پاکستانتازہ ترین

چند لوگوں کو ذاتی فائدہ پہنچانے کیلئے سی این جی کو ختم کیا جارہا ہے، غیاث پراچہ

اسلا م آباد ﴿بیورو رپورٹ ﴾آل پاکستان سی این جی ایسوسی ایشن کے مرکزی چیئرمین غیاث عبداللہ پراچہ نے کہا کہ دنیا بھر میں گاڑیوں میں قدرتی گیس کے استعمال کو ترجیح دی جارہی ہے کیونکہ یہ گیس کاسب سے Efficient استعمال ہے اور اس سے شہریوں کوسانس لینے کیلئے آلودگی سے پاک فضا ملتی ہے ۔ اسلام آباد میں میڈیا کی جانب سے بھارت میں سی این جی پروموشن کے حوالے سے خبر پر تبصرہ کرتے ہوئے اپنے جاری بیان میں غیاث پراچہ نے کہا کہ دنیا بھر میں سی این جی کے فروغ اور استعمال کیلئے بڑی بڑی کانفرنسیں اور نمائشیں ہو رہی ہیں۔ 2003 میں جب شنگھائی میں سی این جی لائی گئی تو 100 ایل پی جی اسٹیشن تھے جو ختم کر دیئے گئے اسی طرح کوریا، ملائیشیااور انڈونیشیا میں بھی سیفٹی کے پیش نظر ایل پی جی ختم کر کے سی این جی لائی گئی۔ باقی تمام ملکوں میں حکومتیں سی این جی کے استعمال کیلئے لوگوں کو پرکشش مراعات دے رہی ہیں اس کی سب سے بڑی وجہ یہ ہے کہ پوری دنیا میں سب سے زیادہ اہمیت انسان کو اور اس کی تندرستی کو دی جارہی ہے۔ کاروں میں سی این جی کے استعمال سے شہروں میں پٹرول اور ڈیزل سے پھیلنے والی فضائی آلودگی کو کم کرنے میں مدد ملے گی جس سے لوگوں میں سانس ، گلے اور دیگر بیماریوں سے بچائو ممکن ہوگا۔ حکومتوں کو میڈیکل بجٹ سے بچت ملے گی اور صحتمند قوم ملک کی تعمیر و ترقی میں بہتر کردار ادا کر سکے گی۔ بھارت میں بھی ریاستوں نے گاڑیوں کو ترجیحی بنیادوں پر گیس فراہم کرنے ، باقی گیس چھوٹی صنعتوں کو پراسیسنگ کیلئے دینے اور باقی بچ جانے والی گیس بڑی انڈسٹریز کو دینے کے بھارتی پنجاب ہائی کورٹ کے حکم پر عملدرآمد کا اعلان کردیا ہے جبکہ ہمارے ہاں ریورس گیئر لگایا جارہا ہے بجائے وسائل کو سمجھداری سے استعمال کرنے، امپورٹ بل کو کنٹرول کرنے کے محض چند خاندانوں کو ذاتی فائدہ پہنچانے کیلئے سی این جی کو ختم کیا جارہا ہے۔ ہمارے ہاں سی این جی کو پروموٹ کرنے پر اربوں روپے اور سالوں کی محنت صرف ہوئی ایسا لگتا ہے کہ حکومت یہ ثابت کرنا چاہتی ہے کہ وہ سب ذہین لوگ اور ان سب کی پلاننگ فضول تھی۔ کیا شہید بینظیر بھٹو نے سی این جی بسیں چلانے کے منصوبے کا افتتاح نہیں کیا تھا؟ کیا ان لوگوں کی عقل شہید وژنری رہنما سے زیادہ دور فہم ہے؟ محض چند خاندانوں کے ذاتی فائدے کے لئے پوری قوم کی اربوں روپے کی سرمایہ کاری اور برسوں کی محنت، انفراسٹکچر او رنیٹ ورکنگ ضائع کی جارہی ہے جس سے ملک میں ہیلتھ بجٹ، زرمبادلہ اور امپورٹ بل پر شدید برے اثرات مرتب ہوں گے۔ قوم کو پہنچنے والے نقصانات کے ذمہ دار یہ چند مفاد پرست خاندان ہوں گے جن سے یہ قوم ضرور حساب لے گی

یہ بھی پڑھیں  نفرت حقارت اور تعصب کے خلا ف متحد و منظم ہونا پڑے گا ،امید وار برا ئے میئر آف برمنگھم شون سائمن

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker