تازہ ترینعلاقائی

سنٹرل جیل ڈیرہ غازیخان کی سکیورٹی انتہائی سخت کردی گئی

dg-khanڈیرہ غازیخان ( جنید ملک سے).سنٹرل جیل ڈیرہ غازیخان کی سکیورٹی انتہائی سخت کر دی گئی ہے .جیل ملازمین کے علاوہ پنجاب پولیس کے 54 اہلکار اور پنجاب کانسٹیبلری کے 20 ملازمین مستقل طور پرسنٹرل جیل میں تعینات کر دیئے گئے ہیں ایلیٹ فورس کی دوموبائل گاڑیاں سنٹرل جیل کے اندر اور باہر سکیورٹی کو یقینی بنائیں گی . جیل کے ٹاور اور دیگر حساس مقامات پر جدید اورخودکارہتھیاروں سے لیس ماہرنشانہ باز تعینات کر دیئے گئے ہیں . دہشت گردی اور دیگر سنگین جرائم میں ملوث قیدیوں کی روزانہ صبح شام تلاشی جبکہ دیگر قیدیوں کی مخصوص وقفہ کے بعد بیرکیں تبدیل کر دی جائیں گی . یہ بات کمشنرطارق محمودخان کی زیر صدارت اس سلسلے میں منعقدہ اجلاس کو بتائی گئی . کمشنرنے کہا کہ ڈی سی او، ڈی پی او ، سپیشل برانچ اور دیگر متعلقہ محکموں کے افسران باقاعدگی سے سنٹرل جیل کامعائنہ کر کے سکیورٹی کے انتظامات مزید بہتر کرنے کیلئے متعلقہ اداروں کو آگاہ کرتے رہیں . آر پی او چودھری محمد نواز وڑائچ نے کہاکہ سنٹرل جیل میں قیدیوں کیلئے آنے والے سامان کی تین مختلف جگہوں پرچیکنگ اور ملاقاتیوں کی سرگرمیوں کو بھی مانیٹر کیا جائے. اجلاس میں ڈی سی او افتخارعلی سہو ، ڈی پی او چودھری محمد سلیم اور قائمقام سپرنٹڈنٹ جیل چودھری محمد اشرف نے بتایاکہ سنٹرل جیل کی سکیورٹی کیلئے دو چاردیواریاں تعمیر کر لی گئی ہیں . بیرونی چاردیواری پر لیزر وائر کی تنصیب جاری ہے، رہ جانے والی سو فٹ دیوار پر لیزر وائر جلد نصب کر دی جائے گی . جیل کے اندر پنجاب پولیس کا وائرلیس کنٹرول روم بھی قائم کیاگیاہے کسی بھی ناخوشگوار واقعہ پر وائر لیس کے ذریعے ضلع بھر خصوصا ترمن، غازیگھاٹ ، سخی سرور ، بواٹا ، تونسہ اور دیگر سرحدی مقامات کی فوری ناکہ بندی کر دی جائے گی اور اس سلسلے میں متعلقہ تھانوں کو احکامات جاری کر دیئے گئے ہیں . جیل ملازمین کو جدید ہتھیار چلانے کی تربیت اور دیگر اقدامات مکمل کر لیے گئے ہیں . اجلاس میں اے ڈی سی محمد شاہد ، اے سی جی چودھری عبدالغفار اور دیگرمتعلقہ محکموں کے افسران شریک تھے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button