پاکستانتازہ ترین

ارسلان افتخارکے وکیل سے دھمکی آمیزخط ملا ہے، فصیح بخاری کاالزام

اسلام آباد(بیورو رپورٹ)چیئرمین نیب ایڈمرل ریٹائرڈ فصیح بخاری نے انکشاف کیا ہے کہ انہیں ارسلان افتخار کے وکیل کی جانب سے دھمکی آمیز خط ملا ہے جس کا مقصد کیس پراثرانداز ہونا ہے۔ ان اکہنا ہے کہ اٹارنی جنرل کی ہدایت پر کیس کی تحقیقات کے لئے مشترکا ٹیم بنا دی گئی ہے۔چیئرمین نیب نے سینئر صحافیوں سے گفتگو میں کئے دھماکا خیز انکشافات، ان کا کہنا تھا کہ اٹارنی جنرل کی جانب سے نیب کو ارسلان افتخار کیس کی تحقیقات کرنے کا کہا گیا ہے ، اس سلسلے میں نیب ، پولیس اورایف آئی اے کے افسران پر مشتمل مشترکا ٹیم تشکیل دے دی گئی ہے۔چیئرمین نیب نے بتایا کہ انہیں ارسلان افتخار کے وکیل کی جانب سے دھمکی آمیززبان میں لکھا گیا خط ملا ہے، اس خط کا مقصد کیس کی کارروائی پر اثرانداز ہونا ہے، کیس کی تحقیقات کے دوران ایسا خط لکھنا توہین عدالت کے مترادف ہے ۔ چیئرمین نیب نے بتایا کہ راجاپرویز اشرف کے وزیراعظم بننے سے پہلے ان سے رینٹل پاورکیس میں تین گھنٹے پوچھ گچھ کی گئی تھی، تحقیقات کے دوران ان کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کی سفارش کی گئی تھی جس پر فیصلہ متعلقہ اداروں نے کرنا ہے۔چیئرمین نیب نے بتایا کہ شریف برادران کے خلاف کیسز میں یہ تعین کیا جارہا ہے کہ کون سے مقدمات سیاسی بنیادوں پربنائے گئے اورکن مقدمات میں ٹھوس شواہد موجود ہیں ، ایک سوال پران کاکہنا تھاکہ ملک کا عدالتی نظام مکمل فعال نہیں اوریہ مختلف سطحوں پر کرپشن کا شکار ہے۔چیئرمین نیب نے بتایا کہ ملک میں ہرروز چھ سے آٹھ ارب روپے کرپشن کی نذرہورہے ہیں ، ان کاکہنا تھاکہ ریلویز، این آئی سی ایل اور اوگرا میں اربوں روپےکی کرپشن کی تحقیقات جاری ہیں ، ایڈمرل ریٹائرڈ فصیح بخاری نے بتایا کہ نیب کی استعداکاربڑھانے کے لئے تین سونئے تفتیش کار بھرتی کئے جائیں گے۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker