تازہ ترینکالممیرافسر امان

ڈرو ن حملے ؍ناٹو سپلائی مذمت ریلی

mir amanکراچی میں امریکی جنگ سے باہر آنے، ڈرون حملوں اور ناٹو سپلائی کے خلاف احتجاجی پروگرام ریلی کی شکل میں جماعت اسلامی اور تحریک انصاف کراچی کے تحت منعقد کیا گیا اِس میں جماعت اسلامی کی لیڈر شپ اور تحریک انصا ف سندھ کے صدر نادراکمل لغاری، جمعیت علمائے پاکستان اور ملی یکجہتی کونسل کے صدرصاحبزادہ محمد ابوالخیر زبیر، جماعت الدعوۃ کے مرکزی رہنماامیر حمزہ، عافیہ مومومنٹ کی ڈاکٹرفوزیہ، شباب ملی، وکلا،تاجر صحافی اور مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد کی بھر پور شرکت نے مارچ کو کامیاب بنایا ۔ اسٹیج پر حکمرانوں! امریکہ جنگ سے باہر آ جاؤ کا بہت بڑا بینر لگایا گیا تھا اسٹیج کے سامنے ایک طرف پریس گیلری اوردوسرے طرف استقبالیہ اور اناؤسمنٹ کے لیے کیمپ لگایا گیا تھا اسٹیج کی پیچھلی طرف سوشل میڈیا کا کیمپ لگایا جس میں کافی تعداد میں سوشل میڈیا کے حضرات لیپ ٹاپ کے ساتھ تشریف فرما تھے سامنے الیکٹرونک میڈیا کی گاڑیاں اپنے اپنے اسٹیشنز کو نشریات بھیجنے کے لیے تیار کھڑی تھیں پروگرام شروع ہونے سے پہلے حاضرین کو گرمانے کے لیے جماعت اسلامی کے ترانے سنائے جا رہے تھے اس میں’’خونِ مسلم بیچ کر ناپاک کمائی بند کر۔ بند کرو بند کرو نیٹو سپلائی بند کروو‘‘ اور ’’عالمی دہشت گرد امریکا۔ دہشت گرد اسلام نہیں‘‘ کے ترانے زیادہ پسند کیئے گئے۔اسٹیج کے سامنے روڈ کے ایک طرف تحریک انصاف نے عمران اور منور حسن کا ایک بہت بڑا ہورڈنگ لگایا تھا جس پر ڈرون حملوں اور نیٹو سپلائی بند کرنے کی تحریر لکھی تھی ہورڈنگ بہت خوبصورت لگ رہا تھا۔ مسلم پرویز نائب امیر جماعت اسلامی حلقہ کراچی مہمانوں کو اسٹیج پر خوش آمدید کہتے رہے اِس دوران حافظ نعیم الرحمان امیر جماعت اسلامی حلقہ کراچی ایک بہت بڑی ریلی کی قیادت کرتے ہوئے اسٹیج پر تشریف لائے۔ سڑک کی ایک طرف جماعت اسلامی کی کارکن خواتین پہلے سے ہی اسٹیج کے سانے پہنچ چکی تھیں عام خواتین کے علاوہ جامعات کی بچیاں بھی اس مارچ میں شریک تھیں جو جامع کے لباس میں منفرد لگ رہیں تھیں۔ جب امیر جماعت اسلامی منور حسن بھی اسی دوران اسٹیج کے پاس تشریف لائے تو کارکنوں نے’’امریکا کا جو یار ہے غدار ہے غدار ہے،نیٹو سپلائی بند کرو اور ڈرون حملے بند کرو کے پُر جوش نعروں سے استقبال کیا۔ ریلی کے پہلے مقرر جماعت الدعوۃ کے مرکزی رہنماامیر حمزہ نے فرمایا کہ کراچی میں ۱۲؍ مئی کو مشرف نے خون بہایا اور کہا کہ دیکھا میری طاقت کیسی ہے اسی نے امریکی جنگ میں پاکستان کو ڈال دیا انہوں نے کہا حکمرانوں امریکی جنگ سے باہر آجاؤکراچی کے عوام کہتے ہیں ہمیں ڈرون حملے اور ناٹو سپلائی نامنظور ہیں دیکھ لو پوری قوم آپ کے سامنے ہے امریکا افغانستان میں شکست کھا چکا ہے وہ ہماری فوج سے لڑ نہیں سکتا میں شرکا کو خوش آمدید کہتا ہوں میں منورحسن کی قیادت میں مردوں اور عورتوں کے ٹھاٹیں مارتے سمندر کو دیکھ کر حکمرانوں کی آنکھیں کھل جانی چایئے ملا نصیر کودہشت گردی کرتے ہوئے شہید کیا گیا فاٹا کے بعد پاکستان کے بندوبستی علاقے ہنگو میں ڈرون سے حملہ کیا گیا ہے اپنے بحری جہازوں سے بلوچستان کے خلاف کاروائیاں کرتے ہیں ناٹو سپلائی انشاء اللہ بند ہو گی جس طرح پختونخواہ میں بند ہوئی ہے اس طرح کراچی میں بھی بند ہو گی بھارت سے دوستی اور ویزا ختم کرنے کی باتیں ہو رہی ہیں حاٖفظ سعید کی طرف سے یقین دلانا چاہتا ہوں آپ قدم بڑھائیں ہم آپ کے ساتھ ہیں اس کے بعد تحریک انصاف کے صدر اکمل لغاری صاحب نے اپنے خطاب میں کہا نہتے لوگوں کو ڈرون حملوں میں شہید کیا جارہا ہے پاکستان اس لیے نہیں بنا تھاکہ ہمیں اس طرح روندھا جائے یہ ملک اسلام کے نام پر بنا تھا ہم ملک میں خوداری چاہتے ہیں ہم کسی سے لڑائی نہیں چاہتے یہ ہماری عزتوں سے کھیل رہے ہیں کیا عزتیں بچانا دہشت گردی ہے؟ کیا پاکستان کے لیے قربانی اس لیے دی گئی تھی؟ ہمیں اپنے پیروں پر کھڑا ہونا چایئے جماعت اسلامی اور تحریک انصاف مل کر ناٹو اور ڈرون کو بند کرنے کی کوشش کر رہے ہیں ہم جانی مالی قربانی کے لیے تیا رہیں ہم نے پہلا قدم اُٹھایا ہے اس کے بعد تحریک کے ڈاکٹر علوی صاحب نے کہا جماعت اور تحریک کے بھائی اور بہنیں ریلی میں شریک ہیں ۔ حکومت میں شامل لوگ پہلے کہتے تھے ڈرون حملے ختم کریں گے اب کہتے ہیں یہ کام غیر قانونی ہے معلوم ہوتا ہے امریکا کے ساتھ معاہدہ ہے قومی اسمبلی میں تقریرں ہوتی ہے ڈرون بند کرنے کی نواز شریف اور مولانا فضل الرحمان نے بھی ڈرون بند کرنے کا کہاتھا میں فضل الرحمان سے درخواست کرتا ہوں کہ متحد ہو جائیں یہ زبانی کہتے ہیں ڈرون بند ہو ں مگر عمل نہیں کرتے یہ غلام ہیں باہر سے بھیگ مانگتے ہیں جب عافیہ کی بات ہوئی تو امریکا نے ان کی بات نہیں مانی بلکہ شکیل آفریدی کی رہائی کی بات ہوئی ہے اس کے بعد ملی یکجہتی کونسل کے صدر صاحبزادہ ابوالخیر زبیر نے تقریر کرتے ہوئے کہا منور حسن صاحب کی قیادت میں حد نگاہ تک انسانوں کا سمندر نظر آ رہا ہے پاکستان کے  حکمران غلام ہیں ہم امریکی ڈرون حملے قبول نہیں کریں گے اس میں شک نہیں تمام دہشت گردی کا ذمہ دار امریکا ہے حکیم اللہ کو شہید کیا گیا ریمنڈ ڈیوس دہشت گردی کرتا رہا حکمران امریکا سے تعلق ختم کرنے کے لیے تیار نہیں وزیر داخلہ کہتا ہے ڈرون میں ۳ فی صد لوگ شہید ہوئے ہیں ۵۷ فی صد دہشت گرد مارے گئے اس سے امریکی موئقف کو صحیح ثابت کرنے کی

یہ بھی پڑھیں  بھائی پھیرو:حکو مت اوراپوزیشن دونوں امریکہ کے ایماءپرافواج آئی ایس آئی کے خلاف پرو پگنڈے میں مصروف ہیں،رحمت خان

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker