علاقائی

بھائی پھیرو: پانی کی صنعت وتجارت اور مارکیٹنگ کا نظام خطر ناک ڈگر پر چل نکلا ہے۔ ۔حاجی محمد رمضان

بھائی پھیرو(نامہ نگار)سندھ طاس واٹر کونسل پاکستان کے چیف کوآڈینیٹر ایم یوسف سرور اور سیکرٹری اطلاعات کسان بورڈ پاکستان حاجی محمد رمضان نے اپنے مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ پانی کی صنعت وتجارت اور مارکیٹنگ کا نظام خطر ناک ڈگر پر چل نکلا ہے ملٹی نیشنل کمپنیاں اور ادارے واٹر مارکیٹنگ کو وسعت دینے کے لئے انسانیت سوز عوامل پر اتر آئی ہیں ان کا یہ ٹارگٹ ہے کہ 2016ءتک پانی صرف بوتل میںہی دستیاب ہو ۔ اس ضمن میں نیشنل اور انٹرنیشنل غیر ملکی کمپنیاں اور ادارے گورنمنٹ سے مل کر عوام کی مجبوری بننا جا رہی ہیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ان رہنماﺅں نے کہا کہ اس طرح پاکستان ریلوے نیٹ ورک پر بوتل اور منرل واٹر کی فروخت کیلئے حقوق جاری کر رہا ہے جس کے تحت منرل واٹر کی فروخت کیلئے ٹھیکہ جات دیے جائیں گے ریلوے کے اس عمل سے مجبور غریب عوام کو انتہائی مہنگے داموں پینے کے لئے پانی خریدنا پڑے گا ۔ 80% غریب افراد اور 15% درمیانے درجے کے افراد ریلوے پر سفر کرتے ہیں۔ غریب اور مجبور مسافروں کی پیاس نہ چھینی جائے ۔ بلکہ ریلوے انتظامیہ اسٹیشنوں پر فلٹریشن پلانٹ اور پانی کی سبیلیں لگائیں تاکہ صاف اور شفاف پانی کی مفت فراہمی کو یقینی بنایا جائے ۔انہوں نے کہا کہ اگر وزارت ریلوے نے استدعا کو تسلیم نہ کیا اور اپنے فیصلے پر نظر ثانی نہ کی تو عدالت کا دروازہ کھٹکھٹایا جا ئے گا۔

یہ بھی پڑھیں  چونیاں :صبح سویرے مقامی فرنچائزڈآفس میں چھ لاکھ کی ڈکیتی

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker