تازہ ترینکالمملک ساجد اعوان

بے بس عوام ۔ظالم حکمران

sajid awanکون ہے جو اس وقت پریشان نہیں ہے پریشانی تو صرف اور صرف غریب عوام کے لئے ہے مسائل اتنے بڑ ھ چکے ہیں کہ قدم قدم پر مسائل ہیں مگر کوئی انکو حل کرنے کی کوشش نہیں کرتا ہر کام کوشش سے ہوتاہے مگر یہ کون کرے کے بیچاری عوام کے مسائل حل ہوجائیں یہ سارے مسائل ان حکمرانوں کے پیدا کردہ ہیں اب تو غریب عوام کی حالت اس قدر خراب ہوچکی ہے کہ سمجھ نہیں آتا کہ کہاں جائیں ہمارے تمام اداروں میں کرپشن اس قدر ہوچکی ہے کہ جس کا اندازہ لگانا مشکل ہے جس ملک میں سپریم کورٹ کے حکم کو پاؤں تلے رونددیاجائے اور سزایافتہ لوگ عوام کے لیڈر ہوں تو مسائل حل کیسے ہوں گے طاہر القادری صاحب نے چار دن لانگ مارچ کے نام پر جو حکمرانوں نے سے معاہدہ کیا وہ کیا ہے میں ان تمام لوگوں سے پوچھتاہوں جو قادری صاحب کے پیروکار ہیں کہ ان کے دھرنے سے ان کو کیا ملا کیا انکے گھروں میں گیس آنے لگ گئی یاپھر قادری صاحب نے گیس کے سلنڈر مہیا کردیئے یا پھر لوڈشیڈنگ میں کمی آئی کہ نہیں اگر ذرا سوچو تو مسائل تو اسی جگہ پر ہیں صرف اور صرف عوام کو بیوقوف بنایاجاتاہے مگر عوام کو پتہ نہیں کہ کب سمجھ آئے گی یہ عوام قادری صاحب کے ساتھ اسمبلیاں تحلیل کروانے گئی مگر کچھ کر نہ پائی جنہوں نے انقلاب لاناہوتاہے وہ معاہدے نہیں کرتے ظا لم حکمرانوں کے گھروں کا گھراؤ کرتے ہیں جیسے کہ مصر میں صدر کے ساتھ ہوا ایسے انقلاب نہیں آتے کہ جاؤ کسی اور راستے سے اورآؤ کسی اور راستے سے جب تک ہمارے حکمران ایک ساتھ نہیں ہوتے اور نیک نیتی کے ساتھ کام نہیں کرتے اور اپنے خزانے بھرنے کی بجائے عوام پر خرچ نہیں کرتے تو کچھ ممکن ہے ورنہ کچھ نظر نہیں آتا زرداری صاحب اور وزیراعظم صاحب اور وزیراعلی صاحب سے درخواست ہے کہ اس عوام کا بھی خیال کرو جن کے گھروں میں گیس نہیں آرہی اور فیکٹریاں گیس نہ ہونے کی وجہ سے بند پڑی ہیں انکے بچے دربدر کی ٹھوکریں کھارہے ہیں خدارا اس قوم پر رحم کرواور اپنے آپکو مت دیکھو اللہ کے عذاب سے ڈرو اس عوام نے آپ کو اس قابل بنایا اور آج یہ عوام بھوکی مررہی ہے عوام ذلیل ہوکر رہ گئی ہے عوام کوروٹی نصیب نہیں ہوتی اس عوام کا خیال کرو اور کرپشن اور چوربازاری کے خلاف کارروائی کرو ورنہ اس عوام کی بددعا ہی کافی ہوگی ۔حال ہی میں جو واقع فیصل آباد میں ہوا اسکا منہ بو لتا ثبوت ہے۔ فیصل آباد میں ایک بے روزگار مزدور نے غربت سے تنگ آ کر اپنے پانچ بچوں اور بیوی کو قتل کرنے کے بعد خودکشی کر لی ہے۔ محنت کش محمد قاسم کی تین بیٹیاں دو بیٹے اور ایک بیوی شامل ہیں، چار بچوں کی عمریں ڈیڑھ سال سے سات سال کے درمیان بتائی جاتی ہیں۔ محنت کش نے اپنے بڑے بیٹے اٹھارہ سالہ آصف کوفون کر کے گھر بلایا تھا اورتمام اہلخانہ کو اپنی بارہ بور کی دو نالی بندوق سے قتل کرنے کے بعد اپنی کنپٹی پر گولی مار کو خودکشی کر لی۔محمد قاسم ایک سفید پوش انسان تھا اور غربت سے ہونے والی ذلت برداشت نہیں کر سکا۔د پولیس کے مطابق خاندان کا سربراہ محمد قاسم کوشش کے باوجود کوئی دوسری ملازمت یا متبادل روزگار حاصل نہیں کر سکا تھا۔پاکستان کے صنعتی شہر فیصل آباد کی مزدور تنظیمیوں کا کہنا ہے کہ گذشتہ چند سالوں کے دوران صرف فیصل آباد میں بیروزگار ہونیو الے افراد کی تعداد لاکھوں میں ہے۔واضح رہے کہ فیصل آباد میں بجلی اور گیس کی طویل لوڈشیڈنگ کے باعث مزدوروں نے متعدد بار احتجاجی مظاہرے کیے ہیں۔اقتصادی ماہرین کا کہنا ہے کہ پاکستان میں جاری معاشی بحران کی وجہ سے خط غربت سے نیچے زندگی بسر کرنے والے افراد کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے۔مبصرین کے مطابق غربت اور مالی پریشانی کی وجہ سے خودکشی کرنے والے افراد کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے۔اگر یہ ہی حالات رہے تو شاید ہر بندہ خود کشی کرنے پر مجبور ہو جائے

یہ بھی پڑھیں  اوکاڑہ:ڈکیتی اور چوری کی مختلف وارداتیں

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker