تازہ ترینکالمملک ساجد اعوان

بے روزگاری

انسان جب دنیامیں آتا ہے تو کئی خواہشات اسکے اندر جنم لیتی ہیںمگرضروری نہیںکہ ہر خواہش پوری ہوجائے سب سے پہلے ماں کی گود پھر پرائمری سکول پھر مڈل سکول پھر ہائی سکول پھر کالج اور پھر یونیورسٹی کے بعد نوکری کی تلاش شروع ہوجاتی ہے مگر جو حالات اس وقت جارہے ہیں نوکری تو ہے ہی نہیں آج میں آفس میں بیٹھا تھا تو ایک نوجوان لڑکا تعلیم ایم اے سیاسیات میرے پاس آیا تو کہنے لگا آپ کے پاس کوئی نوکری کی جگہ ہے میں نے کہانہیں بھائی ہمارا تو چھوٹا سا آفس ہے جس میں آٹھ دس لوگ کام کرتے ہیں اور کوئی ایسی جگہ نہیں جس پر آپ کو کام دیاجائے بڑاہی مایوس ہوا کہنے لگا کیا فائدہ پڑھنے کا نوکری نہیں ملتی گھر کا نظام نہیں چلتا کیسا ہے یہ پاکستان یہ کہہ کر وہ لڑکا چلا گیا میں اتنا پریشان ہوا کہ ایک پڑھا لکھا پاکستان اور خصوصاً پنجاب میں ایک خوبصورت نوجوان ڈگری اٹھائے دھکے کھا رہا ہے نہ جانے اس کے والدین نے کتنی محنت سے اسے سکول اور کالج کے خرچے اٹھائیں ہوں گے اور کتنے ارمانوں سے اس نے اپنی پڑھائی مکمل کی ہوگی۔
﴿ اب کس کو کیا ملا یہ مقدر کی بات ہے۔﴾
ہمارے ملک میں ایک نوجوان نہیں بلکہ ہر دوسرا ٓدمی بے روزگاری کے تلے پسی زندگی گزار رہاہے کوئی ورکشاپ میں کام کرتا ہے تو کوئی ویٹرہے یا پھر کسی نے نان چنے کی ریڑھی لگارکھی ہے ہماری بدقسمتی یہ ہے کہ کسی نے بھی نوجوان نسل کی طرف توجہ نہیں دی ہمارے حکمرانوں نے اپنی زندگی عیاشی سے گزاری ہیں اور گزار رہے ہیں کوئی ایسا نظام نہیں ہے جس سے نوجوان فائدہ اٹھاسکیں۔مہنگائی اتنی ہوگئی ہے کہ غریب آدمی کا گزارہ مشکل ہوگیاہے حکومت وقت کو اس پر خصوصی توجہ دینا ہوگی بجلی آتی ہی نہیں اور بجلی کے بل اتنے زیادہ ہیں کہ ایک دفعہ بل دیکھ کر جان نکل جاتی ہے موجودہ بلوں کی جو پوزیشن ہے وہ اس طرح ہے ۔
100 x 5.790
200 x 8.110
12 x 12.330
اس طرح کے جو بل ہیں کیا جس کے پاس نوکری نہیں وہ ادا کرسکے گا کبھی نہیں حکومت کو چاہیئے کہ پہلے نوکریاں دے پھر مہنگائی کرے تاکہ عوام کے پاس پیسہ ہو اور وہ اس طرح کے غنڈہ ٹیکس کو آسانی سے اداکرسکے۔
میری اپنی حکومت سے درخواست ہے کہ خدارا غریبوں پر مہنگائی کے پہاڑ مت گرائو ورنہ اللہ دیکھ رہاہے حکمرانوں کو چاہیئے کہ عوام کا خیال رکھیں عوام کو کوئی تکلیف تو نہیں پر حکمران تکلیف کم کرنے کی بجائے بڑھاتے ہیں اللہ پاک سے دعا ہے کہ ہمارے لیڈروں کے دلوں میں رحم آئے اور نوکریاں ہوں۔مہنگائی کم ہو اور ہر طرف خوشی ہی خوشی ہو۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker