تازہ ترینعلاقائی

محکمہ معدنیات کے ٹھیکیداروں اورافسران کی ملی بھگت سیلاب بچاؤ کیلئے بنائے گئے بندھ سے ریت چوری کرناشروع کردی

بہاولپور(بیو رو چیف) محکمہ معدنیات کے ٹھیکیداروں اورافسران کی ملی بھگت سیلاب بچاؤ کیلئے بنائے گئے بندھ سے ریت چوری کرناشروع کردی درجنوں فٹ گہرے گڑھے کھودنے سے متعدد مزدورتودوں تلے دب کرشدید زخمی ہوگئے مقامی لوگوں کے احتجاج معدنیات ملازمین نے غنڈہ گردی شروع کردی شہریوں کوہراساں کرنے کیلئے چھوٹے مقدمات کااندراج شروع کرادیا۔ وزیراعلی پنجاب اورکمشنر نوٹس لیں مقامی شہریوں کامطالبہ تفصیل کے مطابق بہاولپورشہر اوراہم تنصیبات کودریائے ستلج کے سیلابی پانی سے بچانے کیلئے اخترآباد کے قریب اربوں روپے کی لاگت سے بندھ بنایاگیاتھا لیکن معدنیات کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر محمدندیم رائلٹی انسپکٹر محمدرفیق فیلڈانسپکٹر کی ملی بھگت سے ٹھیکیداروں عبدالرزاق عبدالقادر نے روزانہ سینکڑوں ٹرالیاں ریت چوری کرناشروع کررکھی ہے اورفی ٹرالی740 روپے بھتہ وصول کیاجاتاہے اورٹھیکیداروں نے35 سے40 فٹ تک گہرے گڑھے کھود رکھے ہیں اوراکثراوقات ٹرالیوں پرکام کرنے والے مزدور گڑھوں میں تودے گرنے سے دب جاتے ہیں مقامی لوگوں محمداجمل محمداسلم غلام محمدرب نواز ، محمدایوب ، چوہدری جمشید ، محمدمحسن اوردیگرنے بتایاکہ مذکورہ افراد غیرقانونی طورپرریت چوری کرتے ہیں جس سے بہاولپورشہر کوسیلاب کاشدید خطرہ ہے انہوں نے بتایاکہ مذکورہ بند سے چندشہر کے فاصلے پروزیراعلی پنجاب میاں شہبازشریف نے اربوں روپے کے فنڈز سے ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال تعمیر کرایاہے اوراس منصوبہ کوبھی دریا برد کرنے کی سازش ہے انہوں نے بتایاکہ احتجاج کرنے اورغیر قانونی اقدام سے روکنے کیلئے غنڈہ گردی کی جاتی ہے ٹرالیوں پرکام کرنے والے ایک مزدور غلام مصطفی نے بتایاکہ وہاں پر کام گہرے گڑھوں میں ٹرالیاں لوڈ کرتے وقت اس پرمٹی کاتودلہ گراجس کے باعث اس کی ٹانگ ٹو ٹ گئی ہے۔ اب اس کا کوئی پرسان حال نہیں ہے اس نے بتایاکہ اس سے قبل بھی اس قسم کے کئی واقعات پیش آچکے ہیں مقامی لوگوں نے وزریاعلی پنجاب سے فوری نوٹس لینے کامطالبہ کیاہے۔

یہ بھی پڑھیں  سندھ ہائیکورٹ: توہین عدالت کیس، شرجیل میمن اور دیگر کو نوٹس

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker