علاقائی

آزادی صحافت کی علمبردار ﴿ن﴾لیگ حکُومت کا چہرہ بے نقاب ہوگیا

بھائی پھیرو﴿نامہ نگار﴾آزادی صحافت کی علمبردار ﴿ن﴾لیگ حکُومت کا چہرہ بے نقاب ہوگیا،شریف برادران ہمیشہ اقتدار میں آکر ریاست کے ستونوں پر حملہ آور ہوئے ،سیاسی جماعتیں ان سے استعفے لیں ،صحافیوں و ٹی وی چینل کے خلاف قدغن لگانے والے احمقوں کی جنت میں رہتے ہیں جمہوریت کا ڈھونڈورا پیٹنے والوں نے اپنے مکروہ چہرے چھپانے کے لیے نجی ٹی وی چینل کے چیف ایگزیکٹو کے خلاف جھوٹی 302 کی ایف آئی آر درج کروادی ان خیالات کا اظہار جماعت اسلامی ضلع قصور کے میڈیا سیکر ٹری حاجی محمد رمضان نے بھائی پھیرو کے جرنلسٹ سے خطاب کرتے ہوئے کیا اُنہوں نے کہا کہ صحافی برادری معاشرے کی وہ آنکھ ہیں جو ہمیشہ لوگوں کے سامنے حقائق لاتے ہیں اور حق سچ کی بات کہتے اور لکھتے آئے ہیں اب بھی جب صحافی برادری حقائق سامنے لائی کہ کس طرح پنجاب حکومت کی نا اہلی کی بدولت دل کے مریض جعلی ادوایات کھانے سے مر رہے ہیں توپنجا ب حکومت تلملا اٹھی اور نجی ٹی وی چینل کے چیف ایگزیکٹو کے خلاف بے بنیاد جھوٹا 302 کا مقدمہ درج کروا دیا انہوں نے کہا کہ شریف برادران ہمیشہ اقتدار میں آکر ریاست کے ستونوں پر حملہ آور ہوئے اوراب ایک سازش کے تحت میڈیاکے ساتھ محاز آرائی کی گئی ہے مزید انہوں نے کہا کہ ماضی گواہ ہے کہ شریف برادران نے اقتدار میں آکر کبھی اخبارات کے دفتر جلائے تو کبھی سپریم کورٹ پر حملہ کیا گیا کبھی سینئر صحافیوں کو ان کے بیڈ روموں سے اٹھایا گیا تو کبھی اخبارات کو معاشی موت مارنے کے لیے سرکاری اشتہارات کو بطور ہتھیار استعمال کیا گیا صحافیوں کے کیمرے توڑنے اور انہیں نوکریوں سے نکلوانا ﴿ن﴾لیگ کا سیاہ ماضی ہے انہوں نے کہا کہ اس وقت ارکان اسمبلی میڈیا پر برسنے کی بجائے عوامی مسائل کی جانب توجہ دیں کیونکہ اس وقت جو صورت حال پیدا ہوچکی ہے ان کی وجہ سے لوگ بے موت مر رہے ہیںآخر میں انہوں نے کہا کہ چیف جسٹس سپریم کورٹ آف پاکستان افتخار محمد چوہدری کو چاہیے کہ سوموٹو ایکشن لیتے ہوئے میڈیا کی آزادی سلب کرنے والی جماعتوں کے لیڈران کو قانون کے کٹہرے میں لا کھڑا کریں اور انہیں قانون کے مطابق سخت سے سخت سزا دیں تاکہ آنے والے وقت میں کوئی ممبر اسمبلی یا کوئی جماعت بھی میڈیا کی آزادی پر شب خُون نہ مارسکے

یہ بھی پڑھیں  پھولنگر:خبر لگنے پرموٹروے پولیس بیٹ 12کے اہلکاروں کی صحافیوں کو سنگین نتائج کی دھمکیاں

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker