شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / پاکستان / توہین عدالت کامرتکب شخص پارٹی کی صدارت کیسے کرسکتا ہے: چیف جسٹس

توہین عدالت کامرتکب شخص پارٹی کی صدارت کیسے کرسکتا ہے: چیف جسٹس

اسلام آباد(بیورو رپورٹ) چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے دوران سماعت استفسار کیا کہ کیا ڈرگ اسمگلر، چور، ڈاکو پارٹی کا سربراہ ہوسکتا ہے. تفصیلات کے مطابق آج سپریم کورٹ میں‌ نااہل شخص کوپارٹی سربراہ بنانےسے متعلق کیس کی سماعت میں چیف جسٹس نے سوال کیا کہ جو آدمی عمرقید کاٹ رہا ہو، اس کا پارٹی سربراہ بننا کیسے ممکن ہے. عدالت نے سابق وزیراعظم کے وکیل سلمان اکرم راجا سے سوال کیا کہ ڈرگ اسمگلر، چور، ڈاکو پارٹی کا سربراہ ہوسکتا ہے. اس موقع پر وزیراعظم کے وکیل نے کہا کہ نیلسن منڈیلا 27 سال جیل میں رہے اورپارٹی سربراہ تھے. اس پر چیف جسٹس نےکہا وہ سیاسی قیدی تھے، ہم جرائم کی بات کر رہے ہیں. سلمان اکرم راجا کا کہنا تھا کہ فی الحال قانون پارٹی سربراہ بننے پرپابندی نہیں لگاتا ،اس حوالے سےآئین خاموش ہے، چیف جسٹس نےکہا کہ  آپ کے موکل پرآرٹیکل 6 کا اطلاق نہیں چاہتے، کیا آپ چاہتے ہیں کہ ہم آرٹیکل 6 لگا دیںَ چیف جسٹس نے کہا کہ توہین عدالت کامرتکب شخص پارٹی کی صدارت کیسے کرسکتا ہے. دوران سماعت جسٹس اعجازالاحسن نے کہا کہ پارلیمنٹ کا قانون بنانے کااختیارتسلیم کرتے ہیں، لیکن قانون معقول ہونا چاہیے، ایک نااہل شخص سینیٹ کے ٹکٹ کیسے بانٹ سکتاہے؟ اس پر سلمان اکرم راجا نے کہا کہ قانون اس پرکوئی پابندی نہیں لگاتا.

یہ بھی پڑھیں  تیسری رینکنگ اسنوکر چیمپیئن شپ اسجد اقبال نے جیت لی