تازہ ترینعلاقائی

چنیوٹ:پنجاب حکومت نے پنجاب بھر میں جشن بہاراں کے نام پر فحاشی و عریانی اور اسلامی نظریات کا جنازہ نکال کر رکھ دیا

چنیوٹ (بیورو رپورٹ)پنجاب حکومت نے پنجاب بھر میں جشن بہاراں کے نام پر فحاشی و عریانی اور اسلامی نظریات کا جنازہ نکال کر رکھ دیا ہے جبکہ دوسری جانب اسی حکومت جوکہ ’’پڑھو پنجاب بڑھو پنجاب ‘‘کا نعرہ لگاتی تھکتی نہیں اسی حکومت نے پورے پنجاب کے تمام سرکاری سکولوں میں بلا جواز چھٹی کا اعلان کرکے بچوں میں تعلیم کے فقدان کو تقویت بخشنے کا بھی نیا نظام متعارف کروادیا ہے ۔ان خیالات کا اظہار پاکستان لبرٹی فورم کے جوائنٹ سیکرٹری عامر صدیقی نے گزشتہ روز حکومت پنجاب کی جانب سے گزشتہ روز جشن بہاراں کے نام پر ناچ گانے کی ایک ہفتہ محافل کے ساتھ ساتھ تمام تعلیمی سرکاری اداروں کے لاکھوں بچوں کو ایک ہفتے کے لئے کھلی چھٹی دی کہ وہ دل کھول کر عیاشی کریں بے ہودہ اور غیر اخلاقہ ہونے کے ساتھ ساتھ غیر اسلامی نظام کے ساتھ رقص و موسیقی کی محافل کے اہتمام اور تمام ضلعی افسران کی ان محافل سے شرکت نے ثابت کر دیا کہ پنجاب حکومت بھی روشن خیال معاشرے کو ترجیحی بنیادوں پر قائم کرنے میں لگی ہوئی ہے انہوں نے کہا کہ انتہائی افسوس اور شرم کی بات ہے کہ پنجاب بھر کے سکولوں کے بچے کتابوں کو بغلوں میں دبائے کبھی میرتھن ریس میں شریک ہیں تو کبھی انتہائی فضول مشاغل میں اپنی جہالتوں کے نمومنے پیش کرتے نظر آئے جبکہ جشن بہاراں کے انعقاد میں ملنے والے فنڈز کی بندر بانٹ اپنی جگہ دوسری جانب سرکاری گاڑیوں پر لاؤڈ اسپیکر کی کھلم کھلی خلاف ورزی کرتے ہوئے مسلسل پانچ روز شہر بھر میں اعلانات بھی کروائے گئے جو کہ کسی بھی لحاظ سے ٹھیک نہ تھا انہوں نے کہا کہ خادم اعلیٰ پنجاب جواب دیں کہ کیا مہذب معاشرے کی تشکیل اور نوجوان نسل کا روشن مستقبل ان اوٹ پٹانگ جشن بہاراں میلوں کے انعقاد سے ممکن ہو پائے گا اگر ایسا ہے تو پھر کم از کم ’’پڑھو پنجاب بڑھو پنجاب ‘‘جیسے منصوبوں کو متعارف کروانے کی بجائے انہوں منوں مٹی تلے دفن کرتے ہوئے روشن خیال کسی اور ہفتہ کو منانے کا اعلان کیا جائے تاکہ پنجاب کی نوجوان نسل پڑھائی کی بجائے زندگی کی رنگینیوں میں آگے سب بڑھ سکیں

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
error: Content is Protected!!