شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / تازہ ترین / بارسلوناریلی بیس تیس لوگ

بارسلوناریلی بیس تیس لوگ

کچھ کر نے پر آئیں ہو ہی جا تا ہے، ایک دم نہیں تو کم از کم نظر ضر ور آ تا کہ، جو کر نا چا ہا رہے ہیں وہ ہو کر رہے گا، اگر، اگر کا وش جا رہی رکھی جا ئے، کچھ ٹاکس بہت مشکل ہو تے جن پر فکس بو ل دیا جا تا ہے کہ اس سے بہتر تو ہو ہی نہیں سکتا، چا ہے با ر با ر کو شش کی جا ئے، بار سلو نا میں کشمیر یوں کے حق میں ریلی، ایک لا ئن،،،
دیا بوجھنے نہ پا ئے، روشنی ہو کر ہی رہنی
با ر سلو نا اسپین میں کشمیر ی اور پا کستا نی کمیو نٹی اور سفا ر خا نے کے تعا ون سے کشمیر یوں پر بھا رت کے ہونے وا لے ظلم کے خلا ف ر یلی نکالی گئی، اس ریلی کی قیا دت آ زاد کشمیر کے وز یر اعظم فا روق حیدر صا حب نے کی، اس ریلی کے انعقا د کی جب خبر سا منے آ ئی تو انہوں دنوں قو نصلیٹ جنر ل با ر سلو نا عمرا ن علی چو ہد ری صا حب سے ملا قا ت ہو ئی، عمران صا حب نے خو د ہی ذکر شر وع کر دیا کہ کشمیر میں بھا رت کے ظلم بڑ ھتے ہی جا رہے ہیں اور ہما را فر ض بنتا ہے کہ یو رپ بھر میں بتا یا جائے کہ کشمیریوں پر بھا رت کے ظلم، وہاں خو اتین کو شہید کیا جا تا،بچو ں کے سا تھ ظلم کیا جا تا، ظلم اتنا کہ یو رپ جیسے مما لک کو معلو م ہو نا چا ہیے کہ یہ انسا نیت کے لیے کتنا فلا حی کام کر تے ہیں تو کشمیر میں وہ بھا رت ظلم کر تا جو پو ری دنیا کے سا منے بھا رت خو د کو مظلو م ثا بت کر تا ہے، عمران صا حب رکے بغیر بو لتے رہے کہ یہاں با ر سلونا میں پہلے بھی کشمیر یوں کے حق میں ریلیا ں اور جلسے منعقد کیے گے مگر افسو س اس با ت کا رہا کہ کم لو گ شر کت کر تے ہیں، گو کہ کم لو گوں کاکسی مقصد کے جمع ہو نا قا بل تعر یف، مگر، عوام کی پا ور کے ذر یعے آ پ دنیا کو کچھ میسج دینا جا تے تو زیا دہ لو گوں کا جمع ہو نا چا ہیے، اور امید کر تے ہیں کہ اس با ر ہر پا کستانی اس ریلی میں شر کت کر ئے گا، ایک دوست سے ذکر ہو ا کہ کشمیر کے حق میں ریلی تو وہاں جا نا ہے، وہ دوست ایک دم بولا، یہاں اس طر ح کی ریلی آ ج سے پہلے ایسے ہی ہو تی آ ئی ہیں کہ جیسے ہم کہتے ہیں بیس تیس لوگ ہی جمع ہو سکے، اور ان میں میڈ یا پر سن صر ف اپنے تعلق والوں کو ہی کو ر یج دیتے ہیں، دوست کی پہلی با ت تو غلط ثا بت ہو ئی کہ بیس تیس لوگ ہی آ تے، ہفتے کی شا م با ر سلو نا میں ہو نے والی ریلی میں کثیر تعد اد میں کمیو نٹی نے شر کت کی، اور جسی گلی اور چو ک سے ریلی گز ری یہاں کی مقا می پولیس نے تحفظ فرا ہم کیا اور پا س کی سٹرکوں کی ٹر یفک کو بھی پو لیس کنڑ ول کر تی نظر آ ئی، شا ہد، شا ہد نہیں، بلکے یقین کے سا تھ کہہ سکتے ہیں کہ با ر سلونا میں بہت کا میا ب یہ ریلی رہی، ر یلی جہاں سے گز رتی گئی یہاں کے مقا می لو گ اسپیشل پو چھ رہے تھے کہ اس ریلی کا مقصد کیا ہے اتنی تعد اد میں لو گ کیوں جمع ہوئے۔ اس ریلی کے بعد سو شل میڈ یا،پر یہ پڑ ھنے کو ملا کہ اس ریلی کو یہاں کی مقا می میڈ یا میں کو ریج ملی، اگر نہیں ملی تو آ گے کیا مستقبل میں مل سکتی، تو عر ض کر تا چلوں،جس ملک کی مقامی پو لیس آ پ کے لیے، آ پ کی ریلی کے لیے راستہ، سٹر کیں کلئیر کر یں،تو یہاں کی پو لیس اپنے اداریوں میں ضر ور رپو رٹ کر یں گے کہ ریلی کا مقصد کیا تھا اور اس میں کیامطا لبا ت رکھے گے ہیں، پا کستا نی میڈ تا میں اس ریلی کو فل کو ریج ملی تو جو ادار ے یو رپ اور با قی دنیا کے ادارے ہما رے میڈ یا پر نظر رکھتے ہیں ان تک اس ریلی میں شا مل ہو نے والے، ریلی کے انعقا د میں شامل ہو نے والے تما م لو گوں کا میسج ریکا رڈ ہو گیا ہے، صر ف یہ نہ دیکھا جا ئے کہ یہاں، یا با قی یو رپ کی میڈ یا نے کو ریج دی کہ نہیں، دوست کا جو جو دوسرا گلہ تھا کہ میڈ یا پر سن صر ف اپنے تعلق والوں پر کیمر ہ فو کس کرتے ہیں تو یہ ہفتے کی ریلی میں کھلے عام نظر آ یا، ہو سکتا میڈ یا پر سن لا شعو ری ایسے کر تے ہو ں، مگر کمیو نٹی میں جب ایسے سوالا ت اٹھا ئے جا ئیں تو ان کو اگنو ر نہیں کیا جا تا سکتا، اس با ت کی کھلے الفا ط میں تعر یف بھی کر تے ہیں میڈ یا پر سن اس گر می میں فل ریلی کی کو ریج کر تے رہے،جس کی بد ولت یہ ریلی پا کستانی میڈ یا پر چلی پھر با قی دنیا کی نظر میں یہ اقدا م نظر آ یا کہ کشمیر یوں پر ظلم ہو رہے تو دنیا میں جہاں بھی مسلمان وہ کشمیریوں کے سا تھ ہیں، اس ریلی ثا قب طا ہر صا حب سے ملا قا ت ہو ئی جو ہر سا ل پا نچ فر وری کو با ر سلونا میں کشمیر یوں کے حق میں اپنی تمام ٹیم کے سا تھ احتجا ج ریکا رڈ کر وا تے ہیں، ان کا کہنا تھا کہ آ ج اتنی بڑی تعدا د میں کمیو نٹی کی شر کت اس با ت کا ثبو ت کے ہم مسلمان اپنے مسلمان پر ہوتے ظلم کے خلا ف ہیں اور اپنی آ واز بلند کر تے ہیں،
کچھ کر نے پر آئیں ہو ہی جا تا ہے، ایک دم نہیں تو کم از کم نظر ضر ور آ تا کہ، جو کر نا چا ہا رہے ہیں وہ ہو کر رہے گا، اگر، اگر کا وش جا رہی رکھی جا ئے، کچھ ٹاکس بہت مشکل ہو تے جن پر فکس بو ل دیا جا تا ہے کہ اس سے بہتر تو ہو ہی نہیں سکتا، چا ہے با ر با ر کو شش کی جا ئے، بار سلو نا میں کشمیر یوں کے حق میں ریلی، ایک لا ئن،،،
دیا بوجھنے نہ پا ئے، روشنی ہو کر ہی رہنی

یہ بھی پڑھیں  امریکی فوج کو افغانستان میں داعش کو نشانہ بنانے کی اجازت مل گئی