تازہ ترینعلاقائی

رورل ہیلتھ سینٹر داؤدخیل میں ڈاکٹر اور کلرک بابو کی من مانیاں

داؤدخیل (ضیانیازی سے ) رورل ہیلتھ سینٹر داؤدخیل میں ڈاکٹر اور کلرک بابو کی من مانیاں خود تو یوپی ایس لگوا کر مزے لے رہے ہیں جبکہ ہسپتال کا دوسرا عملہ اور مریض گرمی میں خوار ہورہے ہیں شہریوں کا سروے میں اظہار خیال یونس خان ،عبد الرشید خان ،حفیظ اللہ قریشی کے مطابق رورل ہیلتھ سینٹر داؤدخیل میں ڈاکٹر طفر کمال کو تعینات کیا گیا وہ ماہر ڈاکٹر ہیں لیکن ان کو چند شر پسند عناصر غلط پالیسیوں پر لگا کر ان کو بھی بدنام کر رہے ہیں اور عوام کو بھی ذلیل و خوار کر رہے ہیں ڈاکٹر خود تو اپنے کمرے میں اور کلرک بابو کے کمرے میں یو پی ایس لگوا کرخود تو آرام سے بیٹھے ہوتے ہیں جبکہ باقی عملہ اور مریض گرمی میں خوار ہوتے رہتے ہیں اور جرنیٹر بند پڑا رہتا ہے جبکہ حکومت کی جانب سے جرنیٹر اور ایمبولینس کے لیے سالانہ پانچ لاکھ روپے کا بجٹ مہیاء کیا جا تا ہے لیکن اس کے باوجود جرنیٹر بند ہے جبکہ زرائع سے معلوم ہوا ہے کہ اس وقت بھی تقریبا ایک لاکھ چوبیس ہزار روپے کا بجٹ باقی ہے لیکن اس کو استعمال نہیں کیا جا رہاہیاور دو بجے کے بعد ہسپتال میں کوئی ڈاکٹر نہیں ہوتا ہے جس سے ایم ایل سی اور ایمرجنسی مریضوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے ڈاکٹر امیر احمد خان کو دوباری رورل ہیلتھ سینٹر پر تعینات کیا جائے ان کی تعیناتی سے ہسپتال ڈی ایچ کیو کے بعد بہترین ہسپتال تھا جس سے کئی مریضوں کو بہترین ہیلتھ کی سہولتیں مہیاء ہو رہی تھیں ،حاجی مرید احمد خان ،تنویر خان ،عاطف خان ،انوار اللہ خان ،اور نعمت اللہ خان نے کہا کہ بیس روز سے زائد کا عرصہ گزر جانے کے باوجود الٹر ساونڈ مشین خراب پڑی ہے جس سے مریضوں کو شدید تکلیف کا سامنا ہے انہوں نے کہا کہ چند شر پسند ملازمین نے اپنا گروپ بنا کر دوسرے عملہ کو تنگ کرتے ہیں کھبی ڈاکٹر کو کہہ کر کسی کا تبادلہ کرایا جا رہاہے اور ستم ظریفی یہ کہ اب ڈاکٹر صاحب کو انسانوں کی جانوں کی پرواہ بھی نہیں ہے نائب قاصد کو کہا گیا ہے کہ تم مریضوں کی مرہم پٹی کرو اور نہیں انجکشن بھی لگاؤ ایسے فیصلے کسی بھی انسان کی جان لے سکتے ہیں اگر کوئی بھی واقعہ ہوا تو اس کی ذمہ داری ڈاکٹر ظفر کمال پر ہو گی اہلیان داؤدخیل نے ڈی سی او میانوالی اور ای ڈی او ہیلتھ میانوالی سے مطالبہ کیا ہے کہ ہسپتال میں جرنیٹر مستقل بنیادوں پر چلایا جائے اور نائب قاصد سے مرہم پٹیاں اور انجکشن نہ لگوائیں کیونکہ انسان کی جان سب سے قیمتی ہے ۔

یہ بھی پڑھیں  حکمرانوں ۔۔۔!!!!میری ریاست کے عوام کا خیال رکھنا ۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker