تازہ ترینعلاقائی

بھائی پھیرو: پاکستان کا دوسرا بڑا تاریخی گوردوارہ نشئیوںکامسکن بن گیا

بھائی پھیرو﴿نامہ نگار﴾بھائی پھیرو۔ہزاروں ایکڑ اراضی کا مالک پاکستان کا دوسرا بڑا تاریخی گوردوارہ لٹے ہوئے مسافر کی طرح اپنی بے بسی کا رونا روتے ،روتے آخری سانسیں گننے پر مجبور، محکمہ اوقاف کی بے حسی کی وجہ سے نشئیوں نے گوردوارہ کو ہی اپنا مسکن بنالیا، گوردوارہ کی نکاسی آب نہ ہونے کی وجہ سے سالہہ سال سے ہونے والی بارشوں نے اس کی بنیادیں ہلا کر رکھ دیں،گوردوارہ کی قیمتی املاک کو بیچ،بیچ کر کئی افسران اور با اثر افراد ککھ پتی سے کروڑ پتی بن گئے، تفصیلات کے مطابق۔بھائی پھیروشہر کے وسط میں واقع پاکستان کا دوسرا بڑا تاریخی گوردوار ہ ہزاروں ایکڑ اراضی کا مالک ہونے کے باوجود لٹے ہوئے مسافر کی طرح اپنی بے بسی کا رونا روتے ،روتے کسی بھی وقت گر کر بہت بڑے حادثے کا باعث بن سکتا ہے کیونکہ اس میں نکاسی آب کا موئثر بندو بست نہ ہونے کی وجہ سے اور سالہہ سال سے ہونے والی بارشوں نے اس کی بنیادیں ہلا کر رکھ دیں ہیں اور رہی سہی کسر نشیئوں نے نکال دی ہے جنہوں نے نہ صرف اس گوردوارے کے کھڑکیاں ،دروازے اکھاڑ کر بیچ ڈالے بلکہ اسے اپنا مسکن بھی بنا لیاہے باوثوق ذرائع کا کہنا ہے کہ ایک وقت وہ تھا جب دور دراز سے سکھ یاتری یہاں اس گوردوارے کی یاترہ کے لیے آتے تھے اور ہر وقت اُن کا یہاں تانتا بندھا رہتا تھا اور گوردوارے کی خوبصورتی کو دیکھ کر اس پر رشک کرتے تھے مگر اب یہ وقت ہے کہ یہی تاریخی گوردوارہ محکمہ اوقاف کی عدم توجہی کی وجہ سے کھنڈر کی شکل اختیار کر گیا ہے جبکہ اس گوردوارے کے لنگر خانے،اشنان کرنے والے پختہ تالاب اور ہزاروں ایکڑ اراضی پر قبضہ گروپوں نے قبضہ جما رکھا ہے یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ محکمہ اوقاف کی طرف سے یہاں اس گوردوارے میں ایک چوکیدار تعینات کیا گیا ہے مگر اُس نے کبھی گوردوارے کی چوکیداری کرنی تو دور کی بات اس کی شکل تک نہ دیکھی ہے جبکہ پاکستان میں گوردواروں کی دیکھ بھال کرنے والی پربندھک کمیٹی نے بھی کبھی اس گوردوارے کی حالت زار کی طرف توجہ نہیں دی حالانکہ اس گوردوارے کے بارے میں روائت ہے کہ گوردوارہ ننکانہ صاحب کے بعد یہ گوردوارہ سکھ مذہب میں مقدس ترین شمار کیا جاتا ہے حال ہی میں پاکستان سے چند یاتری اس گوردوارہ کی یاترہ کرنے کے لیے یہاں بھائی پھیرو آئے اور اس گوردوارہ کی حالت زار دیکھ کرپھوٹ ،پھوٹ کر روتے رہے ایک یاتری نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اس گوردوارہ کی خراب ترین حالت کو سدہارنے کے لیے وزیر اعظم پاکستان کو خود توجہ دینی چاہیے اور چیف جسٹس سپریم کورٹ اوقاف کی زمینوں میں اربوں روپے کی لوٹ مار کا ازخود نوٹس لے کر لٹیروں سے اس دولت کو واپس لے کر قومی خزانہ میں جمع کروانا چاہیے

یہ بھی پڑھیں  کراچی میں مزید دھماکے ہو سکتے ہیں، رحمان ملک

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker