تازہ ترینعلاقائی

اوکاڑہ:ڈی پی ایس سکول انتظامیہ کا معصوم بچوں کو چند گھنٹے سنبھالنے کا انوکھا انداز

اوکاڑہ (نمائندہ خصوصی) ڈی پی ایس سکول انتظامیہ کا معصوم بچوں کو چند گھنٹے سنبھالنے کا انوکھا انداز۔مار نہیں پیار سے سکون آور دوائی پلانے کا دلخراش عمل ۔ڈاکٹری نسخہ کے بغیرپلے گروپ کے بچوں کوکھانسی کے سیرپ پلانے کے واقعات ۔ ٹیچر ز کا موقف کہ بچوں کے خفا ہونے سے بچنے کا واحد حل یہ ہی ہے ۔پرنسپل کا موقف کہ ڈسپنسری سے کسی ٹیچر کو ایسی ادویات لینے کی اجازت نہیں ۔پرنسپل کا مکمل انکوائری اور ایسے واقعات کوروکنے کے لیے لیت و لعل سے کام۔تفصیلات کے مطابق ڈسٹرکٹ پبلک سکول اوکاڑہ کی انتظامیہ کامعصوم پلے گروپ کے بچوں کوسکول میں سنبھالنے کا انوکھا نداز سامنے آیا ہے جی ہاں پلے گروپ کے بچوں کو مار نہیں پیار سے سکون آور دوائی پلانے کا دلخراش واقعہ سامنے آنے پر والدین میں تشویش کی لہر دوڑ گئی معروف سماجی کارکن نے چیئر مین ڈی پی ایس سکول کو درخواست دی ہے کہ چند دن پہلے پلے گروپ کی طالبہ اسکی بھتیجی کو ٹیچر نے کلاس روم میں سکون آور دوائی پلائی جس سے بچی پر غنودگی چھا گئی انھوں نے چیئر مین سے مکمل انکوائری کرنے کی درخواست کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ ٹیچرز کو کس نے اختیار دیا ہے کہ وہ سکول ڈسپنسری سے بغیر کسی ڈاکٹری نسخہ اور والدین کی اجازت کے بغیر سکون آور یا کھانسی کی ادویات کا استعمال کریں انھوں نے درخواست میں مزید یہ مطالبہ کیا ہے کہ بچوں کے والدین سے بھاری فیسیں وصول کرکے ایسی ٹیچرز کو کیوں تعینات کیا گیا ہے جو چند گھنٹے سکول میں بچوں کو سنبھال نہیں سکتیں جب سکول انتظامیہ سے اس واقعہ کے بارے موقف حاصل کیا گیا تو ٹیچرز اور پرنسپل کے متضاد بیانات سامنے آئے ٹیچرز کا موقف تھا کہ بعض بچے خفا یا بیمار ہوتے ہیں تو انکو کھانسی کا سیرپ پلانے سے وہ پر سکون ہوجاتے ہیں اور ایسا کرنے میں انکی معاونت سیکشن انچارج بھی کرتی ہیں جبکہ پرنسپل سکول کا کہنا ہے کہ ہماری طرف سے ٹیچرز کو ایسی کوئی ہدایات نہیں کہ وہ بچوں کو بیماری یا کسی اور وجہ سے سیرپ پلائیں لیکن پرنسپل سکول کا مکمل انکوائری اور آئندہ ایسے واقعات کو روکنے کے لیے لیت ولعل سے کام

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button