تازہ ترینعلاقائی

ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال چنیوٹ کا ادویات اسٹور روم محکمہ صحت کے افسران کی رہائش گاہ میں تبدیل

چنیوٹ(بیورو رپورٹ)ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال چنیوٹ کا ادویات اسٹور روم محکمہ صحت کے افسران کی رہائش گاہ میں تبدیل ادویات اور مریضوں کا اللہ حافظ چیف ایگزیکٹو آفسیرہیلتھ چنیوٹ نے مبینہ طور پر ارباب اختیار کے احکامات ماننے سے انکا رکر دیا۔ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال چنیوٹ کو ملنے والی کروڑوں روپے کی ادویات سٹور روم اور مناسب جگہ نہ ہونے کی وجہ سے تباہ ہونے لگیں۔تفصیلات کے مطابق پنجاب حکومت کی جانب سے ڈی ایچ کیو چنیوٹ کو ملنے والی کروڑوں روپے مالیت کی ادویات جو کہ چنیوٹ کے مجبور بے بس لاچار مریضوں کو طبی سہولیات کی فراہمی کے طور پر دی گئی ہسپتال میں مناسب جگہ اور سٹور روم نہ ہونے کی وجہ سے وہ ادویات ڈی ایچ کیو ہسپتال کے مختلف مقامات پرمجبوری کے تحت رکھی گئی ہیں جوکہ مکمل طور پرغیر محفوظ مقامات پر رکھی گئی ہیں جو موسمی حالات کے پیش نظر خراب ہو رہی ہیں جبکہ ہسپتال کی وہ اراضی جو کہ ہسپتال کے اسٹور روم کا حصہ ہے پر چیف ایگزیکٹو آفیسر ہیلتھ چنیوٹ ڈاکٹر مہار اختر بلوچ کے پاس ہونے کی وجہ سے اس بیش قیمت سامان اور ادویات کو محفوظ مقام پر منتقل کرنا سوالیہ نشان بن چکا ہے ۔جبکہ دوسری جانب ادویات کو محفوظ بنانے کیلئے ڈویژنل کمشنر فیصل آباد کامل آغا،سیکرٹری ہیلتھ پنجاب اور ڈی سی چنیوٹ ایوب خان بلوچ نے بھی چیف ایگزیکٹو آفیسر ہیلتھ چنیوٹ ڈاکٹر مہار اختر بلوچ کو ہسپتال سے اپنی رہائش ختم کرکے مطلوبہ جگہ ڈی ایچ کیو چنیوٹ ہسپتال کو فوری واپس کرنے کا حکم دیا تھا جسے کئی روز گزرجانے کے باوجود تسلیم نہیں کیا گیا ہے جس کی وجہ سے کروڑوں روپے کی ادویات خراب ہو رہی ہیں ۔مذکورہ رہائش 2009ء سے میڈیسن سٹور کے نام کے طور پر ناجائز استعمال ہو رہی ہے اور مختلف ہیلتھ افسران کے زیر استعمال ہے جسے پچھلے نو سالوں سے کالی نہیں کروایا جا سکا ہے ۔جبکہ دوسری جانب چیف ایگزیکٹو آفیسر ہیلتھ چنیوٹ ڈاکٹر مہار اختر بلوچ کا کہنا ہے کہ ڈی ایچ کیو چنیوٹ کی ادویات چک نمبر126ء ہیلتھ سینٹر اور دیگر مقامات پر منتقل کر دی گئی ہے اور اب وہ ادیات خراب نہیں ہو نگی تاہم رہائش کے مسئلہ پر انہوں نے کسی بھی قسم کا جواب دینے سے گریز کیا ہے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
error: Content is Protected!!