تازہ ترینعلاقائی

ڈسکہ 19 سال سے قتل و غارت کی جنگ بغیر کسی شرائط سے ختم ہوگئی

daskaڈسکہ(نامہ نگار)ڈسکہ 19 سال سے قتل و غارت کی جنگ بغیر کسی شرائط سے ختم ہوگئی صلح کے بعد دونوں گروپ آپس میں بغل گیر، ڈسکہ تھانہ صدر کے موضع منڈیکی گورائیہ کے رہائشی محمد جاوید بٹ اورکوٹلی ملہیاں کے بابا علی احمد ملہی کے درمیان سال 1994میں معمولی تلخ کلامی پر ایک جھگڑا ہوا جو وقتی ختم تو ہوگیا تھا مگر بٹ گروپ اور ملہی گروپ نے اس جھگڑے کی رنجش اپنے دلوں سے ختم نہ کی دونوں ایک دوسرے کو مزا چکھانے کا موقع ڈھونڈنے لگے با لآ خر 1/3ماہ کے بعد بابا علی ملہی کے بیٹے پرویز علی ملہی عرف پیجا ملہی کا داؤ چل گیا اس نے اپنے مسلح ساتھیوں کی مدد سے حملہ کرکے جاوید بٹ کو موت کی ابدی نیند سلا کر موقع سے فرار ہوگیا اس قتل کا بدلہ لینے کیلئے مقتول کے چھوٹے بھائی راشد بٹ عرف راشو ،چچا زاد بھائی محمد آصف عرف بھاموبٹ اور ایک جگری دوست سابق کونسلر چوہدری مراد علی عرف مرادی مہر نے اس کی لعش پر قسمیں کھائیں کہ تیرے چالیسواں آنے سے قبل تیرے خون کا حساب لیں گے جنہوں پندرہ سے بیس ہی روز بعد اپنی زندگی کو جرائم کی دنیا میں لاکر قتل وغارت شروع کردی دونوں گروپوں کے افراد یکے بعد دیگرے گولیوں کے نشانے بنتے چلے گئے جاوید بٹ کے قتل سے شروع ہونے والی اس جنگ میں 30سے زائد افراد لقمہ اجل بن گئے ادھر گورنمنٹ آف پنجاب نے ان اشتہاریوں کے زندہ یا مردہ گرفتاریوں کیلئے پانچ سے پچیس لاکھ رقم نقد تک مقر ر کر دی جو وقفے وقفے کے بعد پولیس مقابلوں کے بعد مارے گئے جبکہ پرویز اور راشد کو پولیس نے گرفتار کرکے جوڈیشل کردیا عدالت نے پرویز کو سزائے موت کا حکم سنایا اور راشو کو شک کا فائدہ اٹھاتے ہوئے بری توکر دیا مگر دونوں گرپوں کے درمیان جلنے والی خونی آگ سستی سے جھلس رہی تھی کہ علاقہ کی اہم شخصیات جن میں سابق وفاقی پارلیمانی سیکرٹری سید افتخارالحسن المعروف ظاہرے شاہ،سابق ناظم قاضی شبیر احمد ،پرویز عالم بٹ ،چوہدری محمد رفیق ورک ،وارث علی گجر،جاوید اقبال بٹ،بابا غلام رسول،رانا کاشف اور محمد خلیل بٹ ودیگرنے دونوں گروپوں کو اکٹھا کر کے اس آگ کی بھینٹ چڑھنے والے تہرے قتل کے مدعی قیوم ملہی کے ڈیرے پر مل بیٹھ کر کے متحارب پارٹیوں کو قرآن وحدیث کی روشنی ڈال کر انکے غصے کو ٹھنڈا کیا اور پیر ظاہرے شاہ نے کہا کہ ہمارے نبی کریمﷺ نے بھی ہمیں بھائی چارے کاہی سبق دیا ہے اور آپ ﷺ ہی کا فرمان ہے کہ مسلمان آپس میں بھائی بھائی ہیں علاوہ شخصیات نے بھی دونوں دھڑوں کو اس خون کی ہولی کو بند کر کے مل بیٹھنے پر آمادہ کیا جس پر دو نوں فریقیں نے آپس میں بغل گیر ہو کر صلح کی جس کی خبر علاقہ بھر میں جنگل کی آگ کی طرح پھیل گئی جس سے عوام کے چہروں پر ایک پر مسرت خوشی سی آگئی ہے۔

یہ بھی پڑھیں  بلاول بھٹو کا18اکتوبر کو ریلی نکالنے کا اعلان

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker