تازہ ترینعلاقائی

چونیاں:والدین کی ذراسی احتیاط بچےکو ساری عمرکی بیماری سےمحفوظ کرسکتی ہے۔ڈاکٹر واجد

چونیاں (نامہ نگار)دال کے والوز کی بیماری ریومیٹک ہارٹ ایک جرثومے کی وجہ سے ہونیوالی بیماری ہے۔جو 5 سے 15 سال کی عمر کے بچوں میں گلا خراب ہونے کے بعد ہوتی ہے۔یہ بیماری دل کے متعدد والوز خراب کر دیتی ہے۔اس بیماری سے آسانی سے بچا جا سکتا ہے بشرطیکہ بروقت مستند ڈاکڑ سے علاج کروایا جائے ۔مکمل اور موٗثر علاج کی صورت میں یہ جرثومہ دل کے والو خراب نہیں کرتا۔ اس لئے بج بھی بچے کا گلا خراب ہو تو اسے معمولی نہ سمجھا جائے اور فوری طور پر کسی مستند ڈاکٹر سے علاج کریا جائے۔والدین کی ذرا سی احتیاط بچے کو ساری عمر کی بیماری سے محفوظ کر سکتی ہے۔بروقت علاج پرمعمولی خرچ بچے کی بیماری پر خر چ ہونے والے لاکھوں روپے اور زندگی بھر کی محتاجی سے بچا سکتا ہے۔ان خیالات کااظہار ہارٹ سپیشلسٹ ڈاکٹر واجد ، پرنسپل ملک اللہ داد، ماہر تعلیم محمد افضل شاہین نے گورنمنٹ ماڈل ہائی سکول چونیاں میں طلبہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ صحت سے قیمتی کوئی چیز نہیں ہے۔صحت مند رہنے کیلئے باقاعدہ ورزش کریں۔متوازن غذا کا استعمال کریں۔ خوراک میں گوشت ، دودھ اور سبزیوں کا استعمال کریں۔ سکولوں میں طلبہ کو آگاہی کا مقصد بروقت سد باب کرنا ہے۔طلبہ اور والدین میں جتنا شعور پیدا ہوگا تو خراب گلے کو معمولی نہیں سمجھیں گے۔انہیں فوری طور پر ڈاکٹر کے پاس رجوع کرنا چاہئے اگر کھانسنا بھی پڑے تومنہ پر ہاتھ نہ رکھیں بلکہ کسی رومال یا اپنے بازو کی کہنی کے کپڑے منہ پر رکھیں۔ ہاتھ رکھنے سے تمام جراثیم ہاتھ پر لگ جاتے ہیں اور بچے آپس میں ہاتھ ملاتے ہیں اور جراثیم کو دوسرے بچوں میں ٹرانسفر کرنے کا سبب بن سکتے ہیں۔بیماری کے پھیلاؤ سے پہلے احتیاطی تدابیر بیماری کی روک تھام کیلئے انتہائی ضروری ہیں۔اس موقع پر ڈاکٹر وقار حسن سندھو۔ڈاکٹرصفدر علیم نے بھی طلبہ کو احتیاطی تدابیر بتائیں۔ جنہیں طلبہ نے بہت زیادہ پسند کیا۔سکول کا دورہ کرنے والی ڈاکٹروں کی ٹیم نے سکول کے مثالی ڈسپلن ، صفائی ستھرائی اور پرنسپل ملک اللہ داد کے اقدامات کو سراہا۔

یہ بھی پڑھیں  دہشتگردی کیخلاف موثر قومی اتحاد وقت کا تقاضہ ہے ، ملالہ یوسفزئی

یہ بھی پڑھیے :

One Comment

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker