد آجا ئے ۔ لیکن اگر غور کیا جا ئے تو ہم سب مسلمانوں کو اتحاد کی ضرورت ہے ۔ جب تک ہم اپنے گریبان میں جھا نک کر نہیں دیکھیں گے تب تک ان غلیظوں کو ایسی حرکات کر نے کی سوجھتی رہے گی ۔

یہ بھی پڑھیں  وزیر دفاع خواجہ آصف سپریم کورٹ کراچی رجسٹری پہنچ گئے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker