پاکستانتازہ ترین

پاکستان میں 2014 ءکے بعد بھی ڈرون حملے ہو سکتے ہیں

کابل﴿رائے ثمرعباس﴾ افغانستان میں امریکی سفیر کروکر نے کہا ہے کہ امریکہ پاکستان میں 2014ئ کے بعد بھی ڈرون حملے جاری رکھ سکتا ہے،پاکستان اپنی حدود میں دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہوں کے خلاف کارروائی کر ے اور سرحد پار طالبان کے حملے روکے۔ بدھ کو کابل میں میڈیا سے بات کرتے انہوں نے کہا کہ امریکہ اور افغانستان کے درمیان معاہدہ 2014ئ کے بعد بھی عسکریت پسندوں کے اہداف کو نشانہ بنانے کے لیے پاکستان میں ڈرون حملے جاری رہنے کا دروازہ کھلا رکھ سکتا ہے۔ امریکہ اور افغانستان اسٹرٹیجک شراکت داری کے معاہدے تحت امریکہ اور افغانستان سر زمیں کو دوسرے ممالک کے خلاف کارروائی استعمال نہیں کر ے گا۔ تاہم امریکی سفیر کے مطابق افغانستاں کو لاحق ہو نے والے خطرات پر دونوںممالک مناسب ردعمل پر مشاورات کر یں گے۔ انہوں نے کہا کہ مناسب ردعمل پر اتفاق دفاعی نوعیت کا ہوگا نہ کسی پر حملہ کرنے کا۔ انہوں نے پاکستان پر زور دیا کہ دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہوں کے خلاف کارروائی کر ے۔ اور طالبان کی جانب سے سرحد پار حملوں کو روکے۔ پاکستان امریکہ اور افغانستاں کے درمیان اس معاہدے کا جائزہ لے گا۔

یہ بھی پڑھیں  نئی دہلی میں پی آئی اے دفتر پرہندو انتہا پسندوں کا حملہ

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker