علاقائی

لاہور:ڈینگی کنٹرول کیلئے ٹاؤن ایمرجنسی کمیٹیوں کومتحرک کردیا گیا،باقاعدہ اجلاس منعقد کرنےکی ہدایت

لاہور﴿نامہ نگار﴾وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی ہدایت پر ڈینگی کے مؤثر تدارک کیلئے ٹاؤن ایمرجنسی کمیٹیوں کو فوری طور پر متحرک کردیا گیا ہے اور ان کمیٹیوں کے باقاعدگی سے اجلاس منعقد کرنے کی ہدایت کر دی گئی ہے۔ تمام متعلقہ محکمے ڈینگی کنٹرول کیلئے زیادہ منظم اور مربوط انداز میں کام کریں،یہ بات وزیراعلیٰ پنجاب کے معاون خصوصی برائے صحت خواجہ سلمان رفیق نے ڈینگی کے بارے میں سنٹر رسپانس کمیٹی کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی ۔ اجلاس میں اراکین اسمبلی ،پرنسپل سیکرٹری ندیم حسن آصف کے علاوہ تمام محکموں کے سیکرٹری صاحبان ، کمشنر لاہور،ایڈیشنل سیکرٹری محکمہ اطلاعات و ثقافت اور دیگر متعلقہ سینئر افسران نے شرکت کی، اجلاس میں مختلف محکموں کی کارکردگی کی نگرانی پر معمور صوبائی اسمبلی کے ارکان نے رپورٹس پیش کیں جس پر شرکا نے اطمینان کا اظہار کیا،اجلاس میں لاہور کی مختلف ٹاؤنز میں ڈینگی مچھر کے لاروے کی موجودگی اور اس کے خاتمے کیلئے کیے جانے والے مکینیکل اور کیمیکل اقدامات کے بارے میں آگاہ کیاگیا، خواجہ سلمان رفیق نے ہدایت کی کہ جن گھروں اور دیگر مقامات سے ڈینگی مچھر کا لاروا رپورٹ ہو وہاں سپرے کو یقینی بنایا جائے۔انہوں نے کہا کہ حکومت کے ٹھوس عملی اقدامات اور یونین کونسل کی سطح تک ماہرین حشرات کی جانب سے مؤثر ویکٹر سرویلنس کے نتیجے میں ڈینگی لاروے کی نشاندہی ہوئی ہے جس سے اس مچھر کے خاتمے میں مدد ملے گی، انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ تمام محکمے ایک دوسر ے کے ساتھ اپنی معلومات اور ڈیٹا شیئر کرنے کیلئے قریبی رابطہ رکھیںتاکہ مشترکہ اور منظم انداز میں کام کرتے ہوئے اس مسئلے سے نمٹا جاسکے ۔خواجہ سلیمان رفیق نے ڈینگی کے بارے میں جاری عوامی آگاہی مہم کو مزید تیز کرنے کی ہدایت کی۔ انہوں نے کہا کہ بھرپور عوامی شرکت سے ہی ڈینگی کے مسئلے پر قابو پایا جاسکتا ہے ۔اجلاس میں ڈینگی کے سد باب کیلئے مختلف انتظامی امور کا جائزہ لیا گیا۔ خواجہ سلمان رفیق نے محکمہ صحت ، محکمہ ماحولیات ، لوکل گورنمنٹ اور دیگر متعلقہ محکموں کے حکام کو ویکٹر سرویلنس، ویکٹر رسپانس کی سرگرمیوں کو مزید تیزکرنے کے علاوہ ہسپتالوں میں ڈینگی کے مریضوں کی تشخیص و علاج معالجے کے انتظامات کوہمہ وقت تیاری کی حالت میں رکھنے کی ہدایت کی تاکہ ضرورت پڑنے پر اس سلسلے میں مریضوں کو کسی دشواری کا سامنا نہ کرنا پڑے۔

یہ بھی پڑھیں 

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker