پاکستانتازہ ترین

کسی فرد اورادارے کوتنہاملکی مفادکاحتمی تعین کرنے کا حق نہیں، آرمی چیف

اسلام آباد(مانیٹرنگ سیل) پاک فوج کے سربراہ جنرل اشفاق پرویز کیانی نے کہا ہے کہ ماضی میں سب نے غلطیاں کی ہیں، بہتر ہوگا فیصلے قانون پر چھوڑ دیں، ملزم صرف اس صورت میں ہی مجرم قرار پاتا ہے جب جرم ثابت ہو جائے۔جی ایچ کیو میں افسران سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بحیثیٹ قوم ہم انتہائی نازک دور سے گذر رہے ہیں، سب اپنی ماضی کی غلطیوں کا نقدانہ جائزہ لے رہے ہیں اوراس کوشش میں ہیں کہ مستقبل کیلئے ایک صحیح راستے کا انتخاب کرسکیں۔ انھوں نے کہا کہ مسلسل بحث و مباحثہ اس عمل کا ایک فطری حصہ ہے لیکن کسی فرد یا ادارے کو یہ حق حاصل نہیں کہ وہ ملکی مفاد کا حتمی تعین کر سکے یہ صرف اتفاق رائے سے ہی ممکن ہے اور سب پاکستانیوں کو رائے دینے کا حق ہے ۔ آئین میں اس کا طریقہ کا ر واضح ہے۔ انھوں نے کہا کہ ہمیں چاہیے کہ ماضی سے سبق سیکھیں اور حال کی بہتر تعمیر کریں اور بہتر مستقبل پر نظر رکھیں سب متفق ہیں کہ اداروں کی مضبوطی، قانون کی بالادستی اور اداروں کا آئین کے دائرے میں رہتے ہوئے کام کرنا ہی بہتر مستقبل کی ضمانت ہے۔ اداروں کو کمزور کرنا یا آئین سے تجاوز صحیح راستے سے ہٹا دے گا یہ سب کی ذمہ داری ہے کہ صحیح بنیادیں استوار کریں اور دانستہ یا نادانستہ کوئی ایسا کام نہ کریں جو بظاہر تو صحیح لگتا ہو اور مستقبل میں اس کے منفی نتا ئج نکلنے کے امکانات ذیادہ ہوں۔انھوں نے کہا کہ عوام کی حمایت مسلح افواج کی طاقت کا منبع ہے اس کے بغیر قومی سلامتی کا تصور بے معنی ہے،کوئی بھی دانستہ یا نا دانستہ کوشش جو مسلح افوا ج اور عوام کے درمیان دراڑ ڈالے وسیع تر قومی مفاد کے منافی ہے،تعمیر تنقید مناسب ہے لیکن افواہ سازی کی بنیاد پر سازشیں اوربنیادی مقاصد کو مشکوک بنا دینا کسی بھی صورت قابل قبول نہیں۔ افواج کی قیادت اور سپاہ کے مابین رشتے کو تقسیم کرنے کی کوئی کوشش برداشت نہیں کی جاسکتی۔انھوں نے کہا کہ یہ حق کسی کو حاصل نہیں کہ اپنے طور پر کسی بھی سویلین یا فوجی کو مجرم ٹھہرائیں اور پھر اس کے زریعے پورے ادارے کو مورود الزام ٹھرائیں،انھوں نے کہا کہ یہ طے کرنا ہو گا کہ کیا ہم قانون کی حاکمیت اور آئین کی بالادستی قائم کر رہے ہیں،کیا ہم اداروں کو مضبوط کر رہے ہیں یا کمزور،اگر پاکستان کی صحیح خدمت کرنی ہے اور آئندہ نسلوں کے سامنے سرخرو ہو نا ہے تو ان دو سوالوں کے جواب مثبت ہونے چاہیں۔

یہ بھی پڑھیں  میاں نوازشریف اور مریم نوازسے ملاقاتیوں کیلئے جمعرات کا دن مقرر

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker