علاقائی

بھائی پھیرو: 22مارچ کو پاکستان سمیت دنیا بھرمیں پانی کا عالمی دن منایا جارہا ہے،حاجی رمضان

بھائی پھیرو﴿نامہ نگار﴾کسان بورڈ پاکستان کے سیکرٹری اطلاعات حاجی محمد رمضان نے کہا ہے کہ 22مارچ کو پاکستان سمیت دنیا بھر میں بیسواں پانی کا عالمی دن منایا جارہا ہے ۔ ہر سال دنیابھر میں پانی کی اہمیت ، پانی کے وسائل کی ترقی اور آبی ذخائر کی افادیت بارے دنیا بھر کے عوام کا شعور بیدار کرنے کیلئے لٹریچر تقسیم کرنے ، دستاویزی فلموں ، گول میز کانفرنسیز اور سیمینار کا انعقاد عمل میں لایاجاتا ہے۔ اسکے باوجود وہ مقاصد حاصل نہیں ہو پائے ۔ آئے دن صاف پانی کی کمی کا مسئلہ دنیا کا سب سے بڑا چیلنج بن کر سامنے آ رہا ہے ۔ آلودہ پانی پینے سے سالانہ 26لاکھ افراد ہلاک ہورہے ہیں۔ دنیا کی نصف آبادی کو پینے کے صاف پانی کا مسئلہ ہے ۔ پاکستان کو انتہائی تشویش ناک صورت حال کا سامنا ہے ۔ 60 فیصد اموات واسطہ یابالواسطہ پانی کی آلودگی کے باعث ہورہی ہیں۔ سالانہ 40 ہزار بچے کثافت زدہ اور آلودہ پانی سے ہلاک ہوجاتے ہیں۔ صوبائی دارالحکومت لاہور کا 37.2فیصد پانی پینے کے قابل نہیں۔ 80لاکھ آبادی میں سے 29لاکھ 80ہزار افراد انسانی اور حیوانی فضلہ ملا پانی پینے پر مجبور ہیں۔ بعض علاقوں میںآلودہ پانی شرح 64.3 فیصد تک ہے۔ دریا بہتے تھے تو یہاں صاف و شفاف پانی میسر تھا ۔ دریائے راوی اور ستلج کی بندش سے لاہور، قصور ، پاکپتن ، وہاڑی ،رحیم یار خان ،بہاولپور اور راجن پور کے علاقوں کا پانی آلودہ اور زہریلا ہوچکا ہے ۔ سندھ طاس معاہدہ کی بھارتی خلاف ورزی اور آبی جارحیت سے پاکستانی دریاؤں میں پانی کی 80فیصد کمی واقع ہوئی۔ جس سے ملک میں توانائی کی شدید قلت کا سامنا ہے۔ پاکستان کی صنعت و زراعت تباہی کے دہانے پر ہے ۔ ملک میں بجلی کی بندش کا دورانیہ 20 گھنٹے تک جاپہنچا ہے۔ ملک بڑے کربلا کی طرف گامزن ہے ۔ آبی جارحیت کے باعث عالمی جنگ چھڑنے کا خدشہ ہے ۔ جس کا آغاز جنوبی ایشائ سے ہوگا۔ چونکہ دنیا کی سب سے بڑی آبی جارحیت اسی خطہ سے ہورہی ہے ۔ دنیا میں امن کے قیام کی ذمہ داری اقوام متحدہ پر عائد ہوتی ہے ۔ لہٰذا یہ ادارہ اپناکردار ادا کرے۔

یہ بھی پڑھیں  پھولنگر:شہباز شریف کی قیادت میں مسلم لیگ ن پنجاب میں دوبارہ حکومت بنائے گی، رانا حیات خان

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker