تازہ ترینعلاقائی

داؤدخیل : کمرمشانی کی عوا م صرف ہسپتال کی نئی بلڈنگ دیکھ کر مریضوں کا دل بہلائے

داؤدخیل (نامہ نگار) کمرمشانی کی عوا م صرف ہسپتال کی نئی بلڈنگ کو دیکھ کر مریضوں کا دل بہلائے کمرمشانی کی عوام کو ہسپتال کے ڈسپنسر اور باقی کلاس فور کے عملے کے حال پر چھوڑ دیا گیا ہے کمرمشانی ہسپتال میں مریض کو دعائیں ہی مل سکتی ہیں دوائیاں نہیں کمرمشانی میں تبدیلی نے اپنے اثرات دیکھانا شروع کردیے تحصیل عیسیٰ خیل کے سب سے بڑی آبادی والے علاقے کمرمشانی کا آر ایچ سی ڈاکٹر سے محروم ایمرجنسی کی صورت میں THQ, عیسٰی خیل یا 75 کلومیٹر دور میانوالی جانا پڑ تا ہے RHC کمرمشانی پر تعینات ڈاکٹر سمیع اللہ اور ڈاکٹر منصور نے پبلک سروس کا امتحان پاس کرنے کے بعد اپنے فریش آرڈر RHC ترگ کروا لیے اس طرح وہاں ڈاکٹروں کی تعداد 5 ہو گئی ہے جبکہ اس وقت کمرمشانی میں کو ئی ڈاکٹر موجود نہیں ہے میڈیا نے جب سی او ہیلتھ سے اس سلسلہ میں رابطہ کیا تو انہوں نے بتایا کہ مذکورہ بالا ڈاکٹرز کے آرڈر سیکر ٹری ہیلتھ نے کیے ہیں اور ہم اس معاملے میں بلکل بے بس ہیں میڈیا کے سوال پر کہ اگر رات کو کوئی ایمرجنسی بن جاے تو آپ کیا کریں گے اور کیا انتظام کیا جائے گا تو انہوں نے کہا کہ کمرمشانی میں جب کوئی ڈاکٹر آنے کو تیار ہی نہیں تو میں کیا کرسکتا ہوں واضح رہے کہ وزیر صحت پنجاب یاسمین راشد نے کمر مشانی کا دورہ کیا تو ڈاکٹر اور پیرا میڈیکل سٹاف دینے کا وعدہ کیا کہ چند دن میں عملہ پورا کر دیا جائے گا لیکن ابھی تک رورل ہیلتھ سینٹر کمر مشانی عملہ سے محرو م ہے جس سے مضافاتی علاقے چاپری ،ناصری والہ ،مکڑوال، مندہ خیل ، خدوز ئی کے علاقے ایمرجنسی کی صورت میں RHC کمرمشانی کا رخ کرتے ہیں لیکن ڈاکٹر نہ ہونے کی وجہ سے سینکڑوں افراد کو شدید مشکلا ت کا سامنا کرنا پڑتا ہے ایسی صورت حال میں علاقے میں شدید غم و غصہ کا رحجان پایا جاتا ہے اور DC میانوالی اور CEO ہیلتھ سے مطالبہ کیا ہے کہ RHC کمرمشانی پر فورًا ڈاکٹرز تعینات کیے جائیں

یہ بھی پڑھیں  انجینئرشوکت اللہ گورنرخیبرپختونخوا مقرر

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker