تازہ ترینعلاقائی

بہاولنگر:ڈیڈسالہ بچی خسرےکےمرض میں مبتلا، ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹراسپتال کابچی کوداخل کرنےسےانکار

bahwalnagarبہاولنگر(ڈسٹرکٹ رپورٹر)بہاولنگرڈیڈسالہ بچی خسرے کے مرض میں مبتلا ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر اسپتال کے ڈاکٹر کا بچی کو داخل کرنے سے انکارمتاثرہ بچی کے والدین کا وزیر اعلیٰ پنجاب ،سیکرٹری ہیلتھ سے نوٹس لینے کا مطالبہ تفصیلات کے مطابق بہاولنگر جٹو والا کے رہائشی غریب محنت کش محمد شفیق کی ڈیڈسالہ بچی مناحل کو خسرے کے مرض میں مبتلا ہونے پر ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر اسپتال لیجایا گیامگر ڈیوٹی پر موجود چلڈرن ڈاکٹر رانا مقبول احمد نے بچی کو داخل کرنے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے پاس خسرے کا وارڈ نہیں ہے اور نہ ہی ہم اس بچی کو کسی اوروارڈ میں داخل کر سکتے ہیں ۔متاثرہ بچی کے والد محمد شفیق اور اسکی اہلیہ نے سچ نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ ہماری بچی کو خسرے کی شکایت لاحق ہونے اور الٹیاں ،بخار،موشن لگنے پرہم اپنی بچی کو سرکاری اسپتال لیکر گئے مگر ڈیوٹی پر موجود چلڈرن ڈاکٹر رانا مقبول احمدنے برائے نام چیک اپ کر کے کچھ دوائیاں لکھ دیہم نے کہا کہ ہماری بچی کی طبیعت زیادہ خراب ہے اسکو داخل کرلیں لیکن ڈاکٹر رانا مقبول احمد نے کہا ہمارے پاس خسرے کا وارڈ نہیں ہے اور مختلف حیلے بہانے کر کے ہمیں واپس بھیج دیامحمد شفیق نے مذید بتایا کہ میں بے روز گار ہوں کوئی ذریعہ معاش نہ ہے میرے چھوٹے چھوٹے چھ بچے ہیں 1500ماہوار پر کرائے کے مکان میں رہائش پزیر ہوں میرے پاس اتنے پیسے نہیں ہیں کہ میں اپنی بچی کا علاج کسی پرائیویٹ اسپتال میں کرواسکوں ہم سرکاری اسپتال علاج نہ کروائیں تو کہاں جائیں سرکاری اسپتال میں ہم جیسے غریبوں کی سننے والہ کوئی نہیں ہے ڈاکٹرز کہتے ہیں کہ غریب ہیں تو ہم کیا کریں میں وزیر اعلیٰ پنجاب ،سیکرٹری ہیلتھ سے مطالبہ کرتا ہوں کہ خدارا ہم غریبوں کے بچوں پر رحم کریں اور غفلت برتنے والے ڈاکٹرز کو نکیل ڈالیں۔

یہ بھی پڑھیں  شیر،کھلاڑی اور شکاری

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker