پاکستانتازہ ترین

لانگ مارچ میں ہرصورت شرکت کرینگے،الطاف حسین

altafکراچی(نمائندہ خصوصی) ایم کیوایم کے قائد الطاف حسین نے کہا ہے کہ لانگ مارچ میں ہرصورت شرکت کرینگے۔ کیا پیپلزپارٹی اور دیگر جماعتوں نے لانگ مارچ نہیں کیے ۔ ایم کیوایم فوجی حکومت اور آمریت کےحق میں نہیں ہوسکتی۔ وہ لال قلعہ گراونڈ عزیز آباد میں کارکنوں کے اجتماع سے اہم خطاب کررہے تھے۔ الطاف حسین نے کہا کہ کس آئین میں لکھا ہے کہ حکومت میں رہ کر لانگ مارچ میں شرکت نہیں کرسکتے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں دیوار سے نہ لگایا جائے کہیں ہم سندھ کی تقسیم کا مطالبہ نہ کربیٹھیں۔ ایم کیو ایم سندھ کی تقسیم نہین چاہتی۔ انہوں نے کہا کہ اگر ثابت کردوں کہ قائداعظم پاکستانی شہری نہیں تھے۔ آج تاریخ کے اوراق کھولنے پر مجبور ہوگیا ہوں۔ الطاف حسین نے کہا ہے کہ ہم اقتدار کے بھوکے ننگے نہیں ہیں، اگر گورنر کو ہٹانا ہے تو کل کے بجائے آج ہٹادو۔ انہوں نے کہا کہ جو جاگیردار ملک کے مخالف تھے ان کی اولاد آج اقتدار میں بیٹھی ہے۔ایم کیو ایم کے قائد نے کہا کہ کہا جاتا ہے کہ طاہرالقادری اور الطاف حسین دہری شہریت رکھتے ہیں اگر بینظیر بھٹو اور نوازشریف برسوں باہر رہیں تو وہ جائز ہے اور اگر کوئی کسی ملک کی شہریت مجبوراً حاصل کرے تو اس کی حب الوطنی مشکوک ہوجائے۔ انہوں نے کہا کہ جمہوریت کی نرسری بلدیاتی نظام ہے مگر ملک میں جمہوری حکومتیں ہی بلدیاتی انتخابات کرانے سے قاصر رہتی ہیں۔ ایم کیو ایم نہ تو سندھ کی تقسیم چاہتی ہے اورنہ ہی اردو بولنے والوں کے لئے علیحدہ صوبہ مگر بلدیاتی نظام پر اتفاق نہ ہوا تو سندھ کی تقسیم کا نعرہ لگے گا۔الطاف حسین نے کہا کہ ایم کیو ایم ملک کی واحد سیاسی جماعت ہے جو حقیقتاً جمہوریت پسند اور جمہوریت کی رو کے مطابق ملک میں اس کا نفاذ چاہتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کہا جاتا ہے کہ ایک طرف تو ایم کیو ایم جاگیرداروں کے خلاف ہے اور دوسری طرف ان ہی لوگوں کے ساتھ اقتدار میں شامل ہوتی ہے، مجبوری یہ کہ یہی لوگ پارلیمنٹ میں آتے ہیں تو پھر ان ہی کے ساتھ بیٹھنا بھی ہوتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں  گورنرسندھ عشرت العباد نے استعفیٰ فیکس کردیا

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker