تازہ ترینعلاقائی

چنیوٹ: ناجائز منافع خوری کو کنٹرول کرنے کے بلند و بانگ دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے

چنیوٹ(بیورو رپورٹ)ناجائز منافع خوری کو کنٹرول کرنے کے بلند و بانگ دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے ۔ڈی سی او چنیوٹ سمیت دیگر تمام متعلقہ افسران نے خود ساختہ مہنگائی کے جن کو بوتل میں بند کرنے میں ناکام ہو کر رہ گئے ۔متعلقہ ارباب اختیار کی مبینہ غفلت کی وجہ سے ضلع چنیوٹ اور اس کے گردو نواح میں خود ساختہ مہنگائی کے طوفان نے عوام کی زندگیاں اجیرن بنا کر رکھ دی ہیں اور دکاندار اپنی مرضی کی قیمتوں پر اشیاء خوردونوش فروخت کرنے میں لگے ہوئے ہیں گزشتہ روز کئے جانے والے سروے میں یہ بات کھل کر سامنے آئی ہے کہ ضلع چنیوٹ میں سرکاری نرخنامہ پر اشیائے خوردونوش کی قیمتوں پر فروخت یا خرید کا اطلاق ممکن نہ ہو پایا ہے ۔دلچسپ امر تو یہ ہے کہ نئے اسسٹنٹ کمشنر چنیوٹ کو تعینات ہوئے ایک ماہ سے بھی زیادہ کا عرصہ ہو چکا ہے مگر انہو ں نے پچھلے ایک ماہ سے اشیائے خوردونوش کی قیمتوں سمیت دیگر اہم معاملات کے سلسلہ میں کوئی کارکردگی نہ دیکھائی ہے جبکہ دوسری جانب دکانداروں نے شہریوں کو دونوں ہاتھوں سے لوٹنا شروع کر رکھا ہے شہریوں کا کہنا ہے کہ تمام اشیاء کی قیمتیں من مانے ریٹس پر فروخت کی جا رہی ہیں اور اگر پوچھا جائے تو بد تمیزی کی انتہا ء کی جاتی ہے شہریوں کا یہ بھی کہنا تھا کہ کوئی بھی چیز ایسی نہیں ہے جو اصل قیمت پر فروخت کی جا رہی ہو شہریوں نے الزام لگایا کہ جو لوگ جو افسران ڈی سی او چنیوٹ کی میٹنگ میں بیٹھ کر تصاویر بنواتے ہیں وہ عام روز مرہ زندگی میں بازاروں میں وزٹ کرکے قیمتوں کی مانیٹرنگ کیوں نہیں کرتے کیا انہیں بند کمروں تک کی تنخواہوں اور بند کمروں میں میٹنگ تک کے فرائض سرانجام دینے کے لئے پنجاب حکومت نے رکھا ہوا ہے شہریوں کا کہنا تھا کہ دکاندار غنڈہ گردی بد تمیزی کے ساتھ ساتھ غیر انسانی سلوک کرنے کی انتہاء کو پہنچ چکے ہیں مگر کوئی بھی متعلقہ افسرٹس سے مس نہ ہوا ہے شہریوں نے ڈی سی او چنیوٹ سے مطالبہ کیا ہے کہ فوری طور پر خصوصی ٹیمیں تشکیل دے کر ناجائز منافع خوروں کت خلاف کریک ڈاؤن کیا جائے تاکہ ظلم کا سلسلہ اختتام پذیر ہو سکے

یہ بھی پڑھیں  نو منتخب بھارتی صدر پرناب مکھرجی نے حلف اٹھا لیا

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker