تازہ ترینعلاقائی

ڈسکہ:نجی ہسپتال کےڈاکٹرزنےاپنی غفلت چھپانے کی خاطرمریضہ کےتین آپریشن کردیئے

ڈسکہ(نامہ نگار)نجی ہسپتال کے ڈاکٹرز اور عملہ کی مبینہ ناتجربہ کاری اور اپنی غفلت چھپانے کی خاطر جواں سالہ مریضہ کے تین آپریشن کر دیئے جس سے وہ زندگی کی بازی ہار گئی جس پر ورثاء نے احتجاج کر تے ہو ئے روڈ بلاک کیا اور ہسپتال میں توڑ پھوڑ کی تفصیلات کے مطابق گلہ شہیداں کے رہائشی عرفان علی نے مورخہ 15اگست 2012ء ؁کو اپنے دیگر عزیزوں کے ہمراہ اپنی بیوی سائرہ عرفان کو چیک اپ کے لئے کالج روڈ پر واقع نجی ہسپتال میں لے کر گیا جہاں پر لیڈی ڈاکٹرابتسام عمر نے چیک کیا اور کہا کہ نارمل ڈلیوری ہے انتظار کریں ایک گھنٹہ بعدلیڈی ڈاکٹر نے آکر بتایا کہ مریضہ کی حالت کافی سیریس ہے میجر آپریشن ہوگا کاغذی کاروائی مکمل کر نے کے بعد اپنے باتجربہ کار عملہ کے ساتھ مریضہ کا آپریشن کردیا آپریشن کے بعد مسلسل بلیڈنگ ہو تی رہی تین دن ہسپتال میں رکھنے کے بعد اسی حالت میں ڈسچارج کر دیا گیا 10یوم تک مریضہ کو گھر سے پٹی کروانے کے لئے لایا جا تا رہا مگر بلیڈنگ نہ رک سکی اور حالت مسلسل بگڑتی گئی 28اگست 2012ء ؁کو حالت زیادہ خراب ہو نے پر دوبارہ ہسپتال لایا گیا جہاں لیڈی داکٹر نے اسے دوبارہ داخل کرلیاخون نہ رکنے کی وجہ سے مریضہ کا دوبارہ آپریشن کر نے کا کہہ کر ہمیں باہر نکال دیا اور اپنی غفلت لاپرواہی چھپانے کے لئے آپریشن کر کے مریضہ کی یوٹرس نکال دی مگر پھر بھی حالت ٹھیک نہ ہو سکی تین یوم دوبارہ لیڈی ڈاکٹر نے بغیر اجازت کے تیسرا آپریشن کر دیا جس سے مریضہ زندگی اور موت کی کشمکش میں مبتلا ہو نے پر مذکورہ ڈاکٹر نے اسے گوجرانوالہ لے جانے کا کہا جس پر گوجرانوالہ نجی ہسپتال لے گئے جہاں تشویشناک حالت دیکھ کردو ہسپتال کی انتظامیہ نے اسے داخل نہ کیا مریضہ کو لیڈی ولنگٹن لے گئے جہاں پر ڈاکتر نے چیک کرنے کے بعد 9ستمبر 2012ء ؁کو میو ہسپتال ریفر کردیا جہاں ڈاکٹروں نے مریضہ کی حالت دیکھ کر کسی قسم کا آپریشن کر نے سے انکار کردیا اور ایمرجنسی آئی سی یو میں ٹریٹ منٹ شروع کردی11ستمبر 2012ء ؁کو صبح مریضہ مذکورہ ڈاکٹر اور ناتجربہ کارعملہ کی لالچ ،غفلت لاپرواہی اور پروفیشنل مس کنڈکٹ کی بھینٹ چڑھ کر زندگی کی بازی ہار گئی وارثین نے لیڈی ڈاکٹر اس کے خاوند اور عملہ کے خلاف مقدمہ درج کر نے کی تحریری درخواست دی جس پرپولیس نے نعش پوسٹ مارٹم کے لئے سول ہسپتال روانہ کردی مشتعل ورثاء نے احتجاج کرتے ہو ئے کالج روڈ پر نجی ہسپتال کے سامنے آگ لگا کر روڈبلاک کر کے ٹریفک روک دی اور ہسپتال کی توڑ پھوڑ کی ڈاکٹر اور عملہ کے خلاف نعرہ بازی کی وقوعہ کی اطلاع ملنے پرانتظامیہ نے جائے وقوع پر پہنچ کر وارثین کو انصاف دلانے کی یقین دہانی کرائی جس پر ورثاء نے احتجاج ختم کردیا اور روڈ ٹریفک کے لئے کھول دی۔

یہ بھی پڑھیں  ناروال:تحفظ ناموس رسالت کانفرنس سےعلامہ سید محمد عرفان شاہ اوردیگرکاخطاب

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker