تازہ ترینرپورٹس

چنیوٹ: ضلع بننے کے بعد صحت کے شعبہ میں بہتری پیدا ہوئی ہے

چنیوٹ(بیورو رپورٹ)ضلع بننے کے بعد صحت کے شعبہ میں بہتری پیدا ہوئی ہے اور لوگوں کا رجحان سرکاری ہسپتالوں کی طرف بڑھ رہا ہے سہولیات اور سستا علاج ہونے کی وجہ سے عوام کو ریلیف مل جاتا ہے غریب عوام اب پرائیویٹ کی نسبت سرکاری ہسپتالوں کی طرف زیادہ متوجہ ہورہے ہیں چمن ویلفیئر سوسائٹی کے زیر اہتمام ہونے والی سروے رپورٹ میں میں انکشاف تفصیلات کے مطابق چمن ویلفیئر سوسائٹی ( رجسٹرڈ) کے زیر اہتمام ضلع چنیوٹ میں خواتین کے مسائل پر صحت کے حوالے سے ایک سروے کیا گیا جس میں سرکاری ہسپتالوں میں خواتین کو دی جانیوالی سہولیات کو مدنظر رکھتے ہوئے کیا کیا انتظامات کیے گئے ہیں اور اس کا ان کو کس حد تک فوائد حاصل ہورہے ہیں دیکھا گیا سروے رپورٹ میں 2011سے 2013تک تین سالوں کا جائز ہ لیا گیا رپورٹ میں بتایاگیا کہ غریب عوام اور خواتین کو طبی سہولیات فراہم کرنے کے لیے ضلع بھر میں 36بیسک ہیلتھ یونٹس، تین رورل ہیلتھ سنٹر ، دو تحصیل ہیڈکواٹر جبکہ ایک ڈسٹرکٹ ہیڈکواٹر ہسپتال کام کررہا ہے 2011سے 2013کے وقت تک تعینات ای ڈی او ہیلتھ ڈاکٹر اسلم رندھاوا کی دن رات محنت کوشش کے بعد عملہ کی حاضری سابقہ ادوار کی نسبت 80فی صد بہتر تھی جبکہ ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر ڈاکٹر منیراحمد ملک اور ان کی ٹیم میں شامل تینوں تحصیلوں کے ڈپٹی ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسرزڈاکٹر مشتاق بشیر عاکف ، ڈاکٹر سعادت انوار، ڈاکٹر شفقت الرحمن نے پولیو مہم ، خسرہ مہم اور ماں بچے کی صحت کے حوالے سے سو فی صد کامیابی حاصل کی اور ان آفیسرز کی بہترین کارکردگی کی بنیاد پر ضلع چنیوٹ پنجاب میں عوام کو صحت کی سہولیات فراہم کرنے والے پہلے دس اضلاع میں شامل ہے اور اسی وجہ سے سالانہ کارکردگی کی بنیادپرضلع چنیوٹ پنجاب بھر میں پہلی اور تیسری پوزیشن بھی حاصل کرچکا ہے رپورٹ میں بتایا گیا کہ ضلع بھرمیں اس وقت36بیسک ہیلتھ یونٹس،3رورل سنٹر ہیلتھ ،2تحصیل ہیڈکواٹر ہسپتال جبکہ ایک ڈسٹرکٹ ہیڈکواٹر ہسپتال کام کررہا ہے جن میں آؤٹ ڈور مریضوں کی تعداد2011میں 680446اور 2012میں بڑھ کر 929996جبکہ 2013میں ان مریضوں کی تعداد1074189تھی سال 2011میں بیسک ہیلتھ یونٹس پر مریضوں کی تعداد296209، ڈسٹرکٹ ہیڈکواٹر ہسپتال میں 194909تحصیل ہیڈکواٹر ہسپتالوں میں 45034، رورل سنٹرز ہیلتھ پر 108003ہونے کی وجہ سے 153037رہی ، سال 2012میں بیسک ہیلتھ یونٹس پر 435734ڈسٹرکٹ ہیڈکوٹر ہسپتال میں 225759،تحصیل ہیڈکواٹر ہسپتالوں میں 97713، رورل سنٹرز ہیلتھ پر 134090ہونے کی وجہ سے 231803رہی اسی طرح سال 2013میں بیسک ہیلتھ یونٹس پر496222ڈسٹرکٹ ہیڈکوٹر ہسپتال میں275165،تحصیل ہیڈکواٹر ہسپتالوں میں124934، رورل سنٹرز ہیلتھ پر137881ہونے کی وجہ سے 262815تھی رپورٹ میں دیکھا گیا کہ تمام سرکاری ہسپتالوں اور سنٹروں پر خواتین کی سہولیات کے لیے کیا انتظامات کیے گئے ہیں جس میں دیکھا گیا سال 2011میں حاملہ خواتین کا معائنہ بیسک ہیلتھ یونٹس پر11273ڈسٹرکٹ ہیڈکوٹر ہسپتال میں 6533،تحصیل ہیڈکواٹر ہسپتالوں میں 1077، رورل سنٹرز ہیلتھ پر 2002ہونے کی وجہ سے 20885خواتین ، سال 2012میں بیسک ہیلتھ یونٹس پر 14100ڈسٹرکٹ ہیڈکوٹر ہسپتال میں 4025،تحصیل ہیڈکواٹر ہسپتالوں میں 2590، رورل سنٹرز ہیلتھ پر 2752ہونے کی وجہ سے 23467اور سال 2013میں بیسک ہیلتھ یونٹس پر 19696ڈسٹرکٹ ہیڈکوٹر ہسپتال میں 6802،تحصیل ہیڈکواٹر ہسپتالوں میں 2700، رورل سنٹرز ہیلتھ پر 2458ہونے کی وجہ سے 31656خواتین کا معائنہ کیا گیا رپورٹ کے مطابق سال 2011میں بیسک ہیلتھ یونٹس پر2333ڈسٹرکٹ ہیڈکوٹر ہسپتال میں 675،تحصیل ہیڈکواٹر ہسپتالوں میں 290، رورل سنٹرز ہیلتھ پر 543ہونے کی وجہ سے 3841کی ڈلیوری کی گئی سال 2012میں بیسک ہیلتھ یونٹس پر3340ڈسٹرکٹ ہیڈکوٹر ہسپتال میں 710،تحصیل ہیڈکواٹر ہسپتالوں میں536، رورل سنٹرز ہیلتھ پر 664ہونے کی وجہ سے 5250کی ڈلیوری کی گئی رپورٹ میں دیکھا گیا کہ ہر سال ملک بھر میں لاکھوں خواتین دوران زچگی مرجاتی ہیں جس کے پیچھے اصل وجہ یہ ہوتی ہے کہ وہ خواتین قدیم طریقہ سے ڈلیوری کی کوشش کرتی ہیں اس بارے میں حکومتی ادارے اور این جی اوز لوگوں میں شعوروآگہی پیدا کرنے میں مصروف عمل ہیں کہ وہ اپنی خواتین کی ڈلیوری کسی ہنر مند سے کرائیں سال 2011میں پورے سال کے دوران 6891سال 2012کے دوران9205اور سال 2013میں 12797خواتین نے ہنرمند افراد سے ڈلیوری کرائی یاد رہے کہ چمن ویلفیئر سوسائٹی ضلع چنیوٹ میں ایجوکیشن ، ہیلتھ ، ہومین رائٹس ، اقلیتوں کے تحفظ اور خواتین اور بچوں کے حقوق کے لیے کام کرنیوالی تنظیم ہے جو حکومت پنجاب سے باقاعدہ رجسٹرڈ شدہ ہے

یہ بھی پڑھیں  کراچی:مختلف علاقوں میں پولیس کی کارروائی، ٹارگٹ کلرز سمیت 8 ملزمان گرفتار

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker