شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / تازہ ترین / بارسلوناکاقونصل جنرل پاکستانی نہیں لگتا

بارسلوناکاقونصل جنرل پاکستانی نہیں لگتا

حقا ئق سب کے سا منے ہو تے ہیں، کچھ آ نکھ بند کر لیتے ہیں، کچھ کو مجبو ر کیا جا تا ہے کہ وہ آ نکھیں بند ہی رکھیں، دیکھنے والے دیکھ ہی لیتے ہیں، جن کو زیر کر نے کی کو شش کی جا تی ان کے لیے خا ص دعا ئیں ہو تی ہیں، قیصر صا حب کی ایک لا ئن با ر سلو نا اسپین دیکھنے کو ملی، وہ قا رئین کی نظر،،، لا ئن تھی،،،،
جنا ب غو ر فر ما ئیں یہ پا کستا نی نہیں لگتا
بات شر وع کر تے ہیں، کہ آ پ کو پر دیس میں آ ئے ہو ئے کچھ ہی دن ہو ں، اسپیشل یو رپ میں ا ٓ ئے ایک چیز کو بہت نو ٹ کیا جا تا ہے کہ آ پ کی آ ی ڈی، پا سپو رٹ نہ پا س ہو تو جلدی سے جلد ی بن جا ئے تو پیپر ورک شر وع ہو سکتا ہے، ورنہ وقت کا ضا ئع ہو تا ہے، جیسے اسپین میں یہاں ایک آ فس میں انٹری کر وا کر ظا ہر کر نا پڑتا ہے کہ تین سا ل اس ملک میں رہے ہیں جو یہاں کی ڈیمنڈ ہے اس کو پو را کیا تو پیپر ورک شروع ہو نا چا ہیے، تین سا ل کے لیے انٹری جلد شروع ہو اس کے لیے پا سپو رٹ ضر وری ہو تا ہے، جو لو گ کسی بھی طر ح سے یہاں پہنچتے ہیں تو پا سپو رٹ ان کے پا س نہیں ہو تے، یہ وقت ضا ئع کیے بغیر قو نصل آ فس پہنچتے ہیں تا کہ جلد ی جلدی پا سپو رٹ بنے، وہاں پتہ چلتا کہ پا کستان سے انکو ائری ہی نہیں آ ئی یہ وہ، تین چا ر لو گ تو ایسے ملے جن سے یہ بھی سنے کو ملا کہ دو دو سال قو نصل آ فس جا نا پڑا صر ف پا سپو رٹ کے لیے، اور دو سا ل کے بعد پھر تین سا ل کی انٹری کے لیے آ غا ز ہوا، کچھ تو با ر بار چکر لگا نے سے تنگ آ کر پا نچ سو یو رو تک دے کر پا سپو رٹ بنو اتے رہے ہیں، مطلب کے پا کستا نی کو پا کستا نی پا سپو رٹ کے لیے بھی ہزاروں روپے دینے پڑ تے رہے ہیں، اب مو جو دہ وقت میں کو ئی بھی قو نصل آ فس جا تا اس کو کو ئی انکو ائر ی کا بہا نہ نہیں سنا یا جا تا بس یہی کہا جا تا کہ نا رمل پا سپو رٹ کے لیے صر ف آ پ کو ایک ماہ انتظا ر کر نا پڑ ئے گا، قو نصل آ فس میں جہاں تک میر ا خیال تین ہال ہیں، تین منزل اس آ فس کے لیے ہیں، پہلے ہو تا بھی آ یا ہے ما ضی میں اور اب بھی یہی ہو نا چا ہیے تھا کہ کسی بھی ہال میں لو کل کیمو نٹی کو شر کت کیا صر ف انٹری کی اجا زات بھی نہیں ہو نی چا ہیے، مگر اب دیکھنے میں آ یا کہ پو رے آفس کو صر ف آ فس ورک کے لیے نہیں بزی رکھا جا رہا بلکے یہاں مختلف پر وگرام ہیں جن کی لمبی لسٹ ہے، جیسے، کیمو نٹی کو میڈ یکل ایشو اس کے لیے ہر ویک ایک دن رکھا گیا اس دن یہاں کے ڈاکٹروں کی ٹیم آ تی ہے اور پا کستا نیوں کا فر ی چیک اپ کر تی ہے، نو جو انوں کو یہاں تعلیمی مسا ئل ہیں ان کی رہنما ئی کے لیے کچھ نو جو انوں کا گر وپ قونصل آ فس میں ویک میں ایک دن آ تا ہے اور کسی کو کو ئی ایشو ہو یا ایجو کیشن کے معا ملے یہاں کے اداروں کے بارے معلو ما ت لینا چا ہیے تو اس آ فس میں رہنما ئی کے لیے ایک ٹیم مو جو د، کیمو نٹی کو قا نونی معلو ما ت حا صل کر نے کے لیے بھی یہاں پا کستانی وکیل اپنی کیمو نٹی کی خد مت کے لیے ویک کے ایک دن مو جو د ہو تا ہے، ویسے آ ئے دن کیمو نٹی کے پر و گرام بھی منعقد ہو تے رہتے ہیں جس میں کا فی تعدا د میں لو گ شر کت بھی کر تے ہیں، ہما رے بیو روکر یٹ ا پنے آ فس کو کس طر ح یو ز کر تے ہیں وہ قا رئین مجھ سے بہتر ہی جا نتے ہیں، اوپر جو پر وگر اموں اور کمیو نٹی کی خد مت کے لیے لسٹ بتا ئی آ پ کو بھی حیرا نگی ضر ور ہو رہی ہو گی کہ ہما رے اٹھا رہ انیس گر یڈکے آ فیسر ایسے نہیں ہو سکتے کہ حقیقت میں کمیو نٹی کی خد مت شر وع کر دیں، اب با ت کر تے ہیں قو نصل جنر ل صا حب کی مصر وفیا ت کیا کیا ہیں، با رسلونا میں کو ئی بھی پر وگرام ہو اور اس میں صر ف چند لو گ بھی شا مل ہو ں تو قو نصل جنر ل صا حب کو مد عو کیا جا ئے وہ انکا ر نہیں کر تے، دور دراز گا ؤں میں محنت کش ما لٹے، انگور تو ڑ کر اپنے خاندان پا لتے ان کی حو صلہ افزا ئی کے لیے وہاں پہنچ جا تے ہیں، جیلوں میں قیدی،چو دہ اگیست کی خو شی انہوں نے جیل کے با ہر منا ئی ہو یا نہیں، قو نصل جنرل صا حب اس خا ص ڈے کو جیلوں میں جا کر قید یو ں سے مل کر ان کی تنہا ئی دور کر تے ہیں، یہ سب کیا ہے میر ے خدا یا، ہما رے اٹھا رہ انیس گر یڈ کے آفیسر ایسے کب سے ہو گے ہیں، قو نصل جنر ل کے آ فس میں بیٹھے تھے، ایک کیس آ یا کہ کو ئی بند ہ مر گیا تو اس کی رپو رٹ اوکے کر نی تھی تا کہ میڈ یکل کا روائی شر وع ہو سکے، آ فس کے عملے سے کو ئی کو تا ئی ہو ئی تو بہت احتر ام کے سا تھ با ت واضع کی گئی کہ کو ئی بند ہ مر جا ت اس کے عز یز پہلے ہی بہت دکھ میں ہو تے ہیں تو کو با ر بار آ فس کا چکر لگا وا جا ئے تو یا د رکھناقیا مت کے دن ان چکر وں کا حساب دینا پڑ ئے گا، ایک با با بز رگ اسی آ فس میں تشر یف لا ئے تو ر ونا شروع ہو ئے وجہ پو چھی گئی کہ کیا وجہ آ پ کو کو ئی پر یشا نی، بتا یا گیا کہ صا حب یہ خو شی کے آ نسو کہ کچھ دنوں میں میر ا وہ کا م ہو گیا جو یہاں پہلے سال تک بھی نہیں ہو تا تھا، قا رئین ہی فیصلہ کر ئیں آ پ کو بھی شک گز ر رہا کہ یہ با ر سلونا کا قو نصل جنرل ہم میں سے نہیں لگتا، ورنہ یہ بھی انکو ائر ی کے نام پیسہ بنا تا، جیل تو کیا کسی کو اپنے آ فس بھی ایزی سے نہ ملتا، چند لو گ کیا پہلے طہ کیا جا تا کہ اتنے لو گ، اتنا پر وٹوکول ہو تب تشر یف آ وری ہو گی، پو ری کی پو ری تین منزل صر ف آ فس ورک کے لیے ہو ں گئیں اور کسی نے کیمو نٹی کی خد مت کرنی تو اپنے تحت کر ئے، قیصر صاحب کا ایک پیغام یہاں سنا نا بنتا ہے جس میں تھا نے جا کر شکا یت کر تے ہیں اپنے پڑ وسی کے با رے میں کہ تھا نے دار صا حب یہ بند وقت پر سر کا ری دفتر جا تا ہے وقت پر وا پس آ تا ہے، بڑے گر یڈ کا ہے لیکن طرز زند گی انتہا ئی سا دہ،رشو ت بھی نہیں لیتا اور کسی کی دھمکی سے ڈرتا بھی نہیں لہذا چیک کر یں مجھے لگتا کہ یہ پا کستا نی نہیں ہے۔ حقا ئق سب کے سا منے ہو تے ہیں، کچھ آ نکھ بند کر لیتے ہیں، کچھ کو مجبو ر کیا جا تا ہے کہ وہ آ نکھیں بند ہی رکھیں، دیکھنے والے دیکھ ہی لیتے ہیں، جن کو زیر کر نے کی کو شش کی جا تی ان کے لیے خا ص دعا ئیں ہو تی ہیں، قیصر صا حب کی ایک لا ئن با ر سلو نا اسپین دیکھنے کو ملی، وہ قا رئین کی نظر،،، لا ئن تھی،،،،
جنا ب غو ر فر ما ئیں یہ پا کستا نی نہیں لگتا

یہ بھی پڑھیں  مدینے کے متعدد اضلاع میں ٹرک ڈرائیوروں کی ہڑتال ، پانی کی قلت

What is your opinion on this news?