پاکستانتازہ ترین

بشیراحمد بلورکاجمرود بازارکا دورہ، تباہ شدہ املاک کا معائنہ کیا

bashir ahmad blorپشاور(بیورو رپورٹ) خیبر پختونخوا کے سینئر وزیر اور عوامی نیشنل پارٹی کے پارلیمانی لیڈر بشیر احمد بلور نے منگل کے روز صوبائی و پولیٹیکل انتظامیہ کے حکام کے ہمراہ جمرود بازار کا دورہ کرکے ریموٹ کار بم دھماکے سے تباہ شدہ املاک کا معائنہ کیا قبائلی ملکان ملک اسماعیل خان، ملک اسرار خان اور ملک صلاح الدین کی قیادت میں قبائلی جرگہ نے تمام خطرات کے باوجود متاثرہ جگہ کا دورہ اور متاثرہ خاندانوں سے ملاقات پر سینئر وزیر کا شکریہ ادا کیا بشیر بلور نے دہشت گردی کے اس سفاکانہ واقعہ میں جاں بحق 20شہداء کے ورثاء کیلئے صوبائی حکومت کی جانب سے فی کس 25ہزار روپے اورپشاور کے ہسپتالوں میں زیرعلاج زخمیوں کے مفت علاج کا اعلان کیا اور یقین دلایا کہ وفاق کے علاوہ صوبائی حکومت بھی متاثرین کی ہر ممکن مدد سے گریز نہیں کرے گی معاوضے کی رقم قیمتی انسانی جانوں کا نعم البدل نہیں ہو سکتی مگر یہ صوبائی حکومت کا قبائی باشندوں سے اظہار یکجہتی اور انکے غم میں برابر کا شریک ہونے کی علامت ہے دھماکہ کی جگہ کے معائنہ، شہداء کیلئے فاتحہ خوانی اور کوکی خیل قبائلی مشران کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے دہشت گردی کے اس سفاکانہ واقعے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ گیارہ مہینے قبل بھی اسی بازار میں لاری اڈے اور پٹرول پمپ کے قریب دھماکہ کیا گیا تھا اور وہ شہداء و قبائلی عوام سے اظہار یکجہتی کیلئے یہاں آئے تھے پچھلے واقعہ کی طرح حالیہ دھماکے میں شہید خواتین اور معصوم بچوں نے کسی کا کیا بگاڑا تھا مگر دہشت گرد انہیں مذہب کے مقدس لبادے میں بیدردی سے قتل کرکے اپنے شیطانی عزائم کی تکمیل اور مکروہ خواہشات کی تسکین چاہتے ہیں پر ہجوم مقامات پر دھماکے کرکے، غریب شہریوں کو بڑی بیدردی سے مار کر اور انکے خاندانوں کو بے آسرا کرکے دہشت گردوں کا بھیانک چہرہ اور ملک و قوم دشمن عزائم کھل کر سامنے آگئے ہیں جو اسلام کے نام پر اپنے ہی مسلمان بھائی بہنوں کا خون بہا کر اپنے ہی مذہبی احکامات کی صریح خلاف ورزی کر رہے ہیں انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کی شکل میں پاکستانی قوم تیسری عالمگیر جنگ لڑ رہی ہے جس میں فتح ہماری ہو گی ہماری قربانیاں ضرور رنگ لائیں گی عوام کی بھرپور حمایت اور پاک فوج کے تعاون سے دہشت گردوں کا انجام شروع ہو چکا ہے خود کش حملہ آوروں کی وارادت سے پہلے ہی زندہ گرفتاری اور باچاخان انٹرنیشنل ائیرپورٹ سمیت قومی تنصیبات پر قبضے کی کوششوں میں مسلسل ناکامی ان کی شکست خوردگی کا منہ بولتا ثبوت ہے اسطرح کی انسانیت کش اور بزدلانہ کاروائیوں سے دہشت گرد اپنے عبرتناک انجام سے ہر گز بچ نہیں سکتے انہوں نے کہا کہ ہزاروں بے گناہ شہریوں کو خودکش حملوں کا نشانہ بنا کر، انکے غریب خاندانوں کا معاشی قتل کرکے اور ملک و قوم کی سالمیت کو داؤ پر لگانے سے یہ بھی ثابت ہو گیا ہے کہ دہشت گردی کے اس شیطانی کھیل میں ہمارے لوگ صرف آلہ کار ہیں ورنہ اسلام میں انسان کی جان لینا قطعی حرام ہے انہوں نے یقین ظاہر کیا کہ تخریب کاری کے تمام واقعات پر جلد قابو پا لیا جائے گا تاہم انہوں نے کہا کہ شہیدوں کا خون ضرور رنگ لائے گا اور دہشت گرد شہداء کے یتیم بچوں اور بیواؤں کی بد دعاؤں سے عنقریب خدائی قہر کی زد میں آئیں گے انہوں نے کہا کہ دہشت گرد اپنا عبرت ناک انجام بھی پیش نظر رکھیں انہوں نے یقین دلایا کہ موجودہ جمہوری حکومت پاک فوج، پولیس اور قبائل سمیت عوام کے تعاون سے اس طرح کے واقعات پر مکمل قابو پا لے گی انہوں نے کہا کہ اے این پی ریاستی یا غیر ریاستی ہر طرح کی دہشت گردی کی شدید مذمت کرتی ہے باچا خان کے فلسفہ عدم تشدد اور برداشت و بھائی چارے سے ہی قومی اور بین الاقوامی سطح پر امن و سلامتی کو فروغ مل سکتا ہے مگر ہمیں شکوہ غیروں سے زیادہ اپنوں سے ہے جو دشمن قوتوں کے آلہ کار بن کر اپنے ہی بہن بھائیوں کا بے دریغ خون بہانے سے نہیں کتراتے انہوں نے کہا کہ تاریخ شاہد ہے کہ دہشت گرد کافی انسانی و مالی نقصان اور تباہی پھیلانے میں تو کامیاب ہو جاتے ہیں مگر شکست بالآخر ان کا مقدر ہوتی ہے اور ایسا پاکستان میں بھی ہو گا اور شکست و ناکامی دشمنوں کا مقدر ہو گی دہشت گردی کے خلاف قوم، پاک فوج اورپولیس سمیت تمام سیکورٹی جوانوں کا مورال بلند ہے اور وہ انسانیت کے دشمنوں کو ذلت آمیز شکست دے کر ہی دم لیں گے بشیر بلور نے کہا کہ دہشت گردی کی تازہ لہر سے نمٹنے کیلئے وفاقی اور صوبائی حکومتیں موثر اور مربوط اقدامات کررہی ہیں انہوں نے کہا کہ اس طرح کے گھناؤنے اقدام میں ملوث عناصر کسی طور مسلمان یا انسان کہلانے کے مستحق نہیں بلکہ یہ درحقیت انسانیت کے درجے سے گرے ہوئے حیوان ہیں جن کا اسلام جیسے آفاقی اور امن کے علمبردار مذہب سے کوئی تعلق نہیں ہو سکتا اور نہ ہی وہ پیغمبر اسلام ﷺ کی شفاعت کے مستحق ہوں گے ایسے انسانیت دشمن لوگ دنیا اور آخرت میں ذلیل و خوار ہوں گے جو مسلمان بچوں کو دوسرے انسان کا خون بہانے کیلئے خودکش دھماکوں اور دہشت گردی پر تیار کرتے ہیں انہوں نے اس سانحہ میں شہید ہونے والے قبائلی باشندوں کے درجات کی بلندی اور زخمیوں کی جلد صحتیابی کی دعا کی ۔

یہ بھی پڑھیں  ۔۔۔کچھ علاج اس کابھی

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker