پاکستانتازہ ترین

بابر اعوان توہین عدالت کیس،26 اپریل کوفرد جرم عائد کرنے کا فیصلہ

   اسلام آباد﴿بیوروچیف﴾ سپریم کورٹ نے سابق وفاقی وزیر بابر اعوان کیخلاف توہین عدالت کیس کی کارروائی جاری رکھتے ہوئے 26اپریل کو فرد جرم عائد کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے ۔ منگل کو جسٹس اعجاز افضل اور جسٹس اطہر سعید پرمشتمل دو رکنی بنچ نے بابر اعوان توہین عدالت کیس کی سماعت کی تو بابر ا عوان عدالت میں پیش ہوئے ، عدالت نے کہا کہ ہم نے آپ پر فرد جرم عائد کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے اس پر بابر اعوان نے کہا کہ میرا وکیل علی ظفر موجود نہیں اس لیے آج فرد جرم عائد نہ کی جائے اس پر سپریم کورٹ نے کہا کہ آپ دوسرا وکیل کرلیں آپ کے ساتھ بہت سے وکیل موجود ہیں اس پر بابر اعوان نے کہا کہ یہ تو مولوی مشتاق والا انصاف ہوگیا کہ میرا وکیل موجود نہیں اور آپ فرد جرم عائد کرنا چاہتے ہیں انہوں نے کہا کہ مجھے دوستوں نے ہی مشورہ دیا تھا کہ اس کیس میں وکیل کرلیں انہوں نے بنچ سے کہا کہ تعجب کی بات ہے کہ اگر سیاستدان بولیں تو کچھ نہیں ہوتا اور اگر کوئی وکیل ان کے ساتھ بیٹھ کر بولے تو توہین عدالت کی کارروائی شروع ہوجاتی ہے وکیل نہیں تووہی صفائی دے رہا ہوں وکیل کی موجودگی میں ایک لفظ بھی نہیں کہوں گا عدالت نے بابر اعوان کے وکیل کی عدم موجودگی کے باعث فرد جرم عائد کرنے کے معاملے پر 26اپریل کو سماعت ملتوی کردی ۔

یہ بھی پڑھیں  بارشوں کے بعد وبائی امراض پھیلنے کا خدشہ

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker