تازہ ترینعلاقائی

بدین:وڈیرے کے کہنے پر 12 سالہ لڑکے پر زنا کا جھوٹا مقدمہ دائر

بدین:( منصور خاصخیلی) بدین پولیس نے وڈیرے کہ کہنے پر 12 سالہ لڑکے منیر خاصخیلی کو 45 سالہ شادی شدہ ہندو عورت سے زنا کا جھوٹا مقدمہ دائر کرا کے جیل بھجوا دیا ،تفصیل کے مطابق گاؤں گل محمد خاصخیلی کہ قدیمی رہائشی محنت کش ھاری محمد عرس خاصخیلی نے پریس کلب بدین میں صحافیوں کو بتایا کہ ہمارہ گاؤں سو سالوں سے زیادہ عرصہ سے قائم ہے ،2002 ء میں سندھ حکومت نے گوٹھ آباد اسکیم کے تحت ہمارہ گاؤں رجسٹرڈ کر کے ہمیں مالکانہ حقوق بھی دیئے ہیں،جو رکارڈ روینیو کھاتے میں موجود ہونے کہ باوجود ہمارے علاقے کے وڈیرے علی نواز چانڈیو اور خیر محمد چانڈیو نے ہمارے گاؤں کہ 10 ہزار فٹ کہ پلاٹ پر قبضہ کر کے وہاں پولٹری فارم ، آٹے کی مشین اور دکان زبردستی تعمیر کرانے کہ بعد ہمیں گاؤں خالی کرنے کے لئے دہمکیاں دی اور بدین پولیس سے ساز باز ہو کر گاؤں کہ لوگوں پر جھوٹے مقدمات درج کرا کے پریشان کر رہا ہے ،محمد عرس خاصخیلی نے بتایا کہ وڈیرے علی نواز چانڈیو ، خیرمحمد چانڈیو نے میرے 12 سالہ بیٹے منیر خاصخیلی پر ان کے ھاری تیرتھ کو لہی کی 45 سالہ بیوی ماروی کولہی سے زنا کرنے کا مقدمہ درج کرا کے اسے جیل بھجوا دیا ،جبکہ میڈیکل بورڈ نے میرے بیٹے کو نا بالغ قرار بھی دے دیا ہے ،وہ سرٹیفکیٹ بھی ہم نے پولیس کو فراہم کیا ہے ،محمد عرس خاصخیلی نے صحافیوں کو بتایا کہ بدین کے دو نامور وکیلوں نے میرے سے دو لاکھ روپے کیس لڑنے کی فیس وصول کر کے وڈیرے مزید پیسے لیکر مجھے کیس کی فائل واپس کر دی ہے ، انہوں نے بتایا کہ میرے پاس ایک جوڑی بیل کی تھی ، جو فرخت کر کے میں نے وکیلوں کو فیس ادا کی ، لیکن اب وہ وکیل نہ تو پیسے واپس کرتے ہیں نہ ہی کیس لڑتے ہیں،بدین پولیس وڈیروں کی کمدار بنی ہوئی ہے ،محمد عرس خاصخیلی نے چیف جسٹس سپریم کورٹ، چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ،اور سپریم کورٹ بار کی صدر عاصمہ جھانگیر سمیت پاکستان اور سندھ بار کاؤنسل سے اپیل کی ہے کہ ہمیں انصاف دلائیں۔

یہ بھی پڑھیں  میاں نوازشریف کے نام

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker