پاکستانتازہ ترین

اصغرخان کیس کا تفصیلی فیصلہ جاری کردیا گیا

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) سپریم کورٹ نے اصغر خان کیس کا تفصیلی فیصلہ جاری کر دیا۔آئی ایس آئی اور ایم آئی کا مقصد سرحدوں کی حفاظت ہے، خفیہ اداروں کا کام الیکشن سیل بنانا نہیں۔فیصلہ سپریم کورٹ کے رجسٹرار فقیر حسین نے پڑھ کر سنایا۔ فیصلے میں کہا گیا ہے کہ نوے کے انتخابات میں دھاندلی کی گئی ہے۔ یونس حبیب نے چار کروڑ روپے تقسیم کرنے کا اعتراف کیا ہے۔ اس وقت کے صدر، آرمی چیف ،ڈی جی آئی ایس آئی اور ایم آئی نے اختیارات کا ناجائز استعمال کیا ہے۔ پیسے لینے والوں سے سود کے ساتھ رقم واپس لی جائے۔اس سے قبل سپریم کورٹ نے اصغر خان کیس میں مختصر فیصلہ انیس اکتوبر کو سُنایا تھا۔ سابق ائیر مارشل اصغر خان کی جانب سے نوے کے انتخابات کے موقع پر سیاستدانوں میں رقوم کی تقسیم سے متعلق پٹیشن سولہ سال پہلے دائر کی گئی۔ جو طویل عرصے زیر التوا رہی۔ گزشتہ سال سپریم کورٹ نے اس کی شنوائی شروع کی۔ چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی۔ بینچ میں جسٹس جواد ایس خواجہ اور جسٹس خلجی عارف حسین شامل تھے۔ اس دوران سابق آرمی چیف مرزا اسلم بیگ ، سابق آئی ایس آئی چیف اسد درانی، سابق سربراہ مہران بینک یونس حبیب سمیت اہم شخصیات کی جانب سے بیان جمع اور ریکارڈ کرائے گئے۔ اس کیس میں جماعت اسلامی کے علاوہ کسی سیاسی جماعت کا حلف نامہ نہیں آیا۔

یہ بھی پڑھیں  سپریم کورٹ، آج ایفیڈرین کوٹہ کیس کی سماعت ہوگی

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker