تازہ ترینعلاقائی

مون سون کاسیزن شروع، حکومت سندہ ساحلی علائقوں کوتباہی سے بچانے کیلئے ھنگامی بنیادوں پرکام کرے

بدین﴿نامہ نگار﴾ مون سون کا سیزن شروع ہونے والا ہے حکومت سندہ کو چاہیئے کہ وہ بدین ضلع سمیت ساحلی علائقوں کو تباہی سے بچانے کیلئے ھنگامی بنیادوں پر ایشائ کے سب سے بڑے سیم نالے لیفٹ بینک آئوٹ فال ڈرین ﴿ایل بی او ڈی﴾ سمیت دیگر سیم نالوں و نہروں میں پڑنے والے شگافوں کو بند کرایا جائے ان خیالات کا اظہار پاسبان ضلع بدین کے صدر محمد علی جمالی نے پریس کلب میں صحافیوں سے باتیں کرتے ہوئے بتایا کہ گذشتہ آنے والے سیلاب میں حکومت سندہ کی غلط پالیسیوں کے سبب ضلع بھر میں بڑا نقصان ہوا،اگر حکومت سندہ اس طرف سنجیدگی کے ساتھ توجہ نہ دی تو گذشتہ سیلاب سے بھی بڑا نقصان ہوگا، انہوں نے کہا گذشتہ سیلاب میں سیو دی چلڈرین کے علاوہ کسی بھی این جی او نے کام نہیں کیا وہ صرف اپنا پیٹ بھرنے میں مصروف تھے، جبکے سیو دی چلڈرین نے بیس سے زائد سیم نالوں کی بھل صفائی کروائی اور متاثرین میں فی گھر 5 ہزار روپے نقد تقسیم کرنے کے علاوہ متاثرہ گھوٹھوں و دیہاتوں میں راشن، کپڑے ، اور صاف پانی بھی تقسیم کیاتا کہ متاثرہ افراد بھوک اور بدحال کا شکار نہ ہو سکیں،انہوں نے کہا کے محکمہ موسمیات کی پیشن گوئی کے تحت گذشتہ سال سے اس سال بارشیں زیادہ ہونگی،مگر افسوس کے حکومت سندہ اور ضلعی انتظامیہ پڑنے والے شگافوں کو پر کرنے کے بجائے شگافوں میں خالی مٹی ڈال کر کروڑوں روپے ہڑپ کیئے جا رہے ہیں ،جوکہ بدین ضلع سمیت ساحلی علائقوں کی عوام کے ساتھ ظلم و زیادتی ہے،انہوں نے چیف جسٹس آف پاکستان افتخار محمد چوہدری سے اپیل کی ہے کے ایل بی او ڈی سمیت دیگر سیم نالوں اور نہروں پڑنے والے شگافوں میں ہونے والے کاموں کا ازخود نوٹس لیکر کرپشن میں ملوث افسران اور ٹھیکیداروں کے خلاف سخت قانونی کاروائی کی جائے، اور پڑنے والے شگافوں کو فوری طور پر پُر کرا کے بدین ضلع سمیت ساحلی علائقوں کو تباہی سے بچایا جائے۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker