تازہ ترینعلاقائی

بدین:سماجی تنظیم کےرھنماءکی غریب پرچڑھائی، تنگ آکراپنے گلے پرچھری پھیردی

بدین(نامہ نگار) بدین میں سماجی تنظیم کے سرکردہ رھنما ءکی مدد سے بدین پولیس کی غریب دیہاتی کے گھر  پر مبینہ چڑھائی ۔ پولیس کی بار بار زیادتی سے تنگ آکر  45 سالا شخص وکیو لاکھو نے اپنے گلے پر چھری پھیر دی۔ نازک حالت میں لال بتی حیدرٓاباد منتقل۔ گھر میں کھرام۔ ورثہ کا احتجاج، چیف جسٹس سے نوٹیس لینے کا مطالبہ۔ بدین کے نواھی علاقے سیرانی کے گائوں مصری لاکھو کے رھائشی 45سالا وکیو لاکھو کو  ساحلی پٹی میں نصب سولر لائٹ کی چوری کے جھوٹے مقدمے میں ملزم نامزد کرکے بدین  اور سیرانی پولیس نے گرفتار کرکے کئی دن لاکپ میں رکھا بعد میں ورثہ کی کوششوں سے عدالت سے رھائی ملنے پر بھی بدین اور سیرانی پولیس نے غریب دیھاتی ھاری وکیو لاکھو کو تنگ کرنا شروع کردیا اور  کئی بار گھر پر سولر لائٹ کی برٓامدگی کا بھانا بنا کر چھاپے مارے جس سے تنگ ٓاکر45 سالا ھاری نے  گھر والوں سے دور ایک کھیت میں جاکر گلے پر چھری پھیر دی  جس کو نازک حالت میں سیرانی بعد میں سول اسپتال بدین لایا گیا مگر خون بھنے سے حالت انتھائی نازک ھونے سے  حیدرٓاباد لال بتی اسپتال لے گئے، جھاں پر اس کا ڈاکٹروں کی جانب سے علاج شروع کیا گیا ھے۔ مگر غریب ھاری کی حالت نازک بتائی جاتی ھے ، واقعہ کے متعلق رابطہ کرنے پر کسان کے بڑے بھائی محمد لاکھو نے بتایا ھے کہ وہ غریب ھیں اور علاقے میں ان کا رکارڈ اچھا ھے اور وہ شریف لوگوں کی فھرست میں جانے جاتے ھیں، مگر علاقےمیں پولیس کی سرپرستی میں چوروں اور ڈاکوں کی لوٹ مار عام ھے اور علاقے میں یو این ڈی پی( یونائیٹیڈ نیشن ڈولپمینٹ پروگرام) کا ایک ادارا ماحولیات پر کام کرھا ھے ۔ جس کی ایک ونگ جیف نے  سولر لائٹ نصب کیں ھیں،  جو کچھ عرصہ  قبل ھی ایک  سرگرم چوروں کے ٹولے نے چوری کرلی جن کا الزام علاقے کے سماجی رکن مسعود احمد لوھار نے ان کے بھائی پر لگایا اور پولیس کو بھاری رشوت دیکر ان کی خاندانی عزت کو رسوا کیا۔ جس  سے دل برداشتہ ھوکر وکیونے یہ اقدام اٹھایا ھے۔ شدید زخمی اور موت اور زندگی کے بیچ میں زندگی کی جنگ لڑنے والے وکیہ لاکھو کے بھائی محمد لاکھو نے چیف جسٹس آف پاکستان سے انصاف کرنے کا مطالبہ کیا اور پولیس اور سماجی خدمت کے نام پر لوگوں کی پگڑیاں چھالنے والے سماجی رھنماءہکے خلاف کاروائی کا مطالبہ کیا ھے ۔

یہ بھی پڑھیں  ٹیکسلا بار ایسوسی ایشن کے انتخابات ، سینئیر وکلاء نے بھی لنگوٹ کس لئے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker