تازہ ترینعلاقائی

ایس ڈی او سب ڈویژن لیسکوواپڈا بھائی پھیرو کی بدتمیزیاں انتہا کو پہنچ گئیں،

بھائی پھیرو(نامہ نگار) ایس ڈی او سب ڈویژن لیسکوواپڈا بھائی پھیرو کی بدتمیزیاں انتہا کو پہنچ گئیں، اوور بلنگ کے ستائے لوگوں سے ہتک آمیز رویہ اپنانا معمول بن گیا،رشوت دینے والوں کی چائے بسکٹ سے خاطر تواضع ، غریب عوام ایس ڈی او اور ایکسئین دفاتر کے درمیان فٹ بال بن گئے ،شہریوں کا لیسکو چیف واپڈا سے ایس ڈی او تنویر خاں کو نوکری سے فوری طور پر بر خاست کرنے کا مطالبہ۔
تفصیلات کے مطابق۔ سب ڈویژن بھائی پھیرو واپڈ میں محکمہ واپڈا کے ملازمین کی مجرمانہ غفلت کی وجہ سے جہاں پرہزاروں صارفین کو اوور بلنگ کی وجہ سے سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے وہیں پر ایس ڈی او تنویر خاں کا بھی غضب جھیلنا پڑ رہا ہے کیونکہ ہر ماہ صارفین کو دو سو سے لے کر ستر ہزار تک زائد یونٹس ڈال دیے جاتے ہیں اوربل کی عدم ادائیگی پر میٹر کاٹ کر صارفین کی مشکلات میں مزید اضافہ کر دیا جاتا ہے جبکہ ایس ڈی او موصوف نے بھائی پھیرو و گردونواح کے غریب صارفین کے خلاف بجلی چوری کے مقدمات درج کروا نااور با اثر افراد کے پکڑے جانے پر معذرت کرنے کے بعدچائے بسکٹ سے تواضع کرنا من پسند مشغلہ بنا رکھا ہے بھائی پھیرو کے نواحی گاؤں کے ایک غریب صارف نے صحافیوں کو بتایا کہ مجھ سے ایس ڈی او موصوف نے رشوت مانگی اور رشوت نہ دینے پر اُس نے مجھے سترہزار زائد یونٹس ڈال دیے اور جب میں ایکسئین آفس گیا تو ایکسئین آفس کے عملہ نے رشوت کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ تم نے ایس ڈی او کو چائے پانی دے دینا تھا آخر اُس کے بھی چھوٹے ،چھوٹے بچے ہیں تنخواہوں سے گزاراہ ہوتا ہے تم سمجھدار ہو جاؤ اور ایس ڈی او سے مل لو تمہارا بل اُسی کے کہنے پر ہی ٹھیک ہوگا اسی طرح اور کئی شہریوں نے ایس ڈی موصوف پر الزام لگاتے ہوئے کہا کہ جب سے یہ ایس ڈی او یہاں پر تعینات ہوا ہے اس نے اندھیر مچارکھا ہے اور رشوت نہ دینے پر سینکڑوں زائد یونٹ ڈال کر بل بھجوا دیتا جو کہ ہماری پہنچ سے دور ہوتا ہے اور بل ادا نہ کرنے کی صورت میں میٹر کاٹ لیے جاتے ہیں آخر میں چوہدری نذیر حسین دھماکہ سمیت شہریوں کی بہت بڑی تعداد نے لیسکو چیف واپڈا سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھائی پھیرو سب ڈویژن کے رشوت خور ایس ڈی اوکے چنگل سے ہمیں نجات دلائی جائے تاکہ ہم جیسے سینکڑوں صارفین اووربلنگ سے پریشان ہو کر واپڈا دفاتر کے درمیان فٹ بال بننے سے بچ سکیں ۔یہاں یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ ایکسیئن آفس میں بل صحیح کر نے والا عملہ بھی صارفین سے دل کھول کر بھاری رشوت وصول کرنے کے بعد بل صحیح کرتا ہے مگر اگلے ماہ پھر وہی گھن چکر شروع ہو جاتاہے

یہ بھی پڑھیں  ایمانداری کامیابی ہے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker